Thu 02-08-2018 16:01 PM

لندن کی بین الاقوامی ثالثی عدالت نے دورالہ ٹرمینل کو قبضے میں لینے کے جبوتی کی حکومت کے فیصلہ کو غیر قانونی قرار دے دیا

لندن، 2 اگست، 2018 (وام) -- لندن کی بین الاقوامی ثالثی عدالت کے ایک ثالثی ٹربیونل نے جبوتی کی حکومت کی جانب سے دورالہ ٹرمینل کو دبئی پورٹ ورلڈ سے اپنے قبضے میں لینے کے فیصلہ کو غیر قانونی قرار دے دیا ہے.

2017 میں اسی عدالت کا ایک اور ثالثی ٹربیونل جبوتی حکومت کے خلاف اس حوالہ سے پہلے ہی فیصلہ دے چکا ہے.

عدالت کے ٹربیونل نے کہا ہے کہ دورالہ کنٹینر ٹرمینل کا کنسیشن معاہدہ " قانون نمبر 202 اور 2018 کے فیصلوں کے باوجود، درست ہے اور اسکی پیروی کی جانی چاہئے". قانون نمبر 202 اور متعقلہ حکم نامے جبوتی کی جانب سے نافذ کئے گئے ہیں، جنکا مقصد معاہدے کی ذمہ داریوں سے بچنا ہے اور جبوتی حکومت کے یہ فیصلے قانون کے مطابق غیر موثر ہیں.

دبئی پورٹ ورلڈ اب اس فیصلہ پر غور کرے گا اوراپنے آپشنز کا جائزہ لے گا.

23 فروری 2018 کو جبوتی حکومت نے غیر قانونی طور پر دبئی پورٹ ورلڈ سے دورالہ کنٹینر ٹرمینل کا کنٹرول اپنے قبضے میں لے لیا تھا، دبئی پورٹ ورلڈ نے 2006 میں ایک معاہدے کے بعد ٹرمینل کا ڈیزائن تیار کیا، اسکی تعمیر مکمل کی اور اس پر کام کا آغاز کیا تھا. ٹرمینل ملک میں روزگار اور آمدنی کا سب سے بڑا وسیلہ ہے اور اپنے آغاز کے بعد سے ہر سال منافع پر چل رہا ہے، دبئی پورٹ ورلڈ کے انتظام میں یہ ٹرمینل جبوتی کے لئے انتہائی "کامیاب" ثابت ہوا ہے.

http://wam.ae/en/details/1395302701921

WAM/MOHD AAMIR