اتوار 19 ستمبر 2021 - 5:37:22 صبح

اے ڈی ایف ڈی 24 ملین درہم سے موریطانیہ کی ماہی گیر بندرگاہ کو ترقی دے گا

  • mou signing for financing an ice factory and developing tanit fishing port in mauritania
  • mou signing for financing an ice factory and developing tanit fishing port in mauritania (1)

ابوظہبی ، 15 ستمبر ، 2021 (وام) ۔۔ ابوظہبی فنڈ برائے ترقی ، اے ڈی ایف ڈی نے حکومت موریطانیہ کے ساتھ ایک ایم او یو پر دستخط کردیئے جس کے تحت تانیت کی ماہی گیری بندرگاہ کو 24 ملین درہم (5ء6 ملین ڈالرز) کی لاگت سے جدید اور بہتر بنانے کیلئے مالی تعاون فراہم کیا جائے گا – یہ ایک ماہر کاریگری کی ماہی گیری بندرگاہ ہے ، اسکی ترقی اور تزئین کے عمل میں ایک برف خانہ کی تعمیر بھی شامل ہے جس سے مقامی ماہی گیروں کو ملک کی ماہی گیری معیشت میں مزید سہولیات ملیں گی ، اس سے انکی برآمدی صلاحیت بڑھے گی اور ملک کی فوڈ سکیورٹی حکمت عملی میں معاونت ہوگی – اس منصوبہ سے ماہی گیروں کیلئے خدمات بہتر ہونگی اور وہاں آپریشنل کارکردگی بھی موثر ہوگی – اے ڈی ایف ڈی کے ڈی جی محمد سیف السویدی اور موریطانیہ کے وزیر اقتصادی امور عثمان مامودو کین نے اس ایم او یو پر دستخط کیئے ۔ اس موقع پر دیگر اعلی عہدیدار بھی موجود تھے – السویدی کا کہنا تھا کہ اے ڈی ایف ڈی اور موریطانیہ کے درمیان وسیع بنیاد پر شراکت داری موجود ہے جو کہ موثر اثرات کے اقتصادی و سماجی ترقیاتی منصوبوں سے متعلق ہیں اور یہ سلسلہ 1977 سے چلا آرہا ہے ۔ تانیت کی ماہی گیری بندرگاہ کو جدید بنانے کے عمل سے مقامی ماہی گیر برادری پر براہ راست مثبت اثرات مرتب ہونگے اور موریطانیہ کی قومی پیداوار کو بھی فروغ ملے گا – موریطانیہ کے وزیر کا کہنا تھا کہ اے ڈی ایف ڈی کے ساتھ شراکت داری نے ملک میں سٹریٹجک انفراسٹرکچر کو ترقی دینے میں اہم کردار ادا کیا ہے ، اس ماہی گیر بندرگاہ پر سہولیات و خدمات کی ترقی سے سماجی و معاشی ترقی ہوگی اور ماہی گیری کی برآمدی صلاحیت میں اضافہ ہوگا – اے ڈی ایف ڈی کے تعاون سے بننے والے اس منصوبے سے بندرگاہ پر فوری منجمند کرنے کی سہولیات اور ریفریجریشن کو وسعت ملے گی ، اس سے تانیت فش پروسیسنگ پلانٹ کی استعدادا بھی بڑھے گی اور مچھلی کی برآمدات کو وسعت حاصل ہوگی ۔ اس منصوبے سے بندرگارہ پر کشتی مرمت کی ورکشاپ میں 150 مربع میٹر کا اضافہ ہوگا اور وہاں جدید آلات و سہولیات دستیاب ہونگیں – موریطانیہ میں کاریگر ماہی گیری کو بہت اہمیت حاصل ہے ۔ موریطانیہ کی کل برآمدات میں 58 فیصد مچھلی شامل ہے جبکہ یہ صنعت ملک کی مجموعی جی ڈی پی کا 10 فیصد ہے ۔ یہاں سے سالانہ اوسطا 9 لاکھ ٹن مچھلی کی برآمد ہوتی ہے اور اس کے بڑے درآمد کنندگان میں عرب شامل ہیں – یہ بندرگارہ تقریبا 400 چھوٹی بڑی کشتیوں کیلئے استعمال ہوتی ہے اور یہاں 1740 مربع میٹر پر مچھلی منڈی بھی واقع ہے ۔ اے ڈی ایف ڈی نے اس بندرگارہ کی ترقی کے علاوہ موریطانیہ میں کل 363 ملین درہم (99 ملین ڈالرز) کی لاگت سے دیگر کئی ترقیاتی اقدامات و منصوبے کیئے ہیں جوکہ زرعی ترقی ، پن بجلی ، صحت عامہ ، صنعتی مینوفکچرنگ اور ٹرانسپورٹیشن کے ہیں – ترجمہ ۔ تنویر ملک – http://wam.ae/en/details/1395302970218

WAM/Urdu