جمعرات 09 جولائی 2020 - 6:55:54 صبح

سنگاپور  برقی کاروں کی بجائے موثرپبلک ٹرانسپورٹ پر توجہ دے رہا ہے: وزیر ماحولیات


ابوظبی، 11 فروری، 2020 (وام) ۔۔ سنگاپور کے وزیر ماحولیات و آبی وسائل مساگوس زولکفلی نے کہا ہے کہ سنگاپور الیکٹرک کاروں کو فروغ دینے کی بجائے موثر عوامی ٹرانسپورٹ پر توجہ دے رہا ہے تاکہ آلودگی میں کمی کے ساتھ سڑکوں پر بھیڑ کو بھی کم کیا جاسکے۔ ابوظبی کے حالیہ دورے کے دوران امارات نیوز ایجنسی، وام کو خصوصی انٹرویو میں انھوں نے کہا کہ سنگاپور میں جامع پبلک ٹرانسپورٹ کا مقصد صرف آلودگی اور کاربن کے اخراج کو کم کرنا نہیں ہے بلکہ سڑک پر بھیڑ کو کم کرنا بھی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم ضروری سامان اور خدمات کی نقل و حرکت کے لئے اپنی سڑکوں کو ہمیشہ کھلا رکھنا چاہتے ہیں۔ ہمارا نقطہ نظر الیکٹرک کاروں پر مرکوز نہیں ہے اگرچہ وہ کم آلودگی پیدا کرتی ہیں اور کم توانائی استعمال کرتی ہیں۔ ہمارا مقصد ایک بہتر پبلک ٹرانسپورٹ نیٹ ورک فراہم کرنا ہے جو لوگوں کے لئے قابل رسائی، سستی اور آسان ہو۔ سنگاپور نے اپنے موثر عوامی نقل و حمل کے نیٹ ورک کو وسعت دینے کے زبردست منصوبوں کا اعلان کیا ہے۔ سنگاپور کا ہدف2030 تک اپنے ماس ریپڈ ٹرانزٹ، ایم آر ٹی نیٹ ورک کو 200 کلومیٹر سے بڑھا کر 360 کلومیٹر کرنا ہے۔ اس منصوبے کے تحت دس گھروں میں سے آٹھ ایم آر ٹی ٹرین اسٹیشن سے دس منٹ کی واک میں ہوں گے۔ ایم آر ٹی کے بیڑے میں اضافی ٹرینیں اور بسیں بھی شامل کی جارہی ہیں۔ منصوبے کے مطابق 2030 تک سائیکلنگ راستوں کے جال کو 700 کلومیٹر سے زیادہ کردیا جائے گا۔ وزیر ماحولیات و آبی وسائل مساگوس زولکفلی نے انکشاف کیا کہ 2040 تک ہم دس مصروف ترین گھنٹوں میں سے نوگھنٹے کا سفر چلنے، سائیکل چلانے اور دیگر کار لائٹ [کاروں کے استعمال کو کم کرنے] کے ذریعے طے کرنا چاہتے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ ہم سنگاپور کو45 منٹ کی سٹی سٹیٹ بنانا چاہتے ہیں جس کا مطلب یہ ہے کہ سفر کے مصروف ترین اوقات میں بھی گھر سے کام کی جگہ تک پہنچنے میں 45 منٹ سے زیادہ نہیں لگیں گے۔ انہوں نے کہا کہ چاہے الیکٹرک ہو یا غیر الیکٹرک یہ ایک کار ہے جس سے ٹریفک کی بھیڑ پیدا ہوتی ہے۔ لہذا نقل و حمل کے بارے میں ہمارا نقطہ نظر پبلک ٹرانسپورٹ کو پہلی پسند اور طرز زندگی بنانا ہے۔ اگر دنیا کا کوئی بھی شہر ایسا ہو جہاں آپ نجی گاڑیوں کی ملکیت میں اضافے کو کم کرسکیں تو یہ سنگا پور ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ پچھلے چند سالوں سے نجی کاروں کی ملکیت میں اضافہ صفر فیصد رہا ہے۔ اس سوال پر کہ کیا سنگا پور کبھی بھی الیکٹرک کاروں کو کوئی مراعات دے گا انھوں نے کہا کہ ہم اس وقت الیکٹرک کاروں پر توجہ کی بجائے نجی کار کی ملکیت میں اضافے کو روکنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کی وجہ یہ ہے کہ یہاں متبادل [عوامی ٹرانسپورٹ] موجود ہےجو سستی اور لوگوں کے لئے قابل رسائی ہے۔ انھوں نے کہا کہ سنگاپور جنوب مشرقی ایشیاء کا پہلا ملک ہے جہاں گزشتہ سال کاربن ٹیکس متعارف کرایا گیا ۔ اس سلسلے میں آئندہ پانچ سالوں میں اکٹھا کیا جانے والا ایک ارب ڈالر کا ٹیکس کاربن کے اخراج کو کم کرنے کے لئے جدید ٹیکنالوجی کے فروغ پر خرچ کیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ کاربن ٹیکس کی بات کرتے وقت کسی بھی شعبے کو کوئی استثنیٰ حاصل نہیں ہے۔ ہم نے صنعتوں کو اخراج کم کرنے کی ہدایت کی ہے کیونکہ یہ ٹیکس 2030 تک دوگنا یا تین گنا ہوسکتا ہے۔ سنگاپور کے وزیر ماحولیات و آبی وسائل مساگوس زولکفلی نے کہا کہ متحدہ عرب امارات fossil fuels کے متبادل خاص طور پر شمسی فوٹو وولٹک [PV] صنعت میں تبدیل کرنے کے لئے بہت سارے جدید اقدام اٹھا رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات اس سلسلے میں جدید ٹیکنالوجی آپنانے میں سب سے آگے ہے۔ انکا کہنا تھا کہ ہمیں اس طرح کے اقدامات سے بھی فائدہ ہوگا۔ سنگاپور کے وزیر نے کہا کہ دونوں ممالک غذائی تحفظ کے شعبے میں بھی تعاون کر رہے ہیں۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395302823054

WAM/Urdu