یمن کے شعبہ صحت کے لئے عرب امارات کا تعاون اہمیت کا حامل ہے:ای آر سی رپورٹ


ابوظہبی، 11جولائی، 2019 (وام) ۔۔ عرب امارات کی یمن کے صحت کے شعبہ میں رواں سال سے ابتک کی خدمات اہم او ر ٹھوس اہمیت کی حامل رہی ہیں،یہ بات امارات ہلال احمر،ای آر سی کی تازہ ترین رپورٹ میں بتائی گئی ہے جس میں سال رواداری کے دوران صحت عامہ کے شروع کئے گئے منصوبوں،پروگرامز اور اقدامات پر روشنی ڈالی گئی ہے.

 

ای آر سی ششماہی رپورٹ کے مطابق اس اعانت میں اسپتالوں اور مراکز صحت کی بحالی،امراض اور متعدی بیماریوں کے خاتمے کے پروگرامز،طبی اہلکاروںکی تربیت اور یمن سے باہر مریضوں کے علاج معالجے پرآنے والے اخراجات کی ادائیگی شامل ہے.

 

سال رواداری کا آغاز عدن بندرگاہ پر ادویات کی پچیس ٹن کھیپ کی آمدکے ساتھ ہوا جو ساحل بحیرہ احمر کے مراکز صحت میں تقسیم کی گئی اس کے ساتھ اکانومی اینڈ پولیٹیکل سائنس کالج اینڈ میڈیکل کلینک کاآغاز کیا گیا.

 

دوہزار انیس کے آغاز سے ابتک عرب امارات نے یمن کے آزاد ہونے والے گورنریٹ میں تعز اور حضر موت کے چھ اسپتالوں، ساحل بحیرہ احمر اور حضر موت کے گیارہ مراکز صحت ،عدن اور سقطری کے دو خصوصی یونٹس اور ساحل بحیرہ احمر اور عدن میں چار کلینکس سمیت تئیس اسپتالوں اور مراکز صحت کو بحال کیا.

 

عرب امارات نے ضروری کلینیکل سپلائیز اور طبی آلات فراہم کئے جن میں یمن کی وزارت عوامی صحت وآبادی کو ضروری ادویات کے نو کنٹینرز کی فراہمی بھی شامل ہے.

 

عرب امارات نے انسانی ہمدردی کے دو سو کیسز اور حوثی باغیوں کے ہاتھوں زخمی ہونے والے تین سو افراد کی مددکی۔ساحل بحیرہ احمر میں عرب امارات نے سات میڈیکل سینٹرز کا آغاز کیا جن میں التحتا کا المطینة سینٹر او ر ایک سینٹر ا لشجیرة کے علاقے میں شامل ہے۔عرب امارات ے دس میڈیکل سینٹرز کو ادویات اور طبی سازوسامان فراہم کرتے ہوئے طبی اہلکاروں کوتنخواہ بھی اداکی.

 

شبوة میں ڈینگی بخار کے خاتمے کے لئے ایک موبائل کلینک کے قیام کے ساتھ مرخلة السفلة میں حفاظتی سپرے بھی کیا گیا۔سقطری میں خلیفہ بن زاید آل نھیان اسپتال میں ایمرجنسی اور آپریشنز وارڈ قائم کئے گئے۔جبکہ عرب امارات نے سینکڑوں زخمی یمنیوں کے عرب امارات،مصر،سوڈان،بھارت اور اردن میں علاج معالجے کے اخراجات بھی برداشت کئے.

 

سال کے پہلے چھ ماہ کے دوران عرب امارات نے یمنی مریضوں کے تین گرپوں کو اپنے خرچ پر علاج کے لئے بیرون ملک بھیجا۔مارچ میں علاج کے لئے باسٹھ مریضوں کو بھارت بھیجا گیا جس کے بعد چوبیس مریض جون میں بھارت بھجوائے گئے۔ جبکہ مریضوں کے تیسرے گروپ کو مصر روانہ کیا گیا.

 

اب تک بیرون ملک علاج معالجے کی سہولت حاصل کرنے والے یمنی مریضوں کی کی تعداد گیارہ ہزار ہے۔رپورٹ کے مطابق عالمی ادارہ صحت ڈبلیو ایچ او نے عرب امارات کے تعاون کے ساتھ بیس لاکھ یمنی خواتین کو تولیدی صحت کی سہولیات فراہم کیں.

 

ای آر سی نے ملک میں بے گھر ہونےو الے افراد کی سہولت کے لئے پچیس مراکز صحت کو دوبارہ کھولنے میں بھی اقوام متحدہ کے ادارہ کی مدد کی.

 

ترجمہ۔تنویر ملک.

 

http://wam.ae/en/details/1395302773403

WAM/Urdu