دبئی کی آئی ٹی میں غیرملکی تجارت 10 برس میں دگنا ہوکر 231 ارب درہم ہوگئی


ابوظہبی ، 9 اکتوبر ، 2019 (وام) ۔۔ دبئی کے گزشتہ دہائی میں اپنی آئی ٹی اور ٹیلکام صنعت سے متعلق غیرملکی تجارت کو تقریبا دوگنا کردیا ہے ، یہ 2009ء میں 117 ارب درہم کی تھیں جو کہ 2018ء میں 97 فیصد بڑھ کر 231 ارب درہم کی ہوگئیں ۔ یہ تفصیلات دبئی کسٹمز کی طرف سے جی ٹیکس ٹیکنالوجی ہفتہ 2019ء کے موقع پر جاری کی گئیں ہیں – سال رواں 2019ء کے پہلے چھ ماہ میں آئی ٹی اور ٹیلیکان شعبے کی تجارت گزشتہ سال کے اسی عرصہ سے 4 ارب درہم بڑھ کر کل 118 ارب درہم کی رہیں ۔ اس میں درآمدات 60 ارب درہم جبکہ برآمدات 15 فیصد بڑھ کر 875 ملین زیادہ رہیں اور ری ایکسپورٹ 8 فیصد بڑھ کر 57 ارب درہم کی رہیں ۔ اس شعبے میں تجارت کیلئے عرب امارات کا سب سے بڑا شراکت دار ملک چین رہا جس سے تجارتی حجم 32 ارب درہم رہا ، دوسرے نمبر پر ویتنام 15 ارب درہم اور تیسرے نمبر پر سعودی عرب سے 9 ارب درہم کی تجارت ہوئی – اس شعبے میں تجارت کے اندر سمارٹ اور سیل فون کا سب سے بڑا حصہ رہا جسکی مالیت 6ء66 ارب درہم ہے ، دوسرے نمبر پر کمپیوٹر ہیں جسکا حجم 9 ارب درہم ، فون کے فاضل پرزہ جات کی تجارت کا حجم 8ء2 ارب درہم ، ڈیٹا سٹوریج کی اشیاء کی تجارت 7ء1 ارب درہم اور سمارٹ ٹی وی اور ایل ای ڈیز کا تجارتی حکم 1 ارب درہم رہا ۔ ڈی جی دبئی کسٹمز احمد محبوب کا کہنا ہے کہ یہ تجارتی اعداد شمار آئی ٹی اور ٹیلکام شعبے میں دبئی کے عالمی مرکز ہونے کا ثبوت ہے اور ایسی تجارت دنیا بھر میں بھی فروغ پارہی ہے – ترجمہ ۔ تنویر ملک – http://wam.ae/en/details/1395302793534

WAM/Urdu