متحدہ عرب امارات عالمی صنعت کے مستقبل کیلئے پرعزم ہے: سہیل المزروئی


یاکترنبرگ، 9 جولائی، 2019 (وام) ۔۔ توانائی اور صنعتوں کے وزیر سہيل بن محمد فراج فارس المزروئی نے روس کے شہر Yekateringurgمیں منعقدہ گلوبل مینوفیکچرنگ اینڈ انڈسٹریلائزیشن سربراہ اجلاس، GMIS کے دوسرے ایڈیشن میں عالمی صنعت کے مستقبل اور پائیدار ترقی کے لئے متحدہ عرب امارات کے عزم پر روشنی ڈالی.

 

اجلاس سے خطاب میں المزروئی نے کہا کہ متحدہ عرب امارات اپنے اس عزم کو چوتھے صنعتی انقلاب کی حکمت عملی ، قومی جدت کی حکمت عملی اور دبئی تھری ڈی پرنٹنگ کی حکمت عملی کے ذریعے حقیقت کا روپ دیا ہے.

 

انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی صنعتی ترقیاتی تنظیم کے ساتھ شراکت داری کے ذریعے ہم اس عزم کو وسعت دے کر باقی دنیا تک پھیلا رہے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ وہ دنیا بھر کے پالیسی سازوں کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں کہ وہ اپنے قومی ترقیاتی پروگراموں میں اعلی درجے کے صنعتی شعبے کو شامل کریں.

 

انہوں نے کہا کہ GMIS عالمی صنعتی شعبوں اور متعلقہ تنظیموں کے رہنماؤں سے رابطے کے لئے ایک مثالی پلیٹ فارم ہے.

 

متحدہ عرب امارات کے توانائی اور صنعتوں کے وزیر نے کہا کہ انکے ملک نے بہت سے اہم شعبوں میں چوتھے صنعتی انقلاب کی ٹیکنالوجی کو اپنانا شروع کر دیا ہے۔ انکا کہنا تھا کہ متحد ہ عرب امارات اقوام متحدہ کے پائیدار ترقیاتی اہداف کو حاصل کرنے کے سلسلے میں کلیدی کردار ادار کررہا ہے.

 

امارات نیوز ایجنسی ، وام کے مطابق GMIS کے موقع پر دیگر مباحثوں میں گفتگو کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات اور روس کے درمیان تعلقات اور سرمایہ کاری میں اضافہ ہورہا ہے.

 

انہوں نے دنیا بھر کے ممالک پر زور دیا کہ وہ چوتھی صنعتی انقلاب سے فائدہ اٹھائیں ۔ انھوں نے اماراتی اور روسی کمپنیوں پر زور دیا کہ وہ اپنی سرمایہ کاری میں اضافہ کریں.

 

انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات روس کے ساتھ تعاون اور تعلقات کو مزید فروغ دینے کا خواہاں ہے.

 

ترجمہ:ریاض خان .

 

http://wam.ae/en/details/1395302773135

WAM/Urdu