اتوار 18 اپریل 2021 - 8:46:37 شام

وام اور اسرائیلی ٹی پی ایس کے درمیان تعاون کا معاہدہ

  • وكالة أنباء الإمارات توقع اتفاقية تعاون مع
  • وكالة أنباء الإمارات توقع اتفاقية تعاون مع
ویڈیو تصویر

ابوظہبی ، 7 اپریل ، 2021 (وام) ۔۔ امارات نیوز ایجنسی ، وام اور اسرائیل کی تازبیت پریس سروس ، ٹی پی ایس نے پیشہ ورانہ تعاون اور خبری تبادلے کے تجربات کو مستحکم کرنے کیلئے آج ایک معاہدے پر دستخط کردیئے – اس معاہدہ سے متحدہ عرب امارات اور ریاست اسرائیل کے درمیان اس دوطرفہ تعاون کو اجاگر کرنے کا موقع بھی ملے گا جوکہ دونوں ممالک کے درمیان گزشتہ ستمبر میں طے پانے والے ابراھیمی امن معاہدہ کے فریم ورک کے مطابق ہے – وام کے ڈائریکٹر جنرل محمد جلال الریسی اور ٹی پی ایس کے ڈائریکٹر جنرل اموتز ایال نے اس معاہدے پر دستخط کیئے – یہ معاہدہ دونوں ممالک کے میڈیا اداروں کے درمیان تعاون کی بنیاد فراہم کرتا ہے ۔ اس سے دونوں ممالک کے مفادات کے فروغ کی خاطر وہ تعاون اور طریقہ کاری ترتیب پایا ہے جوکہ باہمی دلچسپی کی بنیاد پر پیشہ ورانہ رابطوں کو مستحکم کرنے کیلئے ہے ۔ معاہدہ کے تحت دونوں ادارے تحریری اور آڈیو ، ویژول خبروں کا مفت بنیاد پر تبادلہ کریں گے جوکہ انگریزی اور طے پانے والی دیگر زبانوں میں ہوگا ۔ یہ ادارے اپنی فوٹو اور ویڈیو سروس کا بھی دستیاب ٹیکنالوجی کے ذریعے تبادلہ کریں گے – دونوں خبر رساں ادارے پیشہ ور ملازمین کے دوروں کا تبادلہ کریں گے تاکہ مہارت کا تبادلہ ہو اور ہنر و استعداد مزید ترقی پائے – محمد الریسی کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک میں طے پانے والے ابراھیمی امن معاہدہ نے تمام شعبوں میں مشترکا تعاون کی راہیں اس انداز سے کھولی ہیں جوکہ دونوں ممالک کے عوام کے مفاد میں ہوگا ۔ ان کا کہنا تھا کہ متحدہ عرب امارات کا میڈیا شعبہ بہت زیادہ ترقی پذیر ہے جوکہ ملک کی دور اندیش قیادت کی مرہون منت ہے ۔ انہوں نے مہارت کے تبادلہ ، بہترین تجربات سے آگاہ کرکے اور پیشہ ورانہ مہارت کو ترقی کے ذریعے ٹی پی ایس کے ساتھ تعاون میں پیشرفت کیلئے نیک خواہشات کا اظہار بھی کیا – اموتز ایال نے اس معاہدے پر اظہار مسرت کرتے ہوئے کہا کہ یہ دونوں ممالک کے تعلقات کو مزید مستحکم کرنے میں ایک ایسا اہم قدم ہے جوکہ درست ، بامقصد اور پیشہ ورانہ خبری ذرائع کی بنیاد پر کیا گیا ہے – انہوں نے اس توقع کا اظہار بھی کیا کہ معلومات کے تبادلے اور خبروں تک براہ راست رسائی سے دونوں ممالک کے اقتصادی ، سیاحتی اور ثقافتی روابط کو بھی معاونت ملے گی – ترجمہ ۔ تنویر ملک http://wam.ae/en/details/1395302925254

WAM/Urdu