ہوابازی کو ترجیح ، عرب امارات کی جی ڈی پی میں 2037 تک 80 ارب ڈالر کا اضافہ کرے گی : آئی اے ای اے


ابوظہبی ، 8 اکتوبر ، 2019 (وام) ۔۔ انٹرنیشنل ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن آئی اے ٹی اے نے متحدہ عرب امارات کیلئے فضائی سفر کی اہمیت سے متعلق نئی تحقیقی رپورٹ کو پیش کیا ہے جس کے مطابق یہاں ایوی ایشن کو بنیادی سٹریٹجک اثاثہ بنائے جانے کے اقدام سے 2037ء تک چھ لاکھ بیس ہزار نئی ملازمتیں پیدا ہونگیں اور قومی معیشت کی جی ڈی پی میں 80 ارب ڈالر کا اضافہ ہوگا – آئی اے ٹی اے کی رپورٹ کے مطابق ایوی ایشن کو پہلے ہی عرب امارات کی معیشت میں اہمیت حاصل ہے ، یہ صنعت 8 لاکھ روزگار فراہم کرنے کے ساتھ قومی جی ڈٰی پی میں 4ء47 ارب ڈالر کی حصہ دار ہے جو کہ کل جی ڈی پی کا 3ء13 فیصد بنتا ہے ۔ رپورٹ کے مطابق اگر حکومت نے ایوی ایشن کیلئے مثبت ایجنڈا جاری رکھا تو عرب امارات کی ہوابازی کی مارکیٹ 2037ء تک 170 فیصد بڑھ جائے گی ، جس سے اس صنعت سے وابستہ ملازمتوں کی تعداد 14 لاکھ ہوجائے گی اور جی ڈی پی میں اسکا مجموعی حجم 128 ارب ڈالر کا ہوگا - عالمی تنظیم نے اس صنعت کے تین شعبوں کی نشاندہی کی ہے جن میں پیشرفت سے عرب امارات کو مزید قدر حاصل ہوگی ، ان میں فضائی حدود میں اضافہ کرکے مستقبل کی ڈٰیمانڈ کو پورا کرنا ، متوقع ترقی کے مطابق انفراسٹرکچر کو بڑھانا اور مسافروں کی توقعات کو مدنظر رکھتے ہوئے جدید ٹیکنالوجی کو فروغ دینا شامل ہیں ۔ عالمی تنظیم کے علاقائی نائب صدر برائے مشرق وسطی محمد علی البکری نے اس رپورٹ پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہاہےکہ گزشتہ 25 برس میں عرب امارات نے ہوابازی کے شعبے میں مثالی پیشرفت کی ہے ، دنیا کی چند ہی ریاستیں اس شعبے کی اتنی اہمیت دیتی ہیں اور عرب امارات کو اسکا بھرپور فائدہ بھی ملا ہے – انہوں نے کہاکہ آج عرب امارات نے فضائی تجارتی سہولت میں دنیا کا پہلا نمبر حاصل کیا ہے ، ویزا کھولنے کے حوالے سے مشرق وسطی کا یہ سب سے بہترین ملک ہے ، اسکی ایئرلائنز دنیا بھر میں جارہی ہیں ، اب مستقبل کے چیلنجوں سے عہدہ بر آ ہونے کیلئے اسے مجوزہ تین اقدامات پر بھی توجہ دینی چاہیئے –

ترجمہ ۔ تنویر ملک –

https://wam.ae/en/details/1395302793142

WAM/Urdu