جمعرات 13 اگست 2020 - 1:46:01 صبح

براکہ جوہری توانائی پلانٹ کے یونٹ ون کا آپریشن تاریخی کامیابی ہے:ڈی جی ایف اے این آر

ویڈیو تصویر

ابوظبی، یکم اگست،2020 (وام) ۔۔ فیڈرل اتھارٹی برائے نیوکلیئر ریگولیشن، FANR کے ڈائریکٹر جنرل کرسٹر وکٹرسن نے متحدہ عرب امارات کے پُرامن جوہری توانائی پروگرام کے تحت براکہ نیوکلیئر انرجی پلانٹ کے یونٹ ون کے کامیاب آپریشن کو سراہتے ہوئے اسے تاریخی، قومی اور اہم ترین سنگ میل قرار دیا ہے۔ امارات نیوز ایجنسی، وام کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں وکٹرسن نے کہا کہ ایک ایسے وقت جب دنیا کورونا وائرس، کوویڈ ۔19 کا سامنا ہے متحدہ عرب امارات اور اس منصوبے کے ذمہ داروں کے لئے ایک اہم کامیابی ہے۔ انہوں نے کہا کہ FANR براکہ نیوکلیئر انرجی پلانٹ میں اس مرحلے کے دوران تمام لازمی ریگولیٹری اور احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل پیراہے۔ وکٹرسن نے براکہ نیوکلیئر پاور پلانٹ کے یونٹ ون کے لئے آپریٹنگ لائسنس کی درخواست موصول ہونے کے بعد 2015 میں پلانٹ کی ترقی میں اتھارتی کے کردار کے بارے میں بات کی اور کہا کہ FANR نے پلانٹ کی تکمیل کو یقینی بنانے کے ل اپنی ریگولیٹری نگرانی اور معائنہ جاری رکھا ہواہے۔ انھوں نے کہا کہ FANR کا مشن پلانٹ میں عوام، ماحولیات اور کارکنوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے براکہ نیوکلیئر پاور پلانٹ کی کارروائیوں کی نگرانی کرنا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم معائنہ کرنے کے بعد کام کی اجازت دیتے ہیں لہذا ہم نے فروری 2020 میں نواہ انرجی کمپنی کو براکہ جوہری توانائی پلانٹ کا یونٹ ون شروع کرنے کی اجازت دی۔ انھوں نے کہا کہ ہم نے انہیں جوہری ایندھن لوڈ کرنے کی اجازت بھی دے دی۔ ڈاکٹر وکٹرسن نے کہا کہ جب انہوں نے ایٹمی ایندھن لوڈ کیا تو ہم نگرانی کیلئے وہاں موجود تھے اور ہر چیز ہماری دی گئی ہدایات اور اجازت کے مطابق کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ FANR نے متعدد ٹیسٹ تجویز کیے تھے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ سسٹم خاص طور پر حفاظتی نظام اس معیار کے مطابق کام کریں جو ہم نے منظور کیا ہے اور جو اعلی ترین بین الاقوامی معیار کے مطابق ہے۔ لہذا ہم آزمائشی مدت کی نگرانی کے لئے رہائشی معائنہ کاروں اورماہرین کی ٹیموں کے ساتھ ہمہ وقت موجود ہیں۔ انھوں نے کہا کہ کویڈ 19 وباء کے دوران اتھارٹی مکمل طور پر اپنا عمل جاری رکھتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم حفاظت، سلامتی اور دیگر امور کو یقینی بنانے کے لئے کام جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہاکہ اب وقت آگیا ہے کہ ٹیسٹوں کا دوسرا مرحلہ شروع کیا جائے ۔ کچھ مہینوں تک ہم اس طرح کے ٹیسٹ جاری رکھیں گے تاکہ یہ یقینی بنایا جاسکے کہ تجارتی پیداوار میں جانے سے پہلے ہر چیز محفوظ ہے تاکہ محفوظ طریقے سے ہمارے گھروں اور ملک میں صنعت کو بجلی فراہم کی جائے۔ انسانی وسائل کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس وقت ہمارے پاس چھ انسپکٹر مستقل طور پر براکہ سائٹ پر موجود ہیں جو وہیں رہتے ہیں اور 24گھنٹے وہاں کام کرتے ہیں تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ ایٹمی بجلی گھر پر کام جاری رہے۔ اس کے علاوہ ابو ظبی ہیڈکوارٹر میں ہمارے پاس 50 کے قریب ماہرین ہیں جو رہائشی انسپکٹرز کی مدد کرتے ہیں۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://www.wam.ae/en/details/1395302859667

WAM/Urdu