دبئی میٹرو بنیادی ڈھانچے کا اہم ستون ہے: محمد بن راشد

  • محمد بن راشد: مترو دبي ركيزة مهمة لبنيتنا الأساسية ومشروع حضاري يخدم المجتمع ويكفل راحة أفراده
  • محمد بن راشد: مترو دبي ركيزة مهمة لبنيتنا الأساسية ومشروع حضاري يخدم المجتمع ويكفل راحة أفراده
  • محمد بن راشد: مترو دبي ركيزة مهمة لبنيتنا الأساسية ومشروع حضاري يخدم المجتمع ويكفل راحة أفراده
  • محمد بن راشد: مترو دبي ركيزة مهمة لبنيتنا الأساسية ومشروع حضاري يخدم المجتمع ويكفل راحة أفراده
  • محمد بن راشد: مترو دبي ركيزة مهمة لبنيتنا الأساسية ومشروع حضاري يخدم المجتمع ويكفل راحة أفراده
  • محمد بن راشد: مترو دبي ركيزة مهمة لبنيتنا الأساسية ومشروع حضاري يخدم المجتمع ويكفل راحة أفراده

دبئی، 8 ستمبر، 2019 (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات کے نائب صدر، وزیر اعظم اور دبئی کے حکمران شیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے کہا ہے کہ متحدہ عرب امارات میں ترقیاتی منصوبوں کا مقصد تمام شہریوں اور سیاحوں کے لئے اعلی ترین معیار زندگی کو یقینی بنانا ہے.

شیخ محمد نے ان خیالات کا اظہار دبئی میٹرو کے دس سال مکمل ہونے کے موقع پر کیا۔ دبئی میٹرو کا افتتاح شیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے 9 ستمبر 2009 کو کیا تھا۔ دبئی میٹرو دنیا کاسب سے طویل بغیر ڈرائیور کے میٹرو منصوبہ ہے۔ یہ منصوبہ بڑے پیمانے پر نقل و حمل کے نظام کو گرین اکانومی کی بنیادوں پر مستحکم کرنے اور موثر اور ماحول دوست طریقوں سے پائیدار ترقی کے حصول کے لئے شیخ محمد کے وژن سے ہم آہنگ ہے.

شیخ محمد بن راشد نے کہا کہ دبئی میٹرو ہمارے بنیادی ڈھانچے کا ایک اہم ستون ہے۔ یہ لوگوں کی زندگی آسان بنانے کے حکومت کے عزم کی عکاسی کرتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس شعبے میں ہماری سرمایہ کاری سب کے لئے محفوظ نقل و حرکت کو یقینی بنانے کی انکی خواہش کی عکاسی کرتی ہے.

شیخ محمد نے دبئی میٹرو کی کامیابیوں کو سراہتےہوئے کہا کہ یہ دبئی میں ٹرانسپورٹ کے بنیادی ڈھانچے میں ایک اعلی معیار کا اضافہ ہے اور جدید ٹیکنالوجی کی نمائش کرنے والے مستقبل کے منصوبوں کے لئے ایک نمونہ ہے۔ یہ منصوبہ عرب دنیا میں اپنی نوعیت کا پہلا اور دنیا کے جدید ترین منصوبوں میں سے ایک ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا ہدف عالمی مستقبل کی صنعت میں سب سے آگے رہنا ہے.

دبئی کےحکمران نے کہا کہ 10 سال پہلے طے کئے گئے اہداف کے حصول میں میٹرو کی کامیابی ہمارے مستقبل کے بارے میں کئے گئے فیصلوں اور جدید مستقبل کی کامیابی کا ثبوت ہے۔ انھوں نے کہا کہ ابتدا میں کچھ لوگ دبئی میٹرو کے بارے میں غیر سنجیدہ تھے تاہم ہم نے اس منصوبے کو عملی جامہ پہنانے کا انتخاب کیا کیونکہ ہمیں احساس تھا کہ محفوظ اور پائیدار نقل و حمل کی فراہمی کے ذریعہ معاشرے میں اس کی اہمیت بڑھے گی.

نائب صدر نے کہا کہ گزشتہ دس سال میں سڑکوں اور ٹرانسپورٹ کے شعبے میں ہماری سرمایہ کاری تقریبا 100 ارب درہم تک پہنچ چکی ہے جس نے ایک مضبوط انفراسٹرکچر کی بنیاد رکھی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم اپنے بنیادی ڈھانچے کے معیار کو بڑھانے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لئے پرعزم ہیں کہ ہم کسی سے پیچھے نہیں ہیں.

شیخ محمد نے روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹی (آر ٹی اے) کے ان منصوبوں اور اقدامات کی تعریف کی جنہوں نے دبئی کی عالمی ساکھ کو بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ انھوں نے ان تمام لوگوں کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے ایسے منصوبوں پر عملدرآمد میں حصہ لیا اور معاشرے کی خوشی کو ترجیح دینے والے شہروں کے لئے دبئی کو عالمی ماڈل بنانے میں کردار ادا کیا.

میٹرو نے اپنے آغاز کے پہلے عشرے میں غیر معمولی کامیابیاں حاصل کی ہیں اور عالمی سطح پر حفاظت کے اعلی معیار کو برقرار رکھا ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ سروس کے آغاز سے اگست 2019 کے آخر تک 1.5 ارب سے زائد افراد نے دبئی میٹرو کا استعمال کیا ہے جو اس کی کامیابی کا ثبوت ہے.

آر ٹی اے کے بورڈ آف ایگزیکٹو ڈائریکٹرز کے چیئرمین اور ڈائریکٹر جنرل مطر الطائر نے کہا کہ دبئی میٹرو شیخ محمد بن راشد آل مکتوم کا آئیدیا ہے۔ یہ منصوبہ عالمی معیار کا انفراسٹرکچر بنانے کے لئے ان کے اس وژن کی عکاسی کرتا ہے جس نے مالیاتی اور کاروباری معاملات کے لئے دبئی کو عالمی مرکز بنا دیا ہے.

انھوں نے کہا کہ میٹرو دبئی کے مشہور مقامات میں ایک خوبصورت اضافہ اور جدید ترین ریل انڈسٹری ٹیکنالوجی کا استعمال ہے۔ دبئی میٹرو نے دنیا کے سب سے طویل بغیر ڈرائیور کےمیٹرو نیٹ ورک کی حیثیت سے اپنے لئے ایک مقام بنا لیا ہے.

الطائر نے دبئی میٹرو کے کامیاب آپریشن میں آر ٹی اے کے اسٹریٹجک شراکت داروں خاص طور پر دبئی پولیس (جنرل ڈائریکٹوریٹ برائے ٹرانسپورٹ سیکیورٹی) کی کاوشوں اور ان کی شراکت کو سراہا۔ انہوں نے ان مسافروں کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے میٹرو کو اپنی نقل و حرکت کا مثالی انتخاب بنایا اور میٹرو آپریشنز اور سہولیات کے قواعد پر تعمیل کی۔ گزشتہ دس سال میں میٹرو سہولیات کی توڑ پھوڑ کی ایک بھی واردات کی اطلاع نہیں ملی ہے.

الطائر نے میٹرو سروس کی نگرانی میں انتھک کوششوں پر آر ٹی اے ملازمین خصوصا ریل ایجنسی کے عملے کا بھی شکریہ ادا کیا.

گذشتہ ایک دہائی کے دوران دبئی میٹرو کی کارکردگی کے اشاریے انتہائی اعلی آپریشنل معیار کو ظاہر کرتے ہیں۔ میٹرو سروس کی بروقت روانگی کی شرح 99.7 فیصد رہی ۔ اپنے آغاز سے اگست تک میٹرو نے 2.348 ملین سفر مکمل کیے اور تقریبا 81 81.133 ملین کلومیٹر کا فاصلہ طے کیا.

میٹرو سروس کا مقصد دبئی کے اندر خاص طور پر سیاحتی علاقوں اور کاروباری اضلاع میں نقل و حرکت کو بہتر بنانا ہے۔ اس کے ذریعے امارات میں بڑے پیمانے پر نقل و حمل کے طریقوں کے انضمام کو بڑھانا، ایک محفوظ اور ہموار راہداری کا متبادل مہیا کرنا، کاربن کے اخراج کو کم کرنا اور لوگوں کے رہن سہن کو بہتر بنانا ہے.

ترجمہ:ریا ض خان .

 

http://www.wam.ae/en/details/1395302784868

WAM/Urdu