وزارت ماحولیات اور فش فارم نے 200 مصنوعی غاریں بنادیں

دبئی ، 5 دسمبر ، 2018 (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات کی وزارت برائے موسمیاتی تبدیلی و ماحولیات اور نجی شعبہ میں ماہی پروری اور ماہی گیری کے ادارہ " فش فارم " نے البادیۃ جزیرہ سے خورفکان تک دو سو مصنوعی غاریں بنائی ہیں تاکہ عرب امارات کے سمندروں میں مچھلیوں کا ذخیرہ بڑھایا جاسکے.

2016ء میں طے پانے والے اس منصوبے کے تحت دو مراحل میں ایسی کل پانچ سو غاریں قائم کی گئی ہیں ، پہلے مرحلے میں رواں سال مئی میں الفجیرۃ کے البادیۃ جزیرہ سے شارجہ کی لولیا بندرگاہ تک تیس مقامات پر تین سو غاریں بنائی گئی تھیں ۔ ایسی غاریں قائم کرنے کیلئے مقامات کا انتخاب انتہائی احتیاط سے کیا گیا تھا تاکہ ماہی گیری کے علاقوں کو ساحلی مقامات کے قریب رکھا جاسکے جس سے ماہی گیری کے آپریشنل اخراجات کم ہونے کے ساتھ کھلے سمندروں میں درپیش خطرات کو بھی کم جاسکے.

وزارت کے شعبہ ماہی گیری پائیداری کے ڈائریکٹر صلاح الرئیسی کے مطابق انکی وزارت اور فش فارم کے درمیان یہ تعاون ماہی گیری شعبے میں پائیداری لانے کیلئے سرکاری اور نجی شعبے کے اشتراک کی بہترین مثال ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ایسے اقدامات سے سمندری مچھلیوں کو افزائش اور پرورش کا بہتری قدرتی جیسا ماحول فراہم کیا جارہا ہے ، وزارت ماحولیات ماہی گیری کے روایتی شعبے اور اس کی صنعت کو پائیدار بنانے کے ساتھ فروغ دینے کیلئے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گی ۔ جزيرة البادية إلى خورفكان.

ترجمہ : تنویر ملک

http://wam.ae/en/details/1395302725337

WAM/Ahlam Al Mazrooi