متحدہ عرب امارات کی انسداد انسانی اسمگلنگ کی کوششیں قابل تحسین ہیں،آئی ایل او سربراہ


دبئی،10 فروری،2019 (وام)۔۔عالمی ادارہ محنت (آئی ایل او)کے ڈائریکٹر جنرل گائے رائڈر نے انسداد انسانی اسمگلنگ کے لئے متحدہ عرب امارات کی کوششوں کو سراہا ہے۔ ساتویں ورلڈ گورنمنٹ سمٹ کے موقع پر امارات نیوز ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے رائڈر نے کہا کہ آئی ایل او انسانی اسمگلنگ کے خاتمے اور دیگر ممالک کے ساتھ لیبر مارکیٹ کو ریگولیٹ کرنے کی کوششوں میں متحدہ عرب امارات کی کامیابیوں کا دیگر ممالک کے ساتھ تبادلہ کرتا ہے۔ آئی ایل او افرادی قوت کے معائنہ کے نظام کو مضبوط کرنے کے لئے امارات کی کوششوں کو سراہتاہے۔دنیا بھر میں ڈھائی کروڑ افراد کوجبری مشقت کا سامنا ہے۔انہوں نے کہا کہ انسانی اسمگلنگ اور جبری مشقت کے خلاف جنگ میں نئے اقدامات ناگزیر ہیں۔انسانی اسمگلنگ کے خلاف جنگ میں متحدہ عرب امارات کے اقدامات کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں۔عرب امارات ایک خصوصی افرادی قوت کی مارکیٹ ہے جہاں بڑی تعداد میں غیر ملکی تارکین موجود ہیں۔اس حوالے سے مثبت کوششوں کے لئے عرب امارات ایک رول ماڈل کی حیثیت رکھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ روزگار کے نظام کو باقاعدہ نہ بنانے کی صورت میں تارکین وطن کے مفادات کا تحفظ مشکل ہوسکتا ہے۔انہوں نے انسانی اسمگلنگ کے خاتمے کے لئے عالمی سطح پر مربوط کوششوں کی ضرورت پر زور دیتے کہا کہ ریکروٹمنٹ اور ایمپلائمنٹ کے محفوظ نظام کو یقینی بنانے کے لئے افرادی قوت بھیجنے اور وصول کرنے والے ممالک کے درمیان شراکت داری کا قیام ناگزیر ہے ۔متحدہ عرب امارات کی جانب سے اس حوالے سے اپنی ذمہ داریوں کو مستعد طور پر پورا کرنے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جب ہم عرب امارات جیسے ملکوں کی کامیابیوں کو سنتے ہیں تو ہم عالمی سطح پر اس مسئلہ کے حل کے لئے ان تجربات کا دیگر ممالک کے ساتھ تبادلہ کرتے ہیں۔مجھے امید ہے کہ عرب امارات اس حوالے سے اپنی کوششیں جاری رکھے گا۔ انہوں نے کہا کہ کام کے محفوظ ماحول کو یقینی بنانے کے لئے لیبر انسپیکشن کے نظام کو مضبوط بنانے کے لئے ہم نے امارات کے ساتھ مل کر کام کیا ہے، اور یو اے ای کی کوششوں کے ہمیں مثبت نتائج ملے ہیں.

 

ترجمہ۔تنویرملک.

 

http://wam.ae/en/details/1395302738308

WAM/Ahlam Al Mazrooi