ادنوک سٹریٹجک پارٹنرشپ کو وسعت دے رہی ہے: الجابر


لندن، 9 اکتوبر، 2019 (وام) ۔۔ ابوظبی نیشنل آئل کمپنی، ادنوک شراکت داری اور سرمایہ کاری کے لئے نئے مواقع پیدا کررہی ہے کیونکہ وہ متوازن سمارٹ نمو کی حکمت عملی پر عمل پیرا ہے اور دنیا کی بڑھتی ہوئی توانائی کی طلب کو قابل اعتماد طریقے سے پورا کرنے کے لئے ذمہ دارانہ پیداوار کو آگے بڑھا رہی ہے۔

یہ بات وزیر مملکت اور ادنوک گروپ کے سی ای او ڈاکٹر سلطان بن احمد سلطان الجابر نے لندن میں انرجی انٹیلی جنس کے زیر اہتمام 40 ویں آئل اینڈ منی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انھوں نے کہا کہ عالمی معیشت میں موجودہ منفی خطرات کے جواب میں مختصر مدت توانائی کی طلب میں نرمی کا سلسلہ جاری ہے۔ تاہم درمیانی اور طویل مدت کے دوران آوٹ لک مثبت، ٹھوس اور مضبوط رہتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ 2040 تک عالمی توانائی کی طلب میں موجودہ یورپ کی توانائی کی طلب کے تین گنا تک اضافہ ہوجائے گا۔ ڈاکٹر سلطان بن احمد سلطان الجابر نے کہا کہ ہم ایک متوازن سمارٹ گروتھ اسٹریٹجی پر عمل پیرا ہیں جو طویل مدت مطالبےکو پورا کرتے ہوئے اخراجات کے بارے میں محتاط ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم تیل کی پیداواری صلاحیت میں بہت زیادہ توسیع کر رہے ہیں اور قدرتی گیس کے وسیع ذخائر کو کھول رہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ہم متحدہ عرب امارات میں بھی بہت بڑی سرمایہ کاری کر رہے ہیں جو دنیا کے سب سے بڑے ادائیگی اور پیٹرو کیمیکل کمپلیکس میں سے ایک ہے۔ یہ گیٹ وے پر واقع ایک مربوط اور مینوفیکچرنگ مرکز کی بنیاد فراہم کرے گا جس سے پیداوار میں مزید اضافہ ہوگا۔ ڈاکٹر الجابر نے کہا کہ ادنوک اپنی بیلنس شیٹ بہتر بنانے اور طویل مدت سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کے لئے اپنی مضبوط AA اسٹینڈ اسٹون کریڈٹ ریٹنگ کا فائدہ اٹھا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ادنوک اپنے کاموں کو غیر مقفل کرنے اور زیادہ سے زیادہ قیمت کو کھولنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ادنوک اپنے سرمایے کا بہتر استعمال کررہا ہے اور اثاثوں کے پورٹ فولیو کا زیادہ تیزی سے انتظام کر رہا ہے۔ اس کے نتیجے میں ادنوک نے پچھلے بارہ مہینوں میں اپنی ویلیو چین میں اسٹریٹجک ایکویٹی پارٹنرشپ کا ایک سلسلہ شروع کیا ہے۔ وزیر مملکت نے کہا کہ ادنوک نئی شراکت داری کے لئے تیارہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم سرمایہ کاروں اور شراکت داروں کے لئے اضافی مواقع پیدا کریں گے۔ ڈاکٹر الجابرنے ذمہ داری اور قابل اعتماد طریقے سے مستقبل کی توانائی کی طلب کو پورا کرنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ کم لاگت اور اعلیٰ کارکردگی، سرمایہ کاری کی صلاحیت اور قدر سازی کو ترجیح دے رہے ہیں۔

ترجمہ: ریاض خان ۔

http://wam.ae/en/details/1395302793437

WAM/Urdu