عرب امارات کی سینتالیس عالمی مسابقتی انڈیکسزمیں پہلی اور دوسری پوزیشن


ابوظہبی، 16جولائی، 2019 (وام) ۔۔2018 میں، متحدہ عرب امارات نے تقریبا تیرہ ترقیاتی شعبوں میں سینتالیس مسابقتی اہداف میں بین الاقوامی سطح پر پہلی اور دوسری پوزیشن حاصل کی، جو جامع ترقی اورعرب امارات 2021 ویژن حاصل کرنے کی جانب اس کی کوششوں کی عکاسی کرتا ہے.

انسیڈ بزنس سکول کی انٹرنیشنل ٹیلنٹس مسابقی رپورٹ کے مطابق دوہزار اٹھارہ میں عرب امارات نے افرادی قوت کے شعبہ میں روزگارکی آسانی اورورک پروڈکٹویٹی انڈیکس میں پہلی پوزیشن حاصل ہے جبکہ ہائی سکلڈ ورکرز اورانٹلیکٹ اٹریکشن انڈیکس میں دوسری پوزیشن حاصل کی۔شعبہ تعلیم میں عرب امارات نے غیر ملکی طلباکی انرولمنٹ ،ایلیمینٹری سطح کی تعلیم مکمل کرنے اور بین الاقوامی طلبا کی موجودگی کی کیٹیگری میں پہلی پوزیشن حاصل کی.

عالمی اقتصادی فورم کی عالمی مسابقتی رپورٹ کے مطابق افراط زر میں کمی اور مستقبل کی اقتصادیات میں خدمات کے مقامات میں تبدیلی کے کم خطرات کے انڈیکسز میں عرب امارات نے پہلی پوزیشن حاصل کی۔ جبکہ انٹرنیشنل انسٹی ٹیوٹ فار مینیجمنٹ ڈویلپمنٹ نے کاروباری فروغ کی کیٹیگری میں عرب امارات کو دوسری پوزیشن کا حقدار ٹھہرایا.

انٹرنیشنل انوویشن انڈیکس کے معاشی کمپینیوں کے کثیر التعداد اتحاد کے انڈیکس اورکسٹمز سروسز انڈیکس میں بھی دوسری پوزیشن حاصل کی عالمی مسابقتی رپورٹ کے مطابق براڈ بینڈ سبسکرپشن کی کیٹیگری میں عرب امارات نے پہلی پوزیشن حاصل کی جبکہ عالمی مسابقتی ایئربک دوہزاراٹھارہ کے مطابق ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن آف کمپنیز میں دوسری پوزیشن پر رہا.

ماحول کے لحاظ سے، متحدہ عرب امارات دوہزار اٹھارہ میں ماحولیات کی حفاظت کے لئے کوششوں میں اطمینان کی سطح کی کیٹیگری میں پہلے درجہ پر ہے. لیگاٹم پروسپرٹی رپورٹ کے مطابق، آمدنی اور قرضوں کے تناسب کے لحاظ سے عرب امارات دوسرے نمبر پررہا.

عالمی اقتصادی فورم کی مسابقتی رپورٹ کے مطابق قرض ڈائنامکس کی کیٹیگری اور انوسٹمنٹ انوائسز پر ٹیکس اثرات کی کمی سےمتعلق بھی دوسری پوزیشن پر رہا.

عالمی سیرو سیاحت مسابقتی رپورٹ کے مطابق ٹیکس ادائگیوں میں آسانی کی کیٹیگری میں عرب امارات عالمی رینکنگ میں دوسرے درجے پر رہا۔جبکہ غیرملکی ایکسچینج ریٹس سپورٹنگ کمپنی مسابقت کی کیٹیگری میں بھی دوسرے نمبر پررہا.

صنعت اور جدت کےشعبے میں، سالانہ عالمی مسابقتی انڈیکس کے مطابق ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ سہولتوں میں تبدیلیوں کے باعث معیشت کے مستقبل میں خطرات کے خاتمے کے زمرے میں عرب امارات سب سے پہلے درجے میں رہا.

بزنس اسکول گلوبل انوویشن انڈیکس کے مطابق مستقبل کی معیشت میں پروڈکشن سائٹس کو تبدیل کرنے کے خطرے میں کمی کے زمرے میں بھی یہی پوزیشن حاصل کی.

قرارداد وں پر عمل درآمد کی قابلیت،رہائشی قوانین میں لچک اور پبلک اور نجی سیکٹر کے درمیان شراکت داری کے لحاظ سے متحدہ عرب امارات کی حکومت کی کارکردگی نے بین الاقوامی سطح پر ترقی کرتے ہوئے پہلی پوزیشن حاصل کی. جبکہ غیر ملکیوں کی طرف سے رواداری ،حکومت پر اعتماد اور حکومت کی پالیسیوں کو پورا کرنے کی صلاحیت کی کیٹیگری میں دوسری پوزیشن حاصل کی.

عرب امارات نے بجلی تک رسائی اورانفراسٹرکچر شعبے میں روڈ کوالٹی انڈیکس کے زمرے میں بھی پہلی رینکنگ میں جگہ بنائی جبکہ فضائی ٹرانسپورٹ کے ڈھانچہ کے معیار میں دوسری پوزیشن حاصل کی.

سیاحت اورسفر کے شعبے میں، سیاحت اورٹریول سیکٹر کے ترجیحی انڈیکس میں متحدہ عرب امارات پہلے جبکہ سیاحوں کومتوجہ کرنے کے انڈیکس اورسیر وسیاحت کی پائیداریت اور ترقی اور سیاحتی شعبہ کے انفراسٹرکچر کوالٹی انڈیکس میں بھی پہلی رینکنگ میں رہا.

صحت کے حوالے سے ہیلتھ سیکٹر،ایچ آئی وی کی عدم موجودگی، ملیریا کی عدم موجودگی سمیت ہیلتھ کیئر سیٹسفیکیشن انڈیکسز میں ملک نے پہلی رینکنگ حاصل کی.

لیبرتنازعات کی کمی اور کام کی لاگت پرجرم و تشدد کے کم اثرات کی کیٹیگریز میں پہلی، سیکورٹی انڈیکس اور صنفی توازن انڈیکس میں دوسری پوزیشن حاصل کی۔ صنفی مساوات اور خواندگی کی شرح کے لحاظ سے عرب امارات نے پہلی درجہ بندی میں جگہ بنائی جبکہ ایک جیسی نوعیت کے کام کے لئے برابر تنخواہ کے لحاظ سے دوسری درجہ بندی میں آیا.

ترجمہ۔تنویر ملک.

http://www.wam.ae/en/details/1395302774436

WAM/Urdu