متحدہ عرب امارات مسلسل پانچویں بار ICAOکونسل کا رکن منتخب


مونٹریال، یکم اکتوبر، 2019 (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات کومسلسل پانچویں بار انٹرنیشنل سول ایوی ایشن آرگنائزیشن، ICAO کونسل کا رکن منتخب کیا گیا ہے۔ متحدہ عرب امارات 24 ستمبر سے 4 اکتوبر تک کینیڈا کے شہر مونٹریال میں ہونے والے آئی سی اے او کے 40 ویں اجلاس میں 152 ووٹ حاصل کرکے پانچویں بار بین الاقوامی تنظیم میں شامل ہوگیا۔ یہ اعلان مونٹریال میں ہونے والے اجلاس میں کیا گیا جس میں وزیر معیشت اور جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی بورڈ کے چیئرمین سلطان بن سعید المنصوری اور کینیڈا میں متحدہ عرب امارات کے سفیر فہد الرقبانی اور جی سی اے اے کے ڈائریکٹر جنرل سیف محمد السویدی نے شرکت کی۔ ICAO اقوام متحدہ کی ہوا بازی کی ایجنسی ہے جبکہ کونسل ICAO کی گورننگ باڈی ہے۔ وزیر معیشت اور جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی بورڈ کے چیئرمین سلطان بن سعید المنصوری نے کہا کہ یہ متحدہ عرب امارات اور اس کے جدید شہری ہوا بازی کے شعبے کے لئے ایک بڑی کامیابی ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ ایک اور سنگ میل ہے جس سے ہوا بازی کی صنعت میں متحدہ عرب امارات کا مقام مزید مستحکم ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات عالمی معاشی اثر و رسوخ کی وجہ سے ہوا بازی کی صنعت کو مزید تقویت دینے کے لئے ICAO اور اس کے رکن ممالک کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لئے پرعزم ہے۔ المنصوری نے کہا کہ ICAO کی رکنیت سے متحدہ عرب امارات کے ہوابازی کے شعبے کےمفادات کے تحفظ اور فیصلہ سازی کے عمل میں موثر انداز میں تعاون کرکے اس کی ترقی کو یقینی بنانے میں مدد ملے گی ۔ متحدہ عرب امارات اس سے قبل 2007، 2010، 2013، اور 2016 میں ICAO کا رکن منتخب ہوچکا ہے ۔ جی سی اے اے کے ڈائریکٹر جنرل سیف محمد السویدی نے کہا کہ ICAO کیلئے متحدہ عرب امارات کا دوبارہ انتخاب گذشتہ کئی برسوں کی انتھک کوششوں کا ثمر ہے۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ برسوں کے دوران مقامی سول ایوی ایشن کے شعبے کو ہر طرح کی مہارتوں میں صلاحیتوں سے لیس کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات اپنے تمام اسٹریٹجک اشتراک داروں کے تعاون سے عالمی سول ایوی ایشن کے شعبے کو مستحکم کرنے کے لئے موثر کردار ادا کرنے کے لئے پر عزم ہے۔ متحدہ عرب امارات جنرل سول ایوی ایشن کا کمرشل سروس شعبہ اب تک ملک کے اندر اور بیرون ملک 1000 سے زائد افراد کے لئے 80 تربیتی پروگراموں کا انعقاد کر چکا ہے ۔ متحدہ عرب امارات نے 40 ویں اسمبلی کے دوران ہوا بازی کے شعبے میں خواتین کو بااختیار بنانے سے متعلق ایک ورکنگ پیپر بھی مہیا کیا جہاں ریاست کی جانب سے اس شعبے میں شروع کیے گئے کلیدی اقدامات کے ساتھ ساتھ متحدہ عرب امارات کی خواتین کو ہوا بازی کی صنعت میں نئی بلندیوں پر پہنچانے میں مدد ملے گی۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://www.wam.ae/en/details/1395302791434

WAM/Urdu