منگل 05 جولائی 2022 - 1:46:38 صبح

متحدہ عرب امارات کے صنعت کاروں کی جانب سے 'میک اٹ ان امارات' فورم میں امارات ڈویلپمنٹ بینک کی پزیرائی


دبئی، 23 جون، 2022 (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات کے صنعت کاروں نے بدھ کو ابوظہبی میں اختتام پزیر ہونے والے "میک اٹ ان دی امارات" فورم کے دوران ملک کے معاشی تنوع اور صنعتی تبدیلی کے ایجنڈے کے کلیدی مالیاتی محرک کے طور پرامارات ڈویلپمنٹ بینک (ای ڈی بی) کے کردار کوسراہا ہے۔

"انویسٹ، پارٹنر، گرو" کے تھیم کے تحت ہونے والے اس فورم کا اہتمام وزارت صنعت و جدید ٹیکنالوجی(ایم او آئی اے ٹی) نے ابوظہبی ڈیپارٹمنٹ آف اکنامک ڈویلپمنٹ (اے ڈی ڈی ای ڈی) کے تعاون سے کیا تھا ،جس میں متحدہ عرب امارات کی صنعتی صلاحیتوں، مستقبل کی صنعتی ترقی اور اور مینوفیکچرنگ ہب کے طور پر اس کی منفرد حیثیت کو پیش کیا گیا۔

ایم اوآئی اے ٹی کے سٹینڈ میں ای ڈی بی کا بوتھ زبردست دلچسپی کا مرکز بنارہا۔ شرکاء نے صنعتی منصوبوں کے لیے بینک کی براہ راست اور بالواسطہ فنانسنگ کے بارے میں معلومات حاصل کیں۔ یہ فنانسنگ کمپنیوں یا سرمایہ کاروں کو یو اے ای مارکیٹ میں کاروبار کرنے، گرین فیلڈ یا براؤن فیلڈ سائٹس کی تیاری، کاروبار کو فروغ یا متنوع بنانے، آئی آر 4 طریقے اختیار کرنے اور قابل تجدید یا صاف توانائی کے ذرائع پر منتقلی کے لیے پیش کی جاتی ہے۔

بینک نے طویل مدت، مالیت کے مقابلے میں بھاری قرضوں، رعایتی مدت اور مسابقتی شرحوں کے ساتھ مالیاتی ذرائع کی فراہمی کے لیے دیے جانے والے قرضوں کی تفصیل سے آگاہ کیا۔ فورم کے پہلے دن، ای ڈی بی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر احمد محمد النقبی نے " امارات میں کیوں بنائیں؟" کے عنوان سے ہونے والے ایک پینل مباحثے میں حصہ لیا، جس کا مقصد متحدہ عرب امارات میں سرمایہ کاروں کے لیے دستیاب مختلف مراعات اور پالیسیز کو اجاگر کرنا تھا۔

پینل کے دوران، النقبی نے مقامی، علاقائی اور بین الاقوامی سرمایہ کاروں کو لچکدار فنانسنگ تک رسائی فراہم کرکے کاروبار میں آسانی کے لیے ای ڈی بی کے کلیدی کردار پر روشنی ڈالی۔ بینک کی جانب سے ملک کے صنعتی شعبے کی مدد سے متعلق ایک سوال پر النقبی نے کہا کہ ہم منصوبوں اور کمپنیوں کو اپنا کاروبار قائم کرنے ، انکم اور ریونیو پیدا کرنے کے موقع فراہم کرتے ہیں ۔

ہم فنانسنگ کو اپنے سرمائے پر منافع کی نظر سے نہیں دیکھتے بلکہ یہ دیکھتے ہیں کہ اس سے ہمارے ملک کی مجموعی پیداوار میں کس قدر حصہ شامل ہوتا ہے۔ہم قرض لینے والے کا تعین کرتے ہیں، ہر لین دین اور پروجیکٹ کا جی ڈی پی پر پڑنے والے اثر کے لحاظ سے اندازہ لگاتے ہیں اوردونوں کے درمیان توازن قائم کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہاکہ گزشتہ ایک سال کے دوران، ہم نے اپنے ادارے میں حقیقی تبدیلیاں کی ہیں جس سے ہم نے اپنی توجہ ایس ایم ایز اور بڑے کارپوریٹ فنانسنگ سلوشنز پر مرکوز کی ہے۔

2026 تک ہمارا 30ارب درہم قرض دینے کا ہدف ہے۔ہم بنیاد فراہم کرتے ہیں،اور اس پورے مالیاتی نظام کا ایک انجن ہیں۔ فورم میں بینک کی شرکت کے بارے میں، النقبی نے کہاکہ میک اٹ اِن امارات فورم میں ہماری شرکت نے نہ صرف ہمیں اپنی مصنوعات اور خدمات کی نمائش کا موقع فراہم کیا ہے، بلکہ سرمایہ کاروں، کمرشل بینکوں کے ساتھ شراکت میں کام کرنے کے لیے ہم نے اپنی تیاریوں کو بھی پیش کیا۔

انہو ںے کہا کہ کہ متحدہ عرب امارات کے قومی ایجنڈے سے ہم آہنگ ای ڈی بی کی تجدید شدہ حکمت عملی اگلے 50 سالوں کے چیلنجز اور مواقع کے لیے تیاری کرتے ہوئے ملک میں طویل مدتی اور پائیدار ترقی کو یقینی بنانے کے لیے مارکیٹ میں ایک اہم خلا کو پورا کر رہی ہے۔

ترجمہ۔تنویر ملک

https://wam.ae/en/details/1395303060092

WAM/Urdu