عالمی برادری فلسطینی عوام کی مدد کی ذمےداری پوری کرے: متحدہ عرب امارات

نیو یارک، 1 دسمبر، 2018 (وام) ۔۔متحدہ عرب امارات نے جنرل اسمبلی میں فلسطین اور مشرق وسطی کی صورتحال پر بحث کے دوران بین الاقوامی برادری پر زور دیا ہے کہ فلسطینوں کی مشکلات ختم کرنے بین الاقوامی قانون اور اقوام متحدہ کے چارٹر کے مطابق اپنی ذمے داریاں پوری کرے.

اقوام متحده میں متحدہ عرب امارات کے نائب مستقل نمائندے سعود الشمسی نے صدر عزت مآب شیخ خلیفہ بن زاید آل نھیان کی طرف سے فلسطینی عوام کے حقوق کی کمیٹی کے چیئرمین کو فلسطینی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے عالمی دن کے موقع پر خط میں فلسطینوں کی خود مختاری کیلئےبین الاقوامی کوششوں کے لئے متحدہ عرب امارات کی مسلسل حمایت کا اعادہ کیا۔ انہوں نے فلسطینیوں کیلئے 1967 کی سرحدوں اور بین الاقوامی معاہدوں اور عرب امن عمل کے مطابق ایک ایسی آزاد ریاست کے قیام پر زور دیا جس کا دارلحکومت مشرقی بیت المقدس ہو.

الشمسی نے فلسطینی علاقوں میں خراب انسانی اور اقتصادی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا اور بین الاقوامی برادری پر زور دیا کہ ان علاقوں کیلئے انسانی ہمدردی کی بنیاد اور ترقیاتی امداد میں اضافہ کیا جائے۔ انہوں کہا کہ فلسطینی عوام کا پائیدار ترقی کے مقاصد کو حاصل کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے.

انھوں نے کہا کہ خطے میں امن اور استحکام حاصل کرنے کیلئے طویل بحران کا سیاسی حل تلاش کرنا اور انتہا پسندی اور دہشتگردی سے لڑنے کے لئے کوششیں تیز کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ بعض انتہاپسند اور دہشتگرد گروپ مخصوص علاقائی جماعتوں کے تعاون سے صورتحال کا فائدہ اٹھاکر تشدد ، بے یقینی اور تباہی کو پورے خطے میں پھیلا سکتے ہیں.

2017-18 میں متحدہ عرب امارات نے فلسطین کے لوگوں کو تقریبا 173 ملین ڈالر امداد دی۔ متحدہ عرب امارات نے اقوام متحدہ کی فلسطینی پناہ گزینوں کے لئے کام کرنے والی ایجنسی کو بھی 65 ملین ڈالر فراہم کئے ہیں.

ترجمہ: ریاض خان

http://wam.ae/en/details/1395302724471

WAM/MOHD AAMIR