دبئی نے دوہزاراٹھارہ میں جعلی اشیا کی فروخت میں ملوث تیرہ ہزار نوسواڑتالیس سوشل میڈیا اکاونٹس بند کئے

دبئی،5 مارچ،2019 (وام)۔۔دبئی اقتصادی ترقی کے محکمہ ،ڈی ای ڈی، کے تجارتی قواعد وتحفظ صارفین کے شعبہ، سی سی سی پی، نے دوہزار اٹھارہ کے دوران دبئی میں مسابقت کے فروغ اور کاروبار کی پائدار افزائش کی حکمت عملی کے تحت ٹریڈ مارک کے تحفظ اور ای کامرس کے استحکام کے لئے تیرہ ہزار نو سو اڑتالیس سوشل میڈیا اکاونٹس بند کئے۔

ان اکاونٹس کو جعلی اشیا کی فروخت میں ملوث ہونے کی تصدیق کے بعد بند کیا گیا۔ان اکاونٹس کے سات کروڑ اناسی لاکھ فالورز تھے۔بند کئے گئے اکاونٹس مٰں سب سے زیادہ تعداد تیرہ ہزار پانچ سو انتیس انسٹاگرام کے تھے جس کے بعد فیس بک اکاونٹس کی تعداد چار سو انیس تھی۔ مسلسل نگرانی اور ٹریڈ مارک مالکان کے تعاون کے علاوہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی مدد کے ساتھ جلعی اشیا بیچنے والی پینتالیس ویب سائٹس کا بھی کھوج لگایاگیا.

سی سی سی پی میں تحفظ حقوق دانش کے ڈائریکٹر ابراھیم بہزاد کا کہنا ہے کہ محکمہ اقتصادی ترقی سوشل میڈیا اور ویب سائٹ کی نگرانی کررہا ہے کیونکہ آج کل یہ اشیا کی سپلائی اور نقل وحرکت کے معروف ذرائع بن چکے ہیں۔ فطرتی طور پرکچھ تاجروں نے ان چینلز کو جعلی اشیا کی فروخت کے لئے استعمال کرنا شروع کردیا ہے۔جس کی روک تھام کے لئے ہم نے ای کامرس مارکیٹ،سوشل میڈیا اور تمام ڈیجیٹل چینلز کی نگرانی کا عمل تیز کیا ہے.

انہوں نے بتایا کہ سی سی سی پی کی نگران ٹیموں نے اڑتالیس سے زائد برانڈ کی جعلی اشیا جن میں بیگز،گھڑیاں، فون اور اسیسریز کے علاوہ پرفیومز،کاسمیٹکس اور ملبوسات کا کھوج لگایا۔ان کا کہناتھا کہ محکمہ اقتصادی ترقی کسی قسم کے تجارتی فراڈ کو برداشت نہیں کرے گا۔ ایسی سرگرمیوں کی روک تھام کے لئے قانون حرکت میں آئے گا جس میں جرمانے بھی کئے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ صارفین کو جعلی اشیا فروخت کرنے والوں سے دور رہنا چاہیئے تاکہ ٹریڈ مارک مالکان کے حقوق کے تحفظ کے ساتھ صارفین کا اپنا تحفظ بھی یقینی ہوسکے.

ترجمہ: تنویر ملک

http://wam.ae/en/details/1395302744617

WAM/MOHD AAMIR