بتیس ممالک کی رکنیت اور سات سو ارب ڈالر کی حلال معیشت کے ساتھ آئی ایچ اے ایف ترقی کے سفر پر گامزن

دبئی، 4مارچ ، 2019(وام)۔۔ دی انٹرنیشنل حلال ایکریڈیٹیشن فورم، آئی ایچ اے ایف،نے اپنے تازہ ترین سنگ میل،آپریشنل ہونے کے بعد ایک ہزار دنوں میں اپنے ارکان کی تعداد بتیس ہونے کا اعلان کیا ہے۔

بتیس رکن ممالک کی حلال معیشت کا حجم سات سو ارب امریکی ڈالر سے زائد ہے جو عالمی حلال معیشت کے حجم دو اعشاریہ ایک ٹریلین امریکی ڈالر کا تقریباًچونتیس فیصد ہے۔تھامسن رائٹر کے تعاون سے تیارہ کردہ عالمی اسلامی اقتصادی رپورٹ دوہزار اٹھارہ انیس کے اعدادوشمار کے مطابق عالمی اسلامی معیشت کے پندرہ سرفہرست ممالک میں سے نو آئی ایچ اے ایف کے رکن ہیں جن میں متحدہ عرب امارات، بحرین، سعودی عرب،اومان،اردن،پاکستان،کویت،انڈونیشیا اور ترکی شامل ہیں۔رپورٹ کے مطابق حلال فوڈ کے برآمدکنندگان دوممالک کرغزستان اور فلپائن آ ئی ایچ اے ایف کے رکن ہیں.

اس اہم کامیابی پر اظہار خیال کرتے ہوئے آئی ایچ اے ایف کے سیکرٹری جنرل محمد صالح بدری نے کہا کہ دوہزار سولہ میں اپنے قیام کے بعد سے آئی ایچ اے ایف نے دنیا بھر میں حلال مصنوعات اور خدمات کی فراہمی کے لئے اعتماد سازی کے لئے مسلسل کام کیا ہے۔ہم نے بین الاقوامی سطح پر تجارت کے فروغ کے لئے کام کرنے والے عالمی اداروں کے ساتھ شراکت داری بھی قائم کی ہے۔آئی ایچ اے ایف کا انٹرنیشنل ایکریڈیٹیشن فورم،آئی اے ایف ،اور انٹرنشینل لیبارٹری ایکریڈیٹیشن کارپوریشن،آئی ایل اے سی ، کے ساتھ اشتراک ہے جو عالمی سطح پر ناصرف فورم کے کردار کا عتراف ہے بلکہ عالمی تجارت کے نئے ابواب کھولنے کی جانب ایک سنگ میل کی حیثیت کا حامل ہے.

حالیہ رپورٹس کے مطابق اسلامی تنظیم کانفرنس،او آئی سی، کے رکن ممالک کو حلال گوشت اور زندہ جانور برآمد کرنے والے پانچ بڑے ممالک میں سے چار آئی ایچ اے ایف کے رکن ہیں جن میں برازیل،آسٹریلیا،بھارت اورامریکہ شامل ہیں۔جبکہ حلال فوڈ کے ذرائع کی پانچ سرکردہ مارکیٹوں میں سے چار برازیل،بھارت، ارجنٹائن اور روس آئی ایچ اے ایف کے رکن ہیں۔حلال فوڈ درآمد کرنے والے دنیا کے پہلے پانچ ممالک میں سے چار سعودی عرب،متحدہ عرب امارات،انڈونیشیا اور مصر آئی ایچ اے ایف میں شامل ہیں۔اپنے آُپریشن کے پہلے ایک ہزار دنوں کے دوران آئی ایچ اے ایف نے مختلف اداروں کے ساتھ متعدد ایم او یوز اور تیکنیکی تعاون کے معاہدے بھی کئے ہیں۔حالیہ دنوں میں مصر کی ایکریڈیٹیشن کونسل۔ برازیل نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف میٹرالوجی،کوالٹی اینڈ ٹیکنالوجی۔انٹر امریکن ایکریڈیٹیشن کواپریشن اور اورگنائزیشن ارجنٹائن ایکریڈیٹیشن سمیت دیگر اداروں سے معاہدے کئے گئے ہیں.

انہوں نے کہا کہ آئی ایچ اے ایف دنیا بھر میں حلال مصنوعات اور خدمات سے متعلق آگاہی اور معلومات کی فراہمی کے لئے کوشاں ہے۔ چین کے شہر شین زن میں ہونے والی دوسری چین۔امارات اسلامی بینکنگ فنانس کانفرنس میں بھی ہم نے شرکت کی،کانفرنس میں دنیا بھر میں حلال مصنوعات کی کھپت اور خدمات کے فروغ کے لئے تبادلہ خیال کیاگیا۔آئی ایچ اے ایف نے اپنے طور پر بھی کرغزستان،مصر،کوسٹاریکا،ہانگ کانگ اور تاجکستان میں ورکشاپس اور تربیتی پروگراموں کا انعقاد کیا.

آئی ایچ اے ایف کے نائب چیئرمین اوراٹلی کے قومی ایکریڈیٹیشن ادارے کے نائب جنرل ڈائریکٹر ایمانوئل ریوا کا کہنا ہے کہ تین سالوں کے دوران ارکان کی تعداد نو سے بڑھ کر بتیس ہوجانا،اور عالمی حلال معیشت میں اکثریتی حصہ داری ناصرف آئی ایچ اے ایف کے لئے اہم سنگ میل ہے بلکہ حلال انڈسٹری کے مستقبل کے لئے بھی اہم ہے۔رواں سال امید ہے کہ ہم مزید ارکان کو آئی ایچ اے ایف میں خوش آمدید کہیں گے.

ترجمہ: تنویر ملک

http://wam.ae/en/details/1395302744404

WAM/Ahlam Al Mazrooi