برطانیہ کا خلیج تعاون کونسل کے ممالک کیساتھ فری ٹریڈمعاہدے کا عندیہ


دبئی، 10 فروری، 2019 (وام) ۔۔ برطانیہ کی بین الاقوامی تجارت کے وزیر لائم فوکس نے کہا ہے کہ برطانیہ کے خلیج تعاون کونسل کے ممبر ملکوں کے ساتھ مضبوط تجارتی تعلقات ہیں اور ان کے ساتھ آزاد تجارتی معاہدے کیلئے صحیح وقت کے منتظر ہیں.

 

دبئی میں حکومتوں کے بارے میں عالمی سربراہ اجلاس کے موقع پر امارات نیوز ایجنسی ، وام سے گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ پاپائے روم کے دورے نے رواداری کے بارے میں ایک مضبوط پیغام دیا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ اب یہ اجلاس گڈ گورننس کے بارے میں ایک اچھا پیغام ہے جو اچھی حکمرانی کی اہمیت کو ظاہر کرتا ہے.

 

فوکس نے کہا کہ انکا ملک برگزٹ کے بعد خلیج تعاون کونسل کے ملکوں کے ساتھ بالعموم اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ بالخصوص تعلقات کو مرکزی اہمیت دیتا ہے۔ انھوں نے ان تمام دعوں کو مسترد کر دیا کہ بریگزٹ کے بعد برطانیہ میں سرمایہ کاری کے ماحول پر منفی اثر پڑ سکتا ہے.

 

انھوں نے کہا کہ بریگزٹ سے منسلک سیاسی مسائل کے باوجودپچھلے سال برطانیہ میں براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری میں 20 فی صد اضافہ ہوا جو صرف چین اور امریکہ کے بعد کسی دوسرے یورپی یونین کے ملک سے زیادہ ہے۔ انکا کہنا تھا کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ ہمارے بنیادی اصول بہت مضبوط ہیں اور ہمارے پاس اعلی ترین روزگار کا نظام ہے۔ برطانیہ کی معیشت پر دنیا کا بہت اعتماد ہے اور ہم دنیا بھر میں مزید شراکت داروں کی تلاش جاری رکھیں گے.

 

فوکس نے کہا کہ متحدہ عرب امارات برطانیہ کا ایک اہم شراکت دار ہے۔ انکا کہنا تھا کہ دونوں ملکوں کے درمیان گہرے اسٹریٹجک تعلقات کا ہونا ضروری ہے اور یہ صرف خرید وفروخت کے بارے میں نہیں بلکہ شراکت داری کے بارے میں ہونا چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ خدمات، مینوفیکچرنگ اور Fintech جیسے شعبوں میں تعلقات میں مزید بہتری کی گنجائش ہے.

 

ریاض خان .

 

http://wam.ae/en/details/1395302738342

WAM/Ahlam Al Mazrooi