وام فیچر: راس الخیمہ کا 'الجزیرہ الحمرا ' تاریخ ، فن تعمیر اور سیاحوں کے لئے کشش کا باعث

  • تقرير مجتمعي / الجزيرة الحمراء القديمة في رأس الخيمة تزخر بعبق الماضي وآصالته
  • تقرير مجتمعي / الجزيرة الحمراء القديمة في رأس الخيمة تزخر بعبق الماضي وآصالته
  • تقرير مجتمعي / الجزيرة الحمراء القديمة في رأس الخيمة تزخر بعبق الماضي وآصالته
  • تقرير مجتمعي / الجزيرة الحمراء القديمة في رأس الخيمة تزخر بعبق الماضي وآصالته
ویڈیو تصویر

راس الخیمہ ، 2 اکتوبر ، 2019 (وام) ۔۔ الجزیرہ الحمرا ، "ریڈ آئی لینڈ ،" راس الخیمہ کا ایک تاریخی اور قدیم قصبہ ہے جو آج تک قائم ودائم ہے۔ یہ سینکڑوں سال قدیم ماہی گیری اور موتیوں کی تجارت کا مرکز رہا۔یہ قصبہ ، راس الخیمہ شہر کے جنوب مغرب میں ساحل پر واقع ہے ، اس کے باشندے 20 ویں صدی کے وسط میں اسے چھوڑ کر ابوظہبی کے پھیلتے ہوئے شہر میں منتقل ہوگئے تھے۔ اس شہر کا بیشتر حصہ جو اس وقت بھی اپنی صحیح حالت میں موجود ہے اس میں اس کے قلعے کا ایک حصہ ، بازار ، مساجد اور اس کے بہت سے روایتی مکانات شامل ہیں ، جن میں سے کچھ موتیوں کے سوداگروں کے گھر تھے۔

راس الخیمہ کے شعبہ نوادرات اور عجائب گھر کے ڈائریکٹر جنرل ، احمد عبید الطنیجی کا کہنا ہے کہ الجزیرہ الحمرا آج خطے میں روایتی عربی خلیجی طرز تعمیر خصوصاً عمارتوں میں مرجان کے بلاکس کے استعمال کے مطالعہ کا ایک بہترین موقع فراہم کرتا ہے۔ اگرچہ بہت سی عمارتیں کھنڈر بن چکی ہیں ، لیکن کئی ایک اب بھی اصلی حالت میں موجود ہیں۔ متعدد مکانات کی دیواروں اور کھڑکیوں پر مرجان کے پیچیدہ آرائشی ڈیزائن بنے ہوئے ہیں۔

الطنیجی کا کہنا ہے کہ اس شہر کے باغات اور کھلے دالان ایک زمانے میں یہاں کی سماجی زندگی کا مرکزتھے ، جو لوگوں کے طرز زندگی کا پتہ دیتے ہیں۔ قصبے کے فن تعمیر کو مرتب کرنے کے لئے وسیع پیمانے پر مطالعاتی کام کیا گیا ہے۔جبکہ تعمیر نو اور بحالی پروگرام کے ذریعے بہت ساری اہم عمارتوں کو بحال کیا گیاہے۔ قصبے کی اولین آبادکاری اور اس کے اولین رہائشیوں کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے لئے سروے اور کھدائی کا کام بھی جاری ہے۔ قصبے کے قلعے کا بچ جانے والا واحد حصہ مستطیل نماہے ، جس کے مخالف سمت کے کونوں پر ایک مستطیل اور گول ٹاور ہے۔ ملک کے آثار قدیمہ میں دلچسپی رکھنے والے سیاحوں کے لئے ایک مقبول مقام کی حیثیت کا حامل الجزیرہ الحمرا اب یورپی اور ایشیائی ممالک کے سیاحوں کی بڑی تعداد کو بھی اپنی جانب راغب کررہا ہے۔

ترجمہ۔تنویر ملک۔

http://www.wam.ae/en/details/1395302791475

WAM/Urdu