بدھ 05 اکتوبر 2022 - 5:28:59 صبح

دبئی میں ہوابازی کی عالمی کانفرنس  میں صنعت کےمستقبل پر تبادلہ خیال

  • "الطيران العالمي" في دبي يسلط الضوء على مستقبل القطاع محلياً وعالمياً
  • "الطيران العالمي" في دبي يسلط الضوء على مستقبل القطاع محلياً وعالمياً
  • "الطيران العالمي" في دبي يسلط الضوء على مستقبل القطاع محلياً وعالمياً

دبئی، 20ستمبر، 2022 (وام)۔۔ متحدہ عرب امارات میں حالیہ دنوں عالمی ہوابازی کانفرنس کا انعقاد کیا گیا جس میں صنعت کی ممتاز شخصیات نے ہوابازی کے مستقبل کے بارے میں اپنے خیالات کا تبادلہ کیا۔ دبئی میں 19سے20 ستمبر تک منعقد ہونے والی اس دو روزہ کانفرنس میں وزیر اقتصادیات اور جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کے چیئرمین عبداللہ بن طوق المری سمیت اتحاد، دناتا اور فلائی دبئی کے سینئر ایگزیکٹوز اور ممتاز مقررین نے شرکت کی۔ کانفرنس کا موضوع "ہوائی سفر کے مستقبل کے لیے بصیرت کو مربوط کرنا" تھا۔ کے پی ایم جی لوئر گلف مشرق وسطیٰ اور جنوبی ایشیا کے چیئرمین اور سی ای او نادر حفر نے کہاکہ امارات ائیر لائن، اتحاد ایئرویز، فلائی دبئی اور ایئر عربیہ اور دبئی اور ابوظہبی میں عالمی معیار کے ہوائی اڈوں نے عالمی سطح پر نام بنایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہوا بازی متحدہ عرب امارات کی معیشت کے لیے ایک اہم شعبہ ہے اور اقتصادی بحالی اور صارفین کے اعتماد میں میں دوبارہ آغاز کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گلوبل ایوی ایشن کانفرنس نے صنعت کے ماہرین اور رہنماؤں کو اپنے قیمتی نقطہ نظر، سیکھنے اور چیلنجوں کا اشتراک کرنے کے لیے ایک پلیٹ فارم فراہم کیا ہے۔ انٹرنیشنل ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن (آئی اے ٹی اے) کی پیشن گوئی کے مطابق مضبوط مانگ، سفری پابندیوں میں نرمی اور روزگار کی بڑھتی ہوئی شرحوں کی وجہ سے اس سال مسافروں کی تعداد وباء سے پہلے کی سطح کے 80 فیصد سے تجاوز کرنے کی توقع ہے۔ 2022 میں کارگو کا حجم 68.4 ملین ٹن کی ریکارڈ بلندی تک پہنچنے کی توقع ہے۔ مشرق وسطیٰ میں اس سال خاص طور پر طویل فاصلے کی پروازوں کا دوبارہ آغاز خوش آئند ہوگا۔ اس سال کی عالمی ایوی ایشن کانفرنس کے مقررین نے ترجیحات جیسے منافع، معاشیات میں تبدیلی، ایندھن کے اخراجات، رکاوٹ، ڈیجٹلائزیشن، ڈیٹا پرائیویسی اور سائبر سیکورٹی، ڈیکاربونائزیشن اور پائیداری پر توجہ مرکوز کی۔ دنیا بھر سے KPMG پارٹنرز اور ڈائریکٹرز، ایوی ایشن کلائنٹس اور صنعت کے ماہرین نے اس میں شرکت کی۔ گلوبل ایوی ایشن کانفرنس ایک سالانہ تقریب ہے جو ہوابازی کے شعبے میں اپنے صارفین کی مدد کے لیے KPMG کی حکمت عملیوں کو تشکیل دیتی ہے جو پہلے شکاگو اور پھرلندن میں منعقد ہوئی تھی۔ اس میں سوچ کی قیادت، نیٹ ورکنگ اور مسائل اور رجحانات پر گہرائی سے بصیرت شامل ہے جو آج ہوا بازی کو متاثر کر رہے ہیں۔ وزیر اقتصادیات اور جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کے چیئرمین عبد اللہ بن طوق المری نے کہاکہ متحدہ عرب امارات کی حکومت کے بصیرت انگیز اقدامات اور ایرو اسپیس، ہوائی اڈے کی ترقی اور بنیادی ڈھانچے میں سرمایہ کاری، ہوا بازی، سیاحت کے عالمی مرکز کے طور پر ملک کی پوزیشن کو برقرار رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہوا بازی کی صنعت متحدہ عرب امارات کی معیشت کا ایک ستون ہے اور متعدد شعبوں میں کاروباری سرگرمیوں کا محرک ہے۔ متحدہ عرب امارات اس شعبے کی پائیدار، جامع اور طویل مدتی ترقی کو یقینی بنانے کے لیے پرعزم ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس شعبے کو مضبوط کرنے کے لیے ہزاروں اعلیٰ معیار کی ملازمتیں پیدا کرنا اور خطے میں ہماری قومی معیشت اور معیشتوں میں اہم کردار ادا کرنے کیلئے ہوا بازی کے لیے ہمارا ترقی پسند ایجنڈا جاری رہے گا۔ فلائی دبئی کے سی ای او غیث الغیث نے کہا کہ گلوبل ایوی ایشن کانفرنس کا دبئی سے بہتر مقام نہیں ہو سکتا۔یہ ایک ایسی منزل ہےجو لچک کا مظہر ہے اور اس نے COVID-19 وباء کے اثرات سے ہوا بازی کی بحالی کو تیز کرنے میں مدد کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال نے اقتصادی ترقی کے لیے رابطہ قائم کرنے اور دبئی کے ہوابازی کے مرکز سے براہ راست ہوائی رابطوں کو بڑھانے میں ایئر لائنز کی اہمیت کو اجاگر کیا۔ انہوں نے کہاکہ فلائی دبئی نے تجارت اور سیاحت کی آزادانہ آمدروفت جاری رکھی حالانکہ یہ ہوا بازی کی تاریخ کے سب سے مشکل وقتوں میں سے ایک تھا۔ انہوں نے کہا کہ 2021 سے ہم نے 22 نئے طیاروں کی ڈیلیوری لی ہے، 45 سے زیادہ مقامات پر آپریشن شروع کیا اور ہماری افرادی قوت میں 25 فیصد اضافہ ہوا۔ انکا کہنا تھا کہ ہم اگلے چند سالوں میں اپنی ترقی کی رفتار کو جاری رکھنے اور 2029 تک اضافی 150 نئے طیاروں کی فراہمی کے لیے تیار ہیں۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ https://wam.ae/en/details/1395303085061

WAM/Urdu