اے بی ایل ایف نے رواداری کے سال پر خصوصی میگزین جاری کردیا

دبئی، 5 مارچ، 2019 (وام) ۔۔ ایشین بزنس لیڈرشپ فورم، اے بی ایل ایف نے رواداری کے سال کا جشن مناتے ہوئے ایک خصوصی ایڈیشن میگزین شروع کیا ہے.

نئے خصوصی ایڈیشن کا اجراء فورم کے شاہی سرپرست اور وزیر رواداری شیخ نھیان بن مبارک آل نھیان نے کیا.

شیخ نھیان نے کہا کہ اے بی ایل ایف ترقی اور خطے کے بہتر مستقبل کو فروغ دینے کے لئے علاقائی اور بین الاقوامی مذاکرات اورتعاون کی خوشیاں منا رہا ہے۔گزشتہ کئی برسوں سے ABLF ایشیائی ممالک میں قیادت کی خصوصیات کے بارے میں معلومات کی فراہمی میں بہت مؤثر ثابت ہوا ہے۔ اس کی مختلف سرگرمیوں نے یہ ظاہر کیا ہے کہ مؤثر قیادت لوگوں کی بہتری کیلئے خود اقدامات کرتی ہے.

میگزین کو متحدہ عرب امارات کی وزارت معیشت کی بھی حمایت حاصل ہے۔ وزیر معیشت سلطان بن سعید المنصوری نے کہا کہ اے بی ایل ایف اقتصادی اور تجارتی مذاکرات کے لئے ایک منفرد پلیٹ فارم ہے۔ اس میں ہر سال سرکاری حکام اور اہم ایشیائی ممالک سے کاروباری شخصیات شرکت کرتی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کی اسٹریٹجک اور ترقیاتی خواہشات پوری کرنے کیلئے وزارت معیشت کاروباری برادری کے ساتھ موجودہ تعلقات مضبوط کرنے کے مختلف اقدامات کی حمایت کرتی ہے.

68 صفحات پر مشتمل میگزین ABLF کے 12 سالہ سفر کی ایک جھلک پیش کرتا ہے اور اس میں مضامین، انٹرویو اور اوریجنل کمنٹریز بھی شامل ہیں.

فورم کی کامیابیوں پر تبصرہ کرتے ہوئےاے بی ایل ایف کے شریک بانی اور مستقل رکن مالینی این مینن نے کہا کہ ABLF آج جس مقام پر کھڑا ہے انھیں اس پر فخر ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ فورم متعدد شعبوں، مارکیٹس اور معیشتوں کو سہولت فراہم کررہا ہے.

جن رہنماؤں کے انٹرویو اس ایڈیشن میں شامل ہیں ان میں فیڈرل نیشنل کونسل کی اسپیکر ڈاکٹر امل عبد اللہ القبیسی ، موسمیاتی تبدیلی اور ماحولیات کے وزیر ڈاکٹر ڈاکٹر ثانی بن احمد الزیودی، بھارت کے ٹاٹا ٹرسٹ کے چیئرمین رتن ٹاٹا، ABLF کے شریک بانی کمال ناتھ، مدھیا پردیش کے وزیراعلیٰ، ہندوجا گروپ کے شریک چیئرمین جی.پی. ہندوجا اور توانائی اور بزنس کے شعبے کی کئی ممتاز شخصیات شامل ہیں۔ میگزین کو اے بی ایل ایف کی ویب سائیٹ پر بھی دیکھا جاسکتا ہے.

ترجمہ: ریاض خان 

 

http://wam.ae/en/details/1395302744591

WAM/MOHD AAMIR