جمعہ 24 ستمبر 2021 - 7:16:00 شام

خلیفہ فنڈ نےایس ایم ایز اور نئے کاروباروں کی جدت کیلئے سپورٹ پروگرام شروع کردیا

  • 123
  • 456

ابوظبی، 13ستمبر، 2021 (وام) ۔۔ خلیفہ فنڈ برائے انٹرپرائز ڈویلپمنٹ نے باضابطہ طور پر اپنا "لیول اپ" پروجیکٹ شروع کردیاہے جو کاروباری افراد، ایس ایم ایز اور نئے کاروباروں کی مدد کرتا ہے تاکہ وہ نئے مواقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئےاپنے کاروبار کو مستحکم اور مضبوط کرسکیں۔ اس پروگرام میں ابوظبی میں گھریلو ترقیاتی منصوبوں کی ترقی کو تیز کرکے ترجیحی شعبوں کو فرو غ دینے پر توجہ دی جائے گی جس سے اس شعبے میں ملازمتوں کے مواقع پیدا ہونگے اور متحدہ عرب امارات علم پر مبنی معیشت کی جانب گامزن ہوگا۔ اس کا مقصد 10 کامیاب ایس ایم ایز اور نئے کاروباروں کو اپنے کاروبار کی ترقی کو برقرار رکھنے کے لیے اعلیٰ معیار اور ماہرین کی مدد سے لیس کرنا ہے۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے خلیفہ فنڈ برائے انٹرپرائز ڈویلپمنٹ کے قائم مقام سی ای او موظع النصری نے کہا کہ کاروباری افراد، ایس ایم ایز اور نئے کاروبار ہماری معیشت میں نئی منڈیوں ، ٹیکنالوجیز اور مہارت تک بغیر کسی رکاوٹ کے رسائی فراہم کرنےمیں بنیادی کردار ادا کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس منصوبے کی کامیابی سےکوویڈ 19 کے بعد کی بحالی کی ترقی کی صلاحیت کو مضبوط بنانے میں مدد ملے گی جس کا مقصد ابوظبی اور متحدہ عرب امارات کو تخلیقی صلاحیتوں اور جدت کے بڑے پاور ہاؤس میں تبدیل کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم مزید چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں کو اپنے ساتھ جوڑنے کے خواہاں ہیں کیونکہ ہمارا مقصد ان کی صلاحیت اور لچک کو بڑھانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ پروگرام وباء سے بحالی اور مسابقت کو تقویت دینے میں مددگار ثابت ہوگا۔ "لیول اپ" مسلسل مراحل میں 2 سے ساڑھے چار ماہ تک خصوصی شعبوں میں کام کرے گا اور یہ زراعت سے شروع ہوگا۔ عام فارمیٹ میں دو ماہ کی سیکھنے اور رہنمائی، ایک فورم اور ڈیمو ڈے کے علاوہ دو میٹنگ ایونٹس شامل ہوں گے۔ جن دیگر شعبوں کا اس پروگرام میں احاطہ کیا جائے گا ان میں فنانس ، آئی سی ٹی ، ہیلتھ سروسز ، بائیوفرما ، زرعی ٹیکنالوجی (AgTech)، سیاحت اور رئیل اسٹیٹ شامل ہیں۔ پروگرام کا پہلا مرحلہ ’’ زراعت اور خوراک کے مستقبل کا دوبارہ جائزہ لینا ‘‘ یکم اکتوبر سے 6 دسمبر 2021 تک چلے گا جس کا مقصد قومی غذائی تحفظ کی حکمت عملی 2051 میں لچکدار اور پائیدار زرعی طریقوں کے عمل کو تیز کرنا ہے۔ موظع النصری نے کہا کہ خلیفہ فنڈ میں ہم بدلتے ہوئے حالات اور مارکیٹ کی بدلتی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے چھوٹے کاروباروں کے لیے صحیح مدد فراہم کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا کام قوم کے استحکام میں مدد کرنے کے ساتھ ساتھ عالمی سطح پر متحدہ عرب امارات کا اثر و رسوخ بڑھانے میں مدد دے گا۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395302969397

WAM/Urdu