شیخ سیف بن زاید نے "چائلڈ ڈیجیٹل سیفٹی" پروگرام کا آغاز کردیا


ابوظبی، 16مارچ، 2019 (وام) ۔۔ نائب وزیراعظم اور وزیر داخلہ لیفٹیننٹ جنرل شیخ سیف بن زاید آل نھیان نے کہا ہے کہ متحدہ عرب امارات کی قیادت ڈیجیٹل لائف سیفٹی کو بہتر بنانے اور شہریوں کو آن لائن خطرات سے بچانے کیلئے پرعزم ہے.

 

انھوں نے ان خیالات کا اظہار "چائلڈ ڈیجیٹل سیفٹی" پروگرام کے آغاز کی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ یہ پروگرام وزارت داخلہ اور قومی پروگرام برائے خوشحالی کی مشترکہ کاوشوں سے شروع کیا گیا ہے جس کا مقصد آن لائن خطرات اور چیلنجوں کے بارے میں بچوں اور اسکول کے طالب علموں میں بیداری بڑھا کر انٹرنیٹ کے محفوظ اور تخلیقی استعمال کو یقینی بنانا ہے.

 

شیخ سیف نے کہا کہ متحدہ عرب امارات انٹرنیٹ اور سمارٹ فون کی رسائی کے لحاظ سے دنیا کی قیادت کررہا ہے اس لئے ہمارے بچوں کے لئے ایک جدید ترین ڈیجیٹل سیفٹی نیٹ تیار کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔ انھوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کی حکومت خاندان کے استحکام اور سماجی ہم آہنگی کو برقرار رکھنے کے لئے پرعزم ہے اور یہ مقصد اس کے ایجنڈے میں سرفہرست ہے۔ انھوں نے کہا کہ بچوں کی حفاظت متحدہ عرب امارات میں مجموعی طور پر خوشحالی کو فروغ دینے، سماجی استحکام کو برقرار رکھنے، مثبت اور فعال شہریوں کو بااختیار بنانے اور ڈیجیٹل دنیا پر مضبوط اعتماد کے ساتھ نسلوں کو آگے بڑھانے میں کلیدی اہمیت رکھتی ہے.

 

خوشحالی اور بہبود کی وزیر مملکت اوہود بنت خلفان الرومی نے کہا کہ ڈیجیٹل خوشحالی معاشرے کی وسیع تر مجموعی خوشحالی اور آن لائن حفاظت کیلئے ضروری ہے۔ انھوں نے کہا کہ انٹرنیٹ اور سمارٹ ایپلی کیشنز تک محفوظ رسائی کو یقینی بنانے کے لئے لوگوں کو آن لائن خطرات سے آگاہ کرنے کی ضرورت ہے.

 

انکا کہنا تھا کہ بچوں کے لئے ایک محفوظ ڈیجیٹل ماحول قائم کرنا اور انہیں محفوظ طریقے سے استعمال کرنے کے لئے بااختیار بنانے کے وسیع پیمانے پر وسیع تر کمیونٹی اور اس کی خوشحالی کی مثبت عکاسی کرتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ نیا پہلو ہمارے بچوں کے درمیان مثبت اقدار اور رویے کو فروغ دینے اور انہیں انٹرنیٹ اور سماجی نیٹ ورکنگ پلیٹ فارموں کو محفوظ طریقے سے تلاش کرنے کے لئے ہدایت دینے کے لئے ایک طاقتور ذریعہ ہے.

 

انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل خوشحالی کو بہتر بنانا خوشحالی کے قومی ایجنڈے کا ایک سٹریٹجک پہلو ہے جس کا مقصد ایک محفوظ ڈیجیٹل ماحول قائم کرنا اور مثبت آن لائن کمیونٹی تشکیل دینا ہے.

 

"چائلڈ ڈیجیٹل سیفٹی" پروگرام کمیونٹی کو بااختیار بناکر ڈیجیٹل خطرات سے نمٹنے کے قابل بنانا، بچوں کی ڈیجیٹل سیفٹی کو برقرار رکھنے کے لئے والدین کو حفاظتی آلات اور طریقوں سے لیس کرنا اور تعمیری مواد کے استعمال کے قابل بنانا ہے.

 

یہ پروگرام بچوں کی آن لائن حفاظت کو یقینی بنانے اور ویب سائٹس اور سماجی نیٹ ورکنگ پلیٹ فارمز کی نگرانی کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔ یہ پروگرام 51 سے 18 سال کی عمر کے بچوں کو انٹرنیٹ کے محفوظ اور تخلیقی طریقے سے استعمال اور ممکنہ خطرات سے نمٹنے کے طریقوں کے سلسلےمیں آگاہی فراہم کرتا ہے.

 

متحدہ عرب امارات انٹرنیٹ رسائی کے لحاظ سے دنیا میں 98 فیصد کی شرح اور 82 فیصد اسمارٹ فون رسائی کے ساتھ سب سے آگے ہے۔ یہ فیس بک صارفین کے اکاؤنٹس کی رسائی کے لحاظ سے بھی 83 فیصد کے ساتھ سرفہرست ہے۔ اسی طرح 83 فیصد آبادی کو کثرت سے WhatsApp تک رسائی جبکہ تقریبا 53 فیصد آبادی Instagram استعمال کرتے ہیں۔ متحدہ عرب امارات میں ہر شخص روزانہ اوسط 8 گھنٹے آن لائن رہتا ہے جس میں تقریبا 3 گھنٹے سوشل میڈیا پر صرف کئے جاتے ہیں.

 

ریاض خان .

 

http://wam.ae/en/details/1395302747984

WAM/Ahlam Al Mazrooi