بریکنگ نیوز: متحدہ عرب امارات کے صدر نے قومی دن پر برطانوی جاسوس کی سزا معاف کردی

ابوظہبی، 26 نومبر، 2018 (وام)۔۔ بدھ 21 نومبر 2018 کو ابوظہبی کی فیڈرل کورٹ آف اپیلز نے ایک برطانوی شہری میتھیو ہیجز کو ایک دوسرے ملک کیلئے جاسوسی کرکے متحدہ عرب امارات کی عسکری، اقتصادی اور سیاسی سلامتی کو خطرے میں ڈالنے کے جرم میں عممر قید کی سزا سنائی تھی.

خارجہ امور اور بین الاقوامی تعاون کی وزارت نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ عدالت کے فیصلے اور سزا کے بعد مسٹر ہیجز کے خاندان نے صدر عزت مآب شیخ خلیفہ بن زاید آل نھیان کو معافی کا خط لکھا ۔ یہ خط برطانیہ کے قونصل خانے کے عملے نے متحدہ عرب امارات کے حکام کو پہنچایا تھا.

صدارتی امور کی وزارت نے اعلان کیا ہے کہ متحدہ عرب امارات کے صدر شیخ خلیفہ بن زاید آل نھیان کی جانب سے فوری طور پرصدارتی معافی نامہ جاری کردیا گیا ہے۔یہ معافی نامہ متحدہ عرب امارات کے 47 ویں قومی دن کے موقع پر روایتی صدراتی معافی ناموں میں شامل ہے۔ مسٹر ہیجز کو ضابطے کے کاروائی مکمل ہونے کے بعد متحدہ عرب امارات چھوڑنے کی اجازت دے دی جائے گی.

فیصلے اور صدارتی معافی نامے پر تبصرہ کرتے ہوئے خارجہ امور کے وزیر مملکت ڈاکٹر انور قرقاش نے کہا کہ عزت مآب صدر مملکت کی جانب سے قومی دن کے موقع پر روایتی طور پر صدارتی معافی نامے ہمیں اپنی توجہ متحدہ عرب امارات اور برطانیہ کے دوطرفہ تعلقات کے فروغ اور عالمی برادری کیلئے اسکی اہمیت کی طرف مبذول کرنے میں مدد دیتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات نے ہمیشہ کوشش کی کہ یہ معاملہ ہماری طویل مدت شراکت داری کے مشترکہ چینلز کے ذریعے حل کیا جائے ۔ انکا کہنا تھا کہ یہ ایک سیدھا معاملہ تھا جو متحدہ عرب امارات کی تمام تر کوششوں کے باوجود غیر ضروری طور پر پیچیدہ ہو گیا تھا.

مسٹر ہیجز کے خلاف مقدمہ انکے الیکٹرانک آلات سے حاصل کئے گئے ثبوتوں، متحدہ عرب امارات کی انٹیلی جنس اور سیکورٹی ایجنسیوں کی نگرانی اور جمع کی گئی معلومات اور خود مسٹر ہیجز کی طرف سے فراہم کردہ ثبوتوں بشمول اثاثوں کی بھرتی، تربیت اور خفیہ معلومات کی نشاندہی کے تصدیق شدہ اکاؤنٹ کی بنیاد پر قائم کیا گیا تھا۔ اسکی ایک غیر ملکی انٹیلی جنس سروس کے اندر بھرتی اور پیش رفت کی عدالت کو تصدیق متحدہ عرب امارات کی انٹیلی جنس ایجنسیوں نے کی.

ڈاکٹر انور قرقاش نے کہا کہ قومی دن کے موقع پر روایتی صدارتی معافی نامہ نے ہمیں اس باب کو بند کرنے اور تعلقات کے بہت سے مثبت پہلوؤں پر توجہ مرکوز کرنے کا موقع فراہم کرتا ہے.

ترجمہ: ریاض خان

http://wam.ae/en/details/1395302723129

WAM/MOHD AAMIR