دوہزار اٹھارہ میں قابل تجدید توانائی کے شعبہ میں ملازمین کی تعداد ایک کروڑ دس لاکھ رہی


ابوظہبی، 13جون، 2019 (وام) ۔۔ بین الاقوامی قابل تجدید توانائی ایجنسی،ارینا، کے ایک تازہ ترین تجزیہ کے مطابق دوہزار اٹھارہ میں دنیا بھر میں ایک کروڑ دس لاکھ افراد قابل تجدید توانائی کے شعبہ میں ملازمت کررہے ہیں۔دوہزار سترہ میں یہ تعداد ایک کروڑ تین لاکھ تھی.

قابل تجدید توانائی اور روزگار کے تازہ ترین سالانہ جائزہ کے مطابق چین سمیت قابل تجدید توانائی کی اہم مارکیٹوں میں سست پیدوارا کے باوجود قابل تجدید توانائی کے شعبہ میں روزگار کی شرح میں تیز رفتار اضافہ ہوا ہے.

قابل تجدید توانائی کی سپلائی چین تنوع کے ساتھ اپنے جغرافیائی اثرات میں تبدیلی لارہی ہے۔ابتک قابل تجدید توانائی کی صنعتیں نسبتاً چین،امریکہ اور یورپین یونین جیسی چند ایک مارکیٹوں تک محدود تھی.

تاہم بڑھتے ہوئے، چین کے ساتھ مشر ق اور جنوب مشرقی ایشیائی ممالک سولر فوٹووولیٹک،پی وی، پینل کے اہم برآمد کنندگان کے طور پر سامنے آئے ہیں۔گزشتہ سال قابل تجدید ملازمتوںمیں اضافے کے لئے ملائیشیا،تھائی لینڈ اور ویت نام نے اہم حصہ ڈالا ہے جن کی بدولت دنیا بھر میں قابل تجدید ملازمتوں میں ایشیا کا حصہ ساٹھ فیصد تک برقرار رہا.

ارینا کے ڈائریکٹر جنرل فرانسیسکو لا کمیراکا کہنا ہے کہ" موحولیاتی اہداف کے علاوہ قابل تجدید منتقلی سے روزگار کے زیادہ مواقعوں کی وجہ سے بھی حکومتیں لو کاربن معاشی ترقی کے لئے قابل تجدید توانائی کو فوقیت دے رہی ہیں".

"سولر فوٹو وولیٹک اور ہواتمام قابل تجدید توانائی صنعتوں کے لئے زیادہ متحرک رہی۔دوہزار اٹھارہ میںقابل تجدید توانائی کی کل ورک فلو کے ایک تہائی حصہ کے ساتھ سولر پی وی سرفہرست رہا اس کے بعد مائع بائیو فیول،پن بجلی اور ہوائی بجلی کے شعبے رہے.

جغرافیائی لحاظ سے ایشیا میں تیس لاکھ پی وی ملازمتیں ہیں جو دنیا کی کل تعداد کا تقریباً نواں دسوں حصہ ہے۔ونڈ انڈسٹری میں روزگار کی تعداد بارہ لاکھ ہے جس میں چین کا حصہ چوالیس فیصد ہے اس کے بعد جرمنی اور امریکہ کا نمبر ہے.

کل ملازمتوں کے ایک تہائی کے ساتھ سولر پی وی نے دوہزار اٹھارہ میں قابل تجدید توانائی کی ورک فورس میں پہلی پوزیشن برقرار رکھی.

بائیو فیول کے شعبہ میں چھ فیصد اضافہ کے ساتھ اکیس لاکھ جبکہ ہوا سے توانائی کے شعبہ میں ملازمتوں کی تعداد بارہ لاکھ رہی۔پن بجلی کے شعبہ میں ملازمین کی تعداد اکیس لاکھ رہی جن میں تین چوتھائی آپریشنز اور تعمیر مرمت کے شعبہ میں ہیں.

ترجمہ۔تنویر ملک.

http://wam.ae/en/details/1395302767631

WAM/Urdu