ادنوک کا امارات گلوبل ایلومینیم کے ساتھ طویل مدت معاہدہ


ابوظبی، 13 نومبر ، 2019 (وہام) ۔۔ ابوظبی نیشنل آئل کمپنی، ادنوک نے تیل اور گیس کے شعبے سے باہر متحدہ عرب امارات کی سب سے بڑی صنعتی کمپنی امارات گلوبل ایلومینیم کے ساتھ طویل مدت معاہدے پر دستخط کئے ہیں ۔ ادنوک کی طرف سے جاری کردہ پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ معاہدے کے تحت کمپنی امارات گلوبل ایلومینیم کو نئے کاربن بلیک اینڈ ڈیلیڈ کوکر، سی بی ڈی سی فراہم کرے گی۔ امارات گلوبل ایلومینیم، ای جی اے کمپنی ایلومنیم پگھلنے کے عمل میں calcined petroleum coke استعمال کرتی ہے ۔ نئے معاہدے کے تحت ای جی اے متحدہ عرب امارات کے اندر سے 40 فیصد تک calcined petroleum coke کی ضروریات پوری کرسکے گی جس سے رسد کے اخراجات اور درآمدات پر انحصار کم ہوگا۔ معاہدے پر ادنوک میں مارکیٹنگ، سپلائی اینڈ ٹریڈنگ کے ڈائریکٹر خالد سلیمین اور ای جی اے کے منیجنگ ڈائریکٹر اور سی ای او عبد اللہ قالبان نے دستخط کیے۔ متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت اور ادنوک گروپ کے سی ای او ڈاکٹر سلطان احمد الجابر اور ای جی اے کے چیئرمین اور مبادالہ انوسٹمنٹ کمپنی کے منیجنگ ڈائریکٹر اور گروپ سی ای او خالدون خلیفہ المبارک بھی دستخطوں کی تقریب میں موجود تھے ۔ ڈاکٹر الجابر نے کہا کہ کئی دہائیوں سے ادنوک نے متحدہ عرب امارات میں نمو، ترقی اور تنوع میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ اس معاہدے سے متحدہ عرب امارات کے قدرتی وسائل سے حاصل ہونے والے مقامی معاشی فائدے میں مزید اضافہ ہونے کے ساتھ مقامی صنعت کا شعبہ مزید مضبوط ہوگا۔ الجابر نے کہا کہ یہ متحدہ عرب امارات میں معاشی نمو اور تنوع کو بڑھانے کے لئے ادنوک کے عزم کی بھی نشاندہی کرتا ہے۔ یہ شراکت ادنوک کو تیل کے ہر بیرل سے حاصل کی جانے والی قدر کو زیادہ سے زیادہ بنانے میں مدد دے گی۔ ای جی اے کے چیئرمین اور مبادالہ انوسٹمنٹ کمپنی کے منیجنگ ڈائریکٹر اور گروپ سی ای او خالدون خلیفہ المبارک نے کہا امارات گلوبل ایلومینیم متحدہ عرب امارات کے اہم ترین صنعتی اثاثوں میں سے ایک ہے اور عالمی ایلومینیم کے شعبے میں کلیدی حیثیت رکھتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ملک کی دو اہم توانائی اور صنعتی برآمد کنندگان کو جوڑنے والی مقامی سپلائی چین کو مضبوط بنانا ہماری معاشی بنیاد کی پختگی کا ثبوت ہے۔ انھوں نے کہا کہ ای جی اے ہر سال مقامی سپلائی چین میں ایک ارب ڈالر سے زیادہ خرچ کرتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ کمپنی نے اس سال کے اوائل میں ایک اور خام مال ایلومینا کی متحدہ عرب امارات کے اندر پیداوار کا آغاز کیا جو ایلومینیم پگھلانے کیلئے درکار ہوتی ہے۔ انھوں نے امید ظاہر کی کہ ای جی اے کی التویلا ایلومینا ریفائنری کمپنی کے 40 فیصد الومینا کی ضروریات کو پورا کرے گی ۔ انھوں نے توقع ظاہر کی کہ 2020 کے دوران اسکی پیدوار شروع ہوجائے گی ۔ ای جی اے نے 1979 میں دبئی ایلومینیم کے نام سے پیداوار شروع کی تھی اور کمپنی متحدہ عرب امارات میں معاشی تنوع کی علمبردار ہے۔ ایلومینیم کا شعبہ متحدہ عرب امارات کی جی ڈی پی کا 1.4 فیصد پیدا کرتا ہے اور 60,000 افراد اس شعبے سے وابستہ ہیں ۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395302802489

WAM/Urdu