سعودی عرب کی تیل پائپ لائن پر ڈرونز کے ذریعے حملہ


جدہ، 14مئی، 2019(وام) ۔۔ سعودی عرب نے اپنی مشرق مغربی پائپ لائن کے دو پمپ اسٹیشنوں پر مسلح ڈرونز کے حملے کی تصدیق کی ہے تاہم کہا ہے کہ خام تیل اور اس کی مصنوعات کی ترسیل اور برآمدات بغیر کسی رکاوٹ کے معمول کے مطابق جاری ہیں.

 

سعودی وزیرتوانائی،صنعت اور معدنی وسائل خالد الفالح نے ایک بیان میں کہا کہ منگل، چودہ مئی کو صبح چھ سے ساڑھے چھ بجے کے درمیان مشرقی صوبے سے ینبع بندرگاہ تک خام تیل لے جانے والی مشرق مغربی پائپ لائن کے پمپ اسٹیشنز نمبر آٹھ اور نو پر مسلح ڈرونز سے حملہ کیا گیا، جس سے آگ بھڑک اٹھنے سے پمپ سٹیشن نمبر آٹھ کو معمولی نقصان پہنچا آگ پر بعد ازاں قابو پالیا گیا.

 

سعودی عرب کی سرکاری خبر ایجنسی ایس پی اے کے مطابق سعودی آرامکو نے حفاظتی اقدامات اٹھاتے ہوئے پائپ لائن کا آپریشنز عارضی طور پر بند کردیا،صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے متاثر ہونے والے پمپ اور پائپ لائن کے آپریشنز کی بحالی کا کام کررہی ہے.

 

الفالح نے کہا کہ مملکت سعودی عرب اس حملے کی مذمت کرتی ہے،انہوں نے زور دے کر کہا کہ دہشت گردی کا تازہ ترین واقعہ اور خلیج عرب میں اہم سہولیات کو سبوتاژ کرنا ناصرف سعودی عرب بلکہ دنیا اور عالمی معیشت کے لئے تیل فراہمی کی سیکیورٹی کو نشانہ بنانے کے مترادف ہے.

 

وزیر کا کہنا تھا کہ "یہ حملے اس بات کا دوبارہ ثبوت ہیں کہ دہشت گرد تنظیموں کا مقابلہ کرنا ہمارے لئے اہم ہے جن میں ایران کے حمایت یافتہ یمن کے حوثی باغی بھی شامل ہیں".

 

ترجمہ۔تنویر ملک.

 

http://wam.ae/en/details/1395302762569

WAM/Urdu