تلور کےتحفظ کی قومی نصاب میں شمولیت کا ایک سال کامیابی سے مکمل

ویڈیو تصویر

ابوظبی، 4 نومبر ، 2019 (وام) ۔۔ تلور کے تحفظ کے بین الاقوامی فنڈ، IFHC نے متحدہ عرب امارات کے قومی نصاب میں جدید ایجوکیشن پروگرام کاپہلا سال مکمل ہونے کے موقع پر "کنزرویشن ایجوکیشن: تلور ماڈل" ایوارڈز کی تقریب کا انعقاد کیا۔ یہ تقریب تعلیمی پروگرام کے اہم سنگ میلوں کے حصول کی خوشی منانے اور اسکولوں، اساتذہ اور طلباء کی کاوشوں کو تسلیم کرنے کے لئے ترتیب دی گئی ۔ تقریب میں وزارت تعلیم کے انڈر سیکریٹری عبد الرحمن الحمادی نے بھی شرکت کی۔ انہوں نے پانچ اقسام میں ایوارڈز عطا کئے جن میں تلور کے تحفظ کے چیمپئن، نصاب کا انضمام، تلورایکشن پروجیکٹ، کمیونٹی آؤٹ ریچ اور پروگرام کی پائیداری شامل ہیں۔ 2017 کے آخر میں سات اسکولوں میں اس تعلیمی پروگرام کے آغاز کے بعد سے IFHC کے "تحفظ تعلیم: تلور ماڈل" پروگرام کے تحت طلبا کو تلورکی اہمیت، اس کی فطری عادت اور متحدہ عرب امارات کے ثقافتی ورثے میں محفوظ اور متوازن ماحولیاتی نظام کی اہمیت کے بارے میں تعلیم دی گئی ہے۔ اکتوبر 2018 میں وزارت تعلیم اور ابو ظبی محکمہ تعلیم و علم کی شراکت سے متحدہ عرب امارات کے قومی اسکول کے نصاب میں ضم کرنے کے بعد سے اب IFHC کا تعلیمی پروگرام 40 اسکولوں میں پڑھایا جاتا ہے۔ اس پروگرام کے تحت 36000 طلباء اور 350 سے زیادہ اساتذہ کو تلور کے تحفظ کے حوالے سے آگاہی دی جاتی ہے۔ منیجنگ ڈائریکٹر IFHC ماجد المنصوری نے کہا کہ آج ایک تاریخی لمحہ ہے کیونہ اس دن تلور کے تحفظ کیلئے مستقبل کے رہنماؤں کو تیارکیا جارہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس مضمون کو قومی اسکول کے نصاب میں شامل کیا گیا ہے جو ایک اہم سنگ میل ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ صرف آغاز ہے اور اس سلسلے میں ابھی بہت کچھ کرنا باتی ہے۔ ماجد المنصوری نے کا کہ جب ہم دنیا کی نایاب ترین نسل کے تحفظ کی دنیا کی سب سے بڑی کوششوں اور اس سلسلے میں بین الاقوامی اسٹیک ہولڈر تک رسائی کی کوششیں جاری جاری رکھتے ہیں تو ہم تسلیم کرتے ہیں کہ مستقبل ہمارے بچوں کے ہاتھ میں ہے۔ انھوں نے کہا کہ پروگرام میں شامل ہر فرد کے عزم اور محنت سے ہمارے پختہ ارادے کی تصدیق ہوتی ہے۔ ابوظبی کے City of Baniyas School کی عائشہ جمال اور عروہ یاسلم اور ام القوین کے فلاج المعلاء گرلز سکول نے تلور کے تحفظ کے چیمپئن ایوارڈ حاصل کئے۔ عائشہ نے کہا ہم نے اپنی زندگیوں میں تلورکی اہمیت اور اپنے آباو اجداد کی زندگیوں کے بارے میں جان لیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں اس نازک ماحول کی حفاظت کے لئے ہر ممکن کوشش کرنا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ یہ متحدہ عرب امارات کے تمام شہریوں کا فرض ہے۔ IFHC تلور کے تحفظ کی کوششوں میں مزید اسکولوں کو شامل کرنے کیلے کوشاں ہے اور فنڈ وزارت تعلیم کے تعاون سے نصاب کی ترقی اور اصلاح جاری رکھے گا۔ فنڈ نے اساتذہ کو تربیت اور ترقی دینے کا بھی عہد کیا ہے تاکہ وہ اسکولوں میں مختلف مضامین میں پروگرام کو اپنانے کے طریقوں کے ساتھ ساتھ ڈیجیٹل تعلیمی دور میں طلبا کو بہتر طور پر اس میں شامل کرنے کے لئے جدید تعلیمی طریقے متعارف کرواتے رہیں۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://www.wam.ae/en/details/1395302800049

WAM/Urdu