ٹیکنالوجی کی ترقی کیلئے بہتر عوامی، نجی شراکت داری حکومتوں کیلئے ضروری ہے: پینل


دبئی، 10 فروری، 2019 (وام) ۔۔ حکومتوں کے بارے میں عالمی سربراہی اجلاس، ڈبلیو جی ایس 2019 کے ایک پینل نے مشورہ دیا ہے کہ ٹیکنالوجی کے شعبے کے مجموعی فائدے کے لئے بہتر عوامی اور نجی شراکت داری دنیا بھر میں حکومتوں کے لئے ضروری ہے.

 

Google کے تعاون سے منعقدہ "ڈیجیٹل پالیسی کا مستقبل" پینل میں بحث کا آغاز کرتے ہوئے گوگل کی گلوبل پبلک پالیسی اور حکومتی تعلقات کے نائب صدر کرن بھاٹیا نے کہا کہ اگرچہ آخری دہائی ٹیکنالوجی کے شعبے کے لئے غیر معمولی ہے تاہم دنیا کی تقریبا نصف آبادی اب بھی آن لائن نہیں ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس خلا کے ساتھ منسلک مسائل آنے والے برسوں میں زیادہ واضح ہو جائیں گے اور ایسی صورت حال سے اسی وقت نمٹنے کی ضرورت ہے.

 

بھاٹیا نے تین اہم شعبوں کی نشاندہی کی جن پر حکومتوں کو مستقبل میں توجہ دینا ہوگی۔ ان میں انفراسٹرکچر کو بہتر بنانا، انسانی وسائل میں سرمایہ کاری اور اسمارٹ ٹیک انقلاب کو فروغ دینا شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکنالوجی تیز رفتاری سے آگے بڑھ رہی ہے جن میں مصنوعی ذہانت اور Blockchain شامل ہیں۔ انکا کہنا تھا ٹیکنالوجی ڈیٹا کو محفوظ کرکے ہمیں ان مواقع کو فروغ دینے کاموقع فراہم کرتی ہے.

 

انہوں نے کہا کہ ہم ایک دلچسپ نئے دور کے آغاز پر کھڑے ہیں جہاں سوال یہ نہیں ہے کہ آیا مصنوعی ذہانت بدل جائے گی بلکہ سوال یہ ہے کہ یہ کتنی جلد بدلے گی۔ انہوں نے یہ بھی وضاحت کی کہ کس طرح کمپنیا ں ارتقائی عمل سے گزر رہی ہیں اور کس طرح خود گوگل سرچ انجن سے کلاؤڈ کمپنی میں تبدیل ہوگئی.

 

اے ٹی اینڈ ٹی کی گلوبل ایکسٹرنل اور پبلک افیئرز کی سینئر نائب صدر مارگریٹ جے اے پیٹرلن نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ لوگوں کی مدد کے لئے لوگوں کو کس طرح مصنوعی ذہانت کا استعمال کرنا چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ اگرچہ مصنوعی ذہانت اہم ترقی ہے تمام اس کا استعمال اخلاقی حدودکے اندر رہتے ہوئے اس کے مضمرات کو مدنظر رکھتے ہوئے ہونا چاہیئے.

 

پینل بحث میں مختلف ملکوں کے درمیان تعاون اور پالیسی سازوں کو درپیش تیز رفتار چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کیلئے نئے پالیسی نکتہ نظر کی ضرورت پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا.

 

حکومتوں کے بارے میں تین روزہ عالمی سربراہی اجلاس بارہ فروری تک دبئی کے مدینہ جمیرہ میں جاری رہے گا۔ اس تاریخی اجلاس میں 140 ممالک سے 4,000سے زیادہ مندوبین جن میں سربراہان مملکت اور حکومت شامل ہیں اور 30 ​​بین الاقوامی تنظیموں کے اعلی حکام شرکت کررہے ہیں.

 

ریاض خان .

 

http://wam.ae/en/details/1395302738344

WAM/Ahlam Al Mazrooi