پاکستان کا یمن میں آئینی حکومت کو بحال کرنے کا مطالبہ

جدہ، 24 جون، 2018 (وام) - پاکستان نے یمن کےصدرعبدالرب منصور ہادی کی آئینی حکومت کی بحالی کا مطالبہ کیا ہے اور حوثی ملیشیا سے کہا ہے کہ وہ زیر قبضہ علاقے چھوڑ دیں.

پاکستان کی وزارت اطلاعات کے ایڈیشنل سیکرٹری شفقت جلیل نے یہ بات یمن میں آئینی حکومت کی بحالی کے لئے سرگرم عرب اتحادی ممالک کے وزراء اطلاعات کے اجلاس میں اپنے ملک کے وفد کی سربراہی کرتے ہوئے کہی، یہ اجلاس جدہ میں سعودی عرب کی طرف سے بلایا گیا تھا.

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان اس بحران کا خاتمہ چاہتا ہے اور یمن میں امن و آشتی کے لئے حریف گروہوں کے درمیان فوری مذاکرات کا آغاز چاہتا ہے.

پاکستان کی سرکاری نیوز ایجنسی ( اے پی پی) کے مطابق شفقت جلیل نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ پاکستان کو یمن میں انسانی بحران پر تشویش ہے، اور موجودہ انسانی بحران کے خاتمے کے لئے عالمی سطح پر زیادہ جامع اور باہمی تعاون کی ضرورت ہے.

ان کے مطابق پاکستان نے گزشتہ سال یمن میں امداد کی مد میں 1 ملین ڈالر کی رقم دی، جبکہ پاکستان نے یمن میں جنگ کے متاثرین کو ریلیف فراہم کرنے کی سعودی کوششوں کا خیر مقدم کیا ہے.

انہوں نے کہا کہ پاکستان یمن میں امن کے قیام کی تمام کوششوں کی حمایت کرتا ہے اور مسلے کے سیاسی حل کا مطالبہ کرتا ہے،جس سے ملک میں مستقل امن کو یقینی بنایا جاسکے.

http://wam.ae/en/details/1395302695852

WAM/MOHD AAMIR