FTA نے ایکسائز اشیاء کی رجسٹریشن کیلئے نیا الیکٹرانک نظام شروع کردیا


ابوظبی، 17 اگست، 2019 (وام) ۔۔ فیڈرل ٹیکس اتھارٹی، FTA نے ٹیکس نظام کو مستقل طور پر ترقی دینے اور خاص طور پر ایکسائز ٹیکس کے طریقہ کار کو جدید بنانے کے لئے ایکسائز اشیاء کی رجسٹریشن کا ایک نیا الیکٹرانک نظام شروع کردیا ہے.

 

اتھارٹی نے ایک پریس بیان میں بتایا ہے کہ نیا نظام ایکسائز ٹیکس گوشواروں اور اعلامیوں سے متعلق نئی رپورٹنگ تقاضوں کے علاوہ واضح ہدایت نامہ اور معیارات کے ساتھ ایکسائز سامان کی رجسٹریشن کے لئے درست اور شفاف طریقہ کار پیش کرتا ہے.

 

سرکاری خدمات میں مستقل بہتری اور درست اور شفاف عمل کو یقینی بنانے کے ذریعے ملک کی عالمی مسابقت کو بڑھانے کے لئے متحدہ عرب امارات کی قیادت کی ہدایت کے ساتھ لانچ کا اہتمام کیا گیا ہے.

 

FTA نے ایکسائز سامان سے متعلق تمام کاروباری اداروں پر زور دیا ہے کہ وہ ایکسائز سامان کی رجسٹریشن کے نئے عمل کی پیروی کریں اور سامان کے لئے اندراج کی درخواست جمع کرواتے وقت تمام مطلوبہ دستاویزات آسانی سے دستیاب ہونے کو یقینی بنائیں۔ نئی ہدایات میں جن ضروریات کی وضاحت کی گئی ہے ان میں مصنوعات کی تفصیلات، اجزاء، تصاویر اور ویڈیوز سمیت مارکیٹنگ کی معلومات، کچھ معاملات میں لیب ٹیسٹ اور متحدہ عرب امارات کے خوردہ فروشوں پر مبنی مصنوعات کی خوردہ قیمت یا متعلقہ ملک میں فروخت نہیں ہونے کی صورت میں شامل ہیں.

 

اتھارٹی نے ایکسائز ٹیکس کے قابل افراد سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نئے اعلامیے اور ٹیکس گوشوارہ فارموں کی تعمیل کرے اور درآمد، پیداوار، نامزد زونوں سے فراہمی اور مقامی خریداری میں شفافیت اور درستگی کویقینی بنائے .

 

FTA نے کہا ہے کہ جو بھی شخص جو مقامی مارکیٹوں میں فروخت ہونے والی ایکسائز اشیاء تیار یا درآمد کرتا ہے اسے ایکسائز ٹیکس سے مشروط کیا جاسکتا ہے۔ اتھارٹی نے کہا ہے کہ تمام متعلقہ کاروبار ایکسائز سامان کے بارے میں کابینہ کے فیصلے میں طے شدہ شرائط و ضوابط کے مطابق اپنے ایکسائز سامان کو نئے سسٹم میں رجسٹر کریں.

 

ایف ٹی اے نے کہا ہے کہ ایکسائز ٹیکس کی کوئی حد نہیں ہےجس کا مطلب یہ ہے کہ کسی بھی کاروبار کو ایکسائز سامان سے متعلق سرگرمیوں کے ساتھ آگے بڑھنے اور نئے سسٹم میں اندراج کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس حوالے سے ایکسائز سامان تیار کرنے والوں، درآمد کنندگان اور نامزد علاقوں میں ذخیرہ شدہ ایکسائز سامان کے لئے ضروری طریقہ کار سے آگاہی ایف ٹی اے کی ویب سائیٹ سے حاصل کی جاسکتی ہے.

 

ترجمہ: ریاض خان .

 

http://www.wam.ae/en/details/1395302780330

WAM/Urdu