امارات میں رواداری کے اظہار کے موضوع پرتحریر کردہ نئی کتاب کی رونمائی


ابوظہبی،3 فروری،2019(وام)۔۔پوپ فرانسس اور جامعة الازہر کے مفتی اعظم کے متحدہ عرب امارات کے تاریخی دورہ کے موقع پر وزیربرائے رواداری شیخ نھیان بن مبارک آل نھیان نے ملکی تنوع کے موضوع پر تحریر ایک نئی کتاب کا اجراکیا ہے۔دبئی کے موٹیویٹ پبلشنگ کی جانب سے شائع کردہ،رواداری کا مظاہرہ:متحدہ عرب امارات میں مذہبی تنوع: کے عنوان سے اس کتاب کی رونمائی برطانوی سفارتخانہ میں برطانیہ کے سفیر پیٹرک موڈی کی میزبانی میں منعقدہ ایک تقریب میں کی گئی ۔اپنے پیش لفظ میں شیخ نھیان نے کہا کہ کیونکہ ہم سب امارات میں مل جل کر اس قدر رواداری سے رہ رہے ہیں ہم کہ سکتے ہیں کہ ہمارے مختلف مذاہب میں رواداری کی قدر موجود ہے۔یہ نظریہ ہمارے مبہم شبہات کو حقیقت کا روپ دینے میں بنیادی کردار ادا کرتا ہے۔رواداری کی اس حیرت انگیز حقیقت کا اس شاندار کتاب میں اظہار کیاگیا ہے۔اس بات کو یقینی بنانے کے لئے کہ اظہار کا کوئی اختتام نہیں ہمیں اس حقیقت کے تحفظ اور اس کی ترویج کے لئے ہمیشہ حقیقت کی روح کے مطابق کام کرنا ہوگا۔ہماری مستعد توجہ کے بغیر رواداری آہستہ آہستہ غائب ہوجاتی ہے۔اس کتاب کے مضمون میں رواداری کی مسلسل تحریک دی گئی ہے۔کتاب کی ایڈیٹنگ ابوظہبی میں اینگلیکن چرچ سینٹ اینڈریو کے پادری ریورنڈ کینن انڈریو تھامسن نے کی ہے کتاب میں دس مختلف عقائد کے لوگوں کے تجربات کو بیان کیا گیا ہے جو ملک میں ایک ساتھ رہ رہے ہیں۔کتاب بارے آگاہ کرتے ہوئے تھامسن نے کہا کہ امارات مختلف عقائد کے حامل لوگوں کا گھر ہے۔اس کتاب کا مقصد متنوع عقائد کا اظہاراور مختلف عقائد اور رسم ورواج کے حامل لوگوں کے درمیان بہتر انڈرسٹینڈنگ پیدا کرنا ہے۔ہم نے بہائی،بدھسٹ،ہندو،یہودی اور سکھ برادری سمیت مسیحی کمیونٹی کے مختلف فرقوں کے دس افراد کو ایک ساتھ دکھایا ہے ہمارا سب کا مقصد آئندہ نسلوں کے لئے رواداری اور محبت سے بھرپور ماحول کا قیام ہے۔موٹیویٹ میڈیا گروپ کے مینیجنگ پارٹنر اور ایڈیٹر انچیف ایان فیرسروس کا کہنا تھا کہ ایسے وقت میں جب لوگوں میں عقائد کی بنیاد پر بہت ساری غلط فہمیاں پائی جاتی ہیں یہ کتاب ہماری مختلف کمیونٹیز کو ایک دوسرے کے قریب لانے کے لئے صحیح سمت میں اٹھایا گیا ایک قدم ہے.

 

ترجمہ۔تنویرملک.

 

http://wam.ae/en/details/1395302736775

WAM/