یمن کے حوالے سے عرب امارات اور سعودی عرب کا مشترکہ بیان


ابو ظہبی ، 8 ستمبر ، 2019 (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب نے یمن کی جائز حکومت اور جنوبی عبوری کونسل کی طرف سے سعودی عرب کے کہنے پر مذاکرات کیلئے آمادگی کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اقدام یمن کے صوبوں میں عدن ، شبوۃ اور ابیئن میں حالیہ بحران کے خاتمہ میں ایک بڑی مثبت پیشرفت ہے – دونوں ممالک کی طرف سے جاری مشترکا بیان میں کہا گیا ہے کہ تقسیم بھلا کر بھائی چارے کے جذبے کے تحت مثبت ماحول کیلئے یہ اقدام بہت اہم ہے ۔ حالیہ بیان 26 اگست کے اس مشترکہ بیان کا تسلسل ہے جو کہ یمن کے عبوری دارالحکومت عدن میں پیش آنے والا واقعات سے متعلق تھا – بیان میں کہا گیا ہے کہ دونوں ملک ، اس معاملے کے متعلقہ فریقین کے ساتھ رابطے میں ہیں تاکہ سیز فائر کرکے بامقصد مذاکرات کی راہ ہموار کی جاسکے ۔ دونوں ممالک کا یہ عزم اور اظہار ، ذمہ داری اتحادی ممالک ہونے کا واضح آئینہ دار ہے ۔ اس بیان میں دونوں ممالک نے تمام تصادم اور خلاف ورزیوں کی صورتحال فوری روکے جانے پر زور دیا ہے جبکہ عوامی اور سرکای املاک کو نشانہ بنائے جانے سے بھی روکا ہے .

مزید برآں ، دونوں ممالک نے فریقین سے مطالبہ کیا کہ وہ امن وامان کے قیام کے لئے مسلح جھڑپوں کے خاتمے کی نگرانی اور استحکام کے لئے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی تشکیل کردہ مشترکہ کمیٹی کے ساتھ کام کرنے کے لئے ٹھوس کوششوں کا مظاہرہ کریں.

بیان میں تمام فریقوں کی سلامتی ، استحکام اور اتحاد کے حصول میں یمنی عوام کے مفادات کو ترجیح دینے اور تنازعہ کو ہوا دینے والے میڈیا پروپیگنڈے میں اضافے کے خاتمے پر بھی زور دیا گیا ہے.

دونوں حکومتوں نے ایران کے توسیع پسندی کے عزائم کو روکنے کے ساتھ یمن میں سرگرم حوثی ملیشیا اور دیگر دہشت گرد تنظیموں کو شکست دیتے ہوئے یمنی ریاست کی سالمیت کو برقرار رکھنے کی کوششوں میں یمن کی جائز حکومت کے لئے اپنی حمایت کا اعادہ کیا.

مشترکہ بیان میں کہاگیا ہے کہ دونوں ممالک حوثیوں کے قبضے سے آزاد ہونے والے یمنی علاقوں کو انسانی ہمدردی کی بنیاد پر امداد فراہم کرتے رہیں گے.

ترجمہ۔تنویر ملک.

http://wam.ae/en/details/1395302784804

WAM/Urdu