بدھ 20 جنوری 2021 - 3:02:50 شام

شارجہ فلکیاتی آبزوریٹری نے  عالمی سطح پر نئی کامیابی حاصل کرلی

  • تسجيل مرصد الشارقة الفلكي ضمن قائمة المراصد الموثوقة عالميا
  • تسجيل مرصد الشارقة الفلكي ضمن قائمة المراصد الموثوقة عالميا

شارجہ، 13 جنوری، 2021 (وام) ۔۔ عالمی سائنسی شعبوں میں پیشرفت کے فریم ورک کے تحت شارجہ یونیورسٹی میں شارجہ اکیڈمی برائے فلکیات، خلائی علوم اور ٹیکنالوجی (SAASST) نے ایک نیا عالمی کارنامہ ریکارڈ کیاہے۔ بین الاقوامی فلکیاتی یونین (IAU) کے مائنر پلینٹ سنٹر(MPC) نے "شارجہ آبزرویٹری M47" کے کوڈ کے ساتھ معتبر اور قابل اعتماد بین الاقوامی نگرانوں کی فہرست میں آبزرویٹری کو شامل کیا ہے۔ سپریم کونسل کے رکن اور شارجہ کے حکمران ڈاکٹر شیخ سلطان بن محمد القاسمی نے SAASST کو سائنسی عمارت کے طور پر قائم کیا تاکہ وہ فلکیات، خلائی علوم اور ٹیکنالوجی کے امور، اہمیت اور اثرات سے متعلق آگاہی اور عوامی معلومات کو تقویت بخش سکے۔ اس سے تحقیق کے شعبے میں علاقائی اور عالمی سطح پر متحدہ عرب امارات کی سائنسی مرکز کی حیثیت مستحکم ہوگی۔ ایم پی سی کا کہنا ہے کہ شارجہ فلکیاتی آبزوریٹری asteroids کی نگرانی اور کھوج لگا کر دریافت کرے گی اور مستقل مشاہدے اور تجزیے کے ذریعے ان asteroids کی نقل و حرکت سے متعلق سائنسی رپورٹس بھیجے گی۔ یونیورسٹی آف شارجہ کے چانسلر، SAASST کے جنرل ڈائریکٹر اور عرب یونین برائے فلکیات اور خلائی سائنس کے صدر پروفیسر حامد ایم کے النعیمی نے کہا ہے کہ اس عالمی کامیابی کے بعد شارجہ فلکیات آبزرویٹری خصوصی سافٹ ویئر اور اعلی درستگی کے نظام کے ذریعے تجزیہ کرنے کے بعد asteroids کی مشاہداتی رپورٹس بھیجنے کی اہل ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ آبزرویٹری میں ایک ٹیم نے حال ہی میں کئی راتوں میں کم روشنی کی شدت کے سات asteroids کا مشاہدہ کیا، آسمان میں ان کی نقل و حرکت کا تجزیہ کیا اور حتمی رپورٹ ایم پی سی کو بھجوا دی۔ اس رپورٹ کے جائزے کے بعد ایم پی سی نے رصد گاہ کی منظوری دی اور اسے قابل اعتماد عالمی نگرانوں کی فہرست میں شامل کردیا۔ یونیورسٹی آف شارجہ نے SAASST کے تعاون سے کئی نئے گریجویٹ پروگرام شروع کیے ہیں۔ ان میں خلائی سائنسز اور فلکیات میں ماسٹر آف سائنس، جغرافیائی انفارمیشن سسٹم اور ریموٹ سینسنگ میں ماسٹر آف سائنس اور ماسٹر ان ایئر اور خلائی قانون کے پروگرام شامل ہیں۔ ان کا مقصد طلباء کے علمی اور پیشہ ورانہ علم کو بڑھانا اور انھیں فلکیات اور خلائی علوم کے میدان میں مطلوبہ تجربہ فراہم کرنا ہے۔ اس کی تکمیل خصوصی تحقیق اور ترقی پذیر منصوبوں پر کام کرنے کے ذریعے کی جائیگی جو متحدہ عرب امارات اور دنیا میں خلائی شعبے کی حمایت کرتی ہے۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395302901263

WAM/Urdu