جمعہ 30 ستمبر 2022 - 8:57:33 شام

ترقی کے مواقع کے ساتھ نوجوانوں کو بااختیار بنانا عرب دنیا کی ترقی کے لیے ناگزیر ہے: ذياب بن محمد


ابوظہبی، 22 ستمبر، 2022 (وام) ۔۔ عرب یوتھ سنٹر کے چیئرمین عزت مآب شیخ ذياب بن محمد بن زايد آل نهيان نے نوجوانوں کے لیے تعلیمی معیار کو بہتر بنا کر، روزگار کے امید افزا مواقع پیدا کر کے، اور ان کےکاروباری جذبے کو سپورٹ کر کے عرب دنیا کی آبادی کے اس سب سے بڑے حصے کو بااختیار بنانے کی اہمیت پر زور دیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار شیخ ذياب نےبدھ کوجاری ہونے والے 14ویں سالانہ اے ایس ڈی اے' اے بی سی ڈبلیو عرب یوتھ سروے کاجائزہ لینے کے بعد کیا ہے۔

شیخ ذياب کے مطابق سروے کے کے نتائج عرب نوجوانوں کو بااختیار بنانے اور ان کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے عرب یوتھ سینٹر کے مقرر کردہ اہم اہداف کی عکاسی کرتے ہیں۔ سروے کے نتائج کے حوالے سے شیخ ذياب نے کہاکہ ہم سب کو عرب نوجوانوں کی امیدوں اور مستقبل کے لیے ان کے مثبت نقطہ نظرسے فائدہ اٹھانا چاہئےاور ان کی خواہشات کی تکمیل اور ان کی زندگیوں کو سنوارنے کے لیے سازگار ماحول کی تشکیل کو یقینی بنانا چاہیے۔

عزت مآب نے مزید کہاکہ سروے کے نتائج خطے میں مختلف اتھارٹیز اور اداروں کو ایک ساتھ اور نوجوانوں کی خواہشات کو پورا کرنے کے لیے مل کر کام کرنے کی ضرورت کو اجاگر کرتے ہیں جن بنیادی مفادات میں معیاری تعلیم ،روزگار کے مواقع پیداکرنا اور اقتصادی استحکام شامل ہیں۔ عزت مآب نے سروے کے اہم نتائج میں سے ایک کا حوالہ دیا جس میں روایتی اقدار کے زوال کے بارے میں عرب نوجوانوں میں پائی جانے والی تشویش اور اپنی ثقافتی شناخت کو برقرار رکھنے کی خواہش ظاہر کی گئی ہے، جو ہمارے شاندار ورثے پر توجہ دینے کی اہمیت کو ظاہر کرتی ہے۔

شیخ ذیاب کا کہنا تھا کہ خلیج تعاون کونسل ممالک کے نصف سے زیادہ نوجوانوں کا اپنی زندگیوں میں عربی زبان کی اہمیت پر زوردینا خطے کے نوجوانوں کی ثقافت اور شعور کی تشکیل میں عربی زبان کے ممتاز مقام کو اجاگر کرتا ہے۔

شیخ ذیاب بن محمد بن زاید نے کہا کہ پورے خطے میں عرب نوجوانوں کی جانب سے متحدہ عرب امارات کا اپنے مستقبل اور کام کرنے اور رہائش کے لیے پہلا انتخاب، مشرق وسطی میں امید اور ترقی کی کرن کے طور پر ملک کے اعلی مقام کا واضح ثبوت ہے۔

ترجمہ۔ تنویر ملک

https://www.wam.ae/en/details/1395303085721

WAM/Urdu