بھارت میں 4 ارب ڈالر کے کیمیکل کمپلیکس کی تیاری میں ادنوک کی شراکت داری


ابوظہبی ، 17 اکتوبر ، 2019 (وام) ۔۔ ابوظہبی نیشنل آئل کمپنی ادنوک ، عدانی گروپ ، بی ای ایس ایف ایس ای اور بوریالس اے جی نے مفاہمت کی ایک یادداشت پر دستخط کیئے ہیں جس کے تحت وہ بھارتی ریاست گجرات کے علاقہ مندرا میں کیمیکل کمپلیکس کی تعمیر کیلئے اشراک عمل کے مزید جائزہ کی مشترکا فزیبلٹی تیار کریں گے – بی اے ایس ایف اور عدانی گروپ کے درمیان جنوری 2019ء میں طے پانے والے سرمایہ کاری منصوبے کا یہ اگلا قدم ہے ۔ اس میں ادنوک اور بوریالس کو ممکنہ شراکت دار بنانے کے ساتھ فریقین اس منصوبے کے تکنیکی ، مالیاتی اور آپریشنل امور کو بھی طے کررہے ہیں ۔ اس منصوبے پر کل سرمایہ کاری کا تخمینہ 4 ارب ڈالر کا ہے – اس مشترکا منصوبے میں عالمی معیار کا پروپین ڈی ہائیڈروجنیشن ، پی ڈی ایچ ، پلانٹ لگایا جانا ہے جس میں ادنوک سے فراہم کردہ پروپین فیڈ سٹاک پر مبنی پروپائلین تیار کیا جائے گا ۔ یہ پروپائلین جزوی طور پر پولی پروپائلین کمپلیکس کے فیڈ سٹاک کی تیاری کیلئے استعمال ہوگا ، جو ادنوک اور بوریالس کی مشترکا ملکیت ہوگی اور اس میں جدید ترین بوریالس بورسٹر ٹیکنالوجی استعمال ہوگی – ادنوک اور بوریالس کے سٹریٹجک فریم ورک کے تحت یہ پی پی کمپلیکس انکا پہلا غیرملکی پیداواری یونٹ ہوگا ، یہ اکریلک پر مبنی ویلیو چین کمپلیکس کیلئے خام مال تیار کرنے کا کلیدی منصوبہ ہوگا ۔ اس منصوبے کو گجرات کی مندرا بندرگاہ کے ساتھ تعمیر کیا جانا ہے اور اسکی پیداوار زیادہ تر بھارتی مارکیٹ کیلئے ہونگیں جوکہ مقامی صنعت ، تعمیراتی صنعت ، آٹوموٹو اور کوٹنگ میں استعمال ہونگیں – اس کمپلیکس کو مکمل طور پر قابل تجدید توانائی کے ذرائع سے چلایا جائے گا ، اس کیلئے شرکات داروں نے شمسی اور ہوائی توانائی کا پارک لگانے کیلئے مشترکا سرمایہ کاری کرنا ہے ، قابل عمل ہونے کے نتیجے میں یہ منصوبہ دنیا کا پہلا کاربن ڈائی آکسائیڈ سے لاتعلق پیٹروکیمیکل سائٹ بنے گا جوکہ اس کے شراکت داروں کی طرف سے توانائی بچت اور پائیداری کے اصولوں کے مطابق ہوگا – وزیر مملکت اور ادنوک کے گروپ سی ای او ڈاکٹر سلطان بن احمد سلطان الجابر نے اس ایم او یو کے طے پانے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہاہےکہ یہ پیشرفت باہمی مفاد پر مبنی تیز و موثر حکمت عملی کے مطابق ہے ، یہ منصوبہ توانائی کی بڑھتی طلب کو پورا کرنے میں اہم ثابت ہوگا ، ہمارے عالمی پیشرفت منصوبوں میں بھارت کو بہت اہمیت حاصل ہے – عدانی گروپ کے چیئرمین گوتم عدانی کا کہنا تھا کہ وہ عالمی شراکت داروں کے تعاون سے اس منصوبے کی تیاری پر انتہائی خوش ہیں ، یہ اقدام " میک ان انڈیا " اقدام کیلئے بہت اہمیت کا حامل ہوگا جو کہ قوم کے بہتر مستقبل کی جانب ایک اہم قدم بھی بنے گا – بی ای ایس ایف ایس ای کے چیئرمین بورڈ ڈاکٹر مارٹن بروڈرملر کا کہنا تھا کہ انکا ادارہ بھارت کی پیداوار میں اضافے کیلئے پرعزم ہے ، پائیداری کے اس کلیدی منصوبے میں انکا ادارہ اہم کردار ادا کرنے کیلئے تیار ہے ۔ بوریالس کے سی ای او الفریڈ سٹرن کا کہنا ہے کہ شراکت داری کا یہ منصوبہ بھارت میں پی پی کی پیداوار میں اہم ہونے کے ساتھ کئی صںعتوں کیلئے جدید ٹیکنالوجی کو فروغ دے گا اور تخلیق کاری کے مواقع بھی مہیا کرے گا – ایم او یو کے تحت اس منصوبے کے شراکت داری فزیبلیٹی کو آئیندہ سال کی پہلی سہہ ماہی تک تیار کریں گے جبکہ پیداواری آغاز کا تخمینہ سال 2024ء کیلئے لگایا گیا ہے – ترجمہ ۔ تنویر ملک – http://wam.ae/en/details/1395302795486

WAM/Urdu