ہفتہ 02 جولائی 2022 - 12:25:30 شام

ڈی پی ورلڈ اورسعودی پورٹس اتھارٹی میں جدہ لاجسٹک پارک بنانے کامعاہدہ

  • موانئ دبي العالمية "دي بي ورلد" والهيئة العامة للموانئ السعودية تبرمان شراكة استراتيجية جديدة لإنشاء منطقة لوجستية في جدة
  • موانئ دبي العالمية "دي بي ورلد" والهيئة العامة للموانئ السعودية تبرمان شراكة استراتيجية جديدة لإنشاء منطقة لوجستية في جدة
  • موانئ دبي العالمية "دي بي ورلد" والهيئة العامة للموانئ السعودية تبرمان شراكة استراتيجية جديدة لإنشاء منطقة لوجستية في جدة

دبئی، 19 جون، 2022 ۔۔ متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب کے درمیان گہرے اور مضبوط تعلقات کے ذریعے علاقائی ترقی کو فروغ دینے کے لیے اپنی مہارت اور تجربے کا اشتراک کرنے کی خاطر ڈی پی ورلڈ اور سعودی پورٹس اتھارٹی (موانی) نے جدہ اسلامی بندرگاہ پر ایک جدید ترین پورٹ سینٹرک لاجسٹک پارک بنانے کے 30 سالہ معاہدے پر دستخط کیے ہیں۔ 490 ملین درہم (133.4 ملین ڈالر) سے زیادہ کی سرمایہ کاری کے ساتھ اس معاہدے کا مقصد 250,000 TEUs 20 گنجائش کےان لینڈ کنٹینر ڈپو اور 100,000 مربع میٹر گودام کے ساتھ 415,000 مربع میٹر پرلاجسٹک پارک قائم کرنا ہے۔ مستقبل میں اس میں توسیع کرکے سٹوریج کی جگہ کو 200,000 مربع میٹر تک بڑھا جاسکے گا۔ معاہدے پر سعودی عرب کے ٹرانسپورٹ اور لاجسٹک سروسز کے وزیر اور ماوانی کے چیئرمین انجینئر صالح بن ناصر الجاسر کی سرپرستی میں دستخط کیے گئے۔ دستخط کی تقریب میں موانی کے صدر عمر بن طلال حریری، شیخ نہیان بن سیف النہیان، سعودی عرب میں متحدہ عرب امارات کے سفیر؛ سلطان احمد بن سلیم، گروپ چیئرمین اور ڈی پی ورلڈ کے سی ای او؛ محمد الشیخ، سی ای او ڈی پی ورلڈ سعودی عرب اور سعودی حکومت کے اعلیٰ حکام کے ساتھ ساتھ ڈی پی ورلڈ کے نمائندوں کےایک وفد نے شرکت کی۔ لاجسٹکس پارک ڈی پی ورلڈ کی علاقائی موجودگی کو وسعت دے گا اور سعودی عرب کے لیے ملٹی ماڈل لاجسٹک حل پیش کرے گا۔ بندرگاہ پر مرکوز پارک جدہ اسلامی بندرگاہ کی دوبارہ برآمدی سرگرمیوں کو فروغ دے گا اور درآمد کنندگان اور برآمد کنندگان کے لیے لاجسٹکس کے وقت اور لاگت کو کم کرے گا۔ یہ ایک مربوط سروس پلیٹ فارم فراہم کرے گا جو پورٹ آپریشنز کو آخری میل کی سرگرمیوں سے جوڑتا ہے۔ یہ کارگو کے لیے پروسیسنگ، لیبلنگ، تکمیل، کنسولیڈیشن، ڈی کنسولیڈیشن اور درجہ حرارت سے کنٹرول شدہ اسٹوریج کی سہولت بھی پیشکش کرے گا۔ ڈی پی ورلڈ کے گروپ چیئرمین اور سی ای او سلطان احمد بن سلیم نے کہاکہ ہمیں سعودی ویژن 2030 کے حصول کے لیے موثر کردار ادا کرنے پر فخر ہے۔ سٹریٹجک وژن 2030 کے فریم ورک میں ایک خوشحال اور پائیدار بحری نقل و حمل کے ماحولیاتی نظام کی ترقی شامل ہے اور یہ منصوبہ سعودی عرب کے سماجی و اقتصادی عزائم اور عالمی لاجسٹک مرکز کے طور پر اس کی حیثیت کو مستحکم کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم لاجسٹک خدمات کے اعلیٰ ترین معیارات اور ٹیکنالوجی سے چلنے والے تجارتی حل فراہم کر کے اس سہولت کی جدید کاری میں سرمایہ کاری کے لئے پرعزم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ آج کا سنگ میل کارکردگی اور پیداواری سطح کو بڑھانے اور نئی ملازمتیں پیدا کرنے میں اہم کردار ادا کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہم جدہ اسلامی بندرگاہ کے کردار اور حیثیت کو بڑھانے کے لیے پرعزم ہیں جو بحیرہ احمر پر تزویراتی طور پر واقع ہے اور اس نے تاریخی طور پر مشرق اور مغرب کے درمیان تجارت کی نقل و حرکت کو آسان بنانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکمت عملی کا ایک اہم حصہ اپنے صارفین کے لیے لاجسٹک خدمات کا پیکج کرنا اور مارکیٹ کے موجودہ خلا کو پر کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس لاجسٹک پارک جیسی سہولیات ہمیں معروف لاجسٹک سروس کے ساتھ تعاون بڑھا کر سعودی عرب میں مزید رسائی حاصل کرنے کے قابل بنائیں گی۔ موانی کے صدر عمر حریری نے کہاکہ پارک ساؤتھ کنٹینر ٹرمینل کے آپریشنز کو نئے لاجسٹکس پارک کے ساتھ مربوط کرکے جدید اور ماحول دوست ای سروسز فراہم کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ یہ پارک جدہ اسلامی بندرگاہ کی مسابقت کو بڑھا دے گا۔ انکا کہنا تھا کہ یہ نقل و حمل اور لاجسٹکس خدمات کے لیے قومی حکمت عملی کے مطابق ترسیلی سامان کی مقدار کو بڑھانے میں بھی معاون ثابت ہوگا۔ عمر حریری نے کہا کہ یہ شراکت داری بندرگاہ کے آپریشنز کو نئے لاجسٹکس پارک سے مربوط کرے گی تاکہ اعلی کارکردگی کے ساتھ اینڈ ٹو اینڈ لاجسٹکس خدمات پیش کی جا سکیں۔ یہ ہمیں بڑے لاجسٹک سروس فراہم کنندگان کے ساتھ اپنے تعاون کو مزید وسعت دینے، دوبارہ برآمدی کارروائیوں کو بڑھانے اور اخراجات کو کم کرنے میں بھی مدد دے گی۔ ڈی پی ورلڈ نے جدہ اسلامک پورٹ پر ساؤتھ کنٹینر ٹرمینل کو 30 سال تک چلانے اور اس کا انتظام جاری رکھنے کے لیے اپریل 2020 میں موانی کے ساتھ ایک نئے رعایتی معاہدے پر دستخط کیے اورٹرمینل کو وسعت دینے اور جدید بنانے کے لیے 2.94 ارب درہم (800 ملین ڈالر) سے زیادہ کی سرمایہ کاری کرنے کا عہد کیا۔ یہ اوور ہال منصوبہ چار مرحلوں میں 2024 تک مکمل ہوگا۔ اس منصوبے میں بنیادی ڈھانچے کی اپ گریڈیشن کی جائے گی جس میں گہرائی اور کوے کو وسیع کرنا، جدید آلات اور ٹیکنالوجیز کی تنصیب، آٹومیشن اور ڈیجیٹلائزیشن پروگرام اور ڈیکاربونائزیشن کے اقدامات شامل ہیں۔ مکمل ہونے کے بعد نئے سرے سے تیار کردہ ٹرمینل جدہ اسلامک پورٹ کی کنٹینر ہینڈلنگ کی صلاحیت کو موجودہ 2.5 ملین TEUs سے بڑھا کر 4 ملین TEUs کر دے گا اور بحیرہ احمر کے ساحل پر ایک بڑے تجارتی اور لاجسٹک مرکز کے طور پر جدہ اسلامی بندرگاہ کی حیثیت کو بڑھا دے گا۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395303058869

WAM/Urdu