امارات، جاپان غیر تیل کی تجارت 481.34 ارب درہم  تک پہنچ گئی


ابوظبی، 13 جنوری، 2020 (وام) ۔۔ وزارت معیشت کے اعدادوشمار کے مطابق متحدہ عرب امارات اور جاپان کے مابین گزشتہ دس سال کے دوران غیر تیل کی تجارت کا کل حجم 481.34 ارب درہم یا 130.8 ارب ڈالر تک پہنچ گیا ہے۔ یہ اعدادوشمار دونوں ملکوں کے درمیان بڑھتی ہوئے تجارتی اور معاشی تعلقات کو ظاہر کرتے ہیں۔ ان اعدادوشمار کے مطابق 2019 کی پہلی ششماہی میں دوطرفہ تجارت کا مجموعی حجم 26 ارب درہم تک پہنچ گیا۔ دونوں ممالک کی قیادت کے باہمی دوروں کے دوران 24 معاہدوں اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط ہوئے جس سے دوطرفہ تعلقات کو 2018 میں اسٹریٹجک تعلقات کی سطح تک لے جانے میں مدد ملی۔ وزارت معیشت اور فیڈرل مسابقتی اور شماریات اتھارٹی کے سرکاری ریکارڈ کے مطابق جاپان متحدہ عرب امارات کے اہم تجارتی شراکت داروں میں سے ایک ہے۔ دونوں ملکوں کے درمیان 2018 میں غیر تیل کی تجارت کا حجم 54.46 ارب درہم تک پہنچ گیا جبکہ متحدہ عرب امارات میں جاپان کی سرمایہ کاری 14.3 ارب درہم کے برابر ہے۔ اس سرمایہ کاری نے دونوں ممالک کے مابین اقتصادی اور تجارتی تعلقات کو مستحکم کرنے میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ متحدہ عرب امارات میں جاپانی سرمایہ کاری زیادہ تر ٹیکنالوجی، قابل تجدید توانائی، نقل و حمل، صحت کی دیکھ بھال، تھوک اور پرچون تجارت اور پولیٹین اور پولی پروپولین کی تیاری کے شعبوں میں ہے۔ متحدہ عرب امارات جاپان کو تیل برآمد کرنے والے پہلے پانچ ممالک میں شامل ہے اور اس کی غیر تیل کی برآمدات میں تانبا اور ایلومینیم شامل ہیں۔ متحدہ عرب امارات کے پرکشش سرمایہ کاری کے ماحول کے باعث دس ہزار جاپانی کمپنیاں، ایجنسیاں اور برانڈز اس وقت متحدہ عرب امارات میں موجودہیں۔ ان میں 88 کمپنیاں، 207 رجسٹرڈ کمرشل ایجنسیاں اور 9,792رجسٹرڈ جاپانی برانڈز شامل ہیں۔ 2017 میں متحدہ عرب امارات کی سیر کرنے والے جاپانی سیاحوں کی تعداد 70,000سے زیادہ ہوگئی تھی جبکہ جاپان جانے والے اماراتیوں کی تعداد میں بھی مسلسل اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395302815928

WAM/Urdu