ڈرائیور کے بغیر والی گاڑیوں کا فائیو جی ٹیکنالوجی پر تجربہ

  • dg-official-photo
  • large-2615592534845576205

بنسال عبدالقادر سے دبئی ، 8 دسمبر ، 2019 (وام) ۔۔ ڈرائیور کے بغیر چلنے والی گاڑیوں کا فائیو جی ٹیکنالوجی پر تجربہ کیا گیا جس کے بعد انہیں متحدہ عرب امارات کی سڑکوں پر لایا جانا ہے ۔ یہ بات ایک سینئر عہدیدار نے اتوار کو امارات نیوز ایجنسی ، وام ، کو بتائی – عرب امارات کی ٹیلی کمیونیکیشنز ریگولیٹری اتھارٹی ، ٹی آر اے کے ڈی جی حمید عبید المنصوری نے بتایا کہ فائیو جی ٹیکنالوجی کو ٹرانسپورٹ ، صحت اور تعلیم جیسے اہم شعبوں میں توسیع دی جارہی ہے ، اسی پالیسی کے تحت ڈرائیور کے بغیر چلنے والی گاڑیوں کو تجربہ کیا گیا اور اس میں فائیو جی ٹیکنالوجی کا استعمال ہوا – صنعتی رپورٹس کے مطابق فائیو جی ٹیکنالوجی پر چلنے والی بغیر ڈرائیور کی گاڑیوں کے درمیان ایک دوسرے کے ساتھ موثر رابطہ کاری رہتی ہے ، انہیں ٹریفک انسفراسٹرکچر کے ساتھ بہتر مربوط بنایا جاسکتا ہے اور اس وجہ سے ٹریفک کے بہاؤ میں رکاوٹ اور رش جیسے مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے ۔ فائیو جی ٹیکنالوجی کی وجہ سے ایسی گاڑیاں ٹریفک کے حالات اور ممکنہ خطرات کی جلد نشاندہی کرلیتی ہیں ۔ وام نے نومبر میں یہ رپورٹ دی تھی کہ ایسی گاڑیاں 2021 میں متحدہ عرب امارات کی سڑکوں پر آجائیں گی اور عرب امارات ایسی گاڑیوں کے بارے میں قواعد بنانے والا دنیا کا پہلا ملک بھی ہوگا – المنصوری نے بتایا کہ ایسے مقاصد کیلئے فائیو جی کی فراہمی والے ترجیحی مقامات کے تعین کا انحصار ٹرانسپورٹ ، صحت اور تعلیمی شعبوں کی ضروریات کو مدنظر رکھ کر کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہاکہ ہسپتالوں کو اس ٹیکنالوجی کی ریموٹ سرجریز اور جامعات کو تحقیقی شعبے کیلئے اس کی ضرورت ہوگی ۔ ٹی آر اے نے ٹرانسپورٹ ، تعلیم اور صحت شعبوں کے ساتھ نجی شعبے کے ساتھ بھی موثر رابطہ کاری رکھی ہوئی ہے تاکہ فائیو جی ٹیکنالوجی کا بہتر استعمال عمل میں لایا جاسکے – انہوں نے ملک میں فائیو جی ٹیکنالوجی کے فروغ سے متعلق اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ موبائل فون کے صارفین کو ایسی ٹیکنالوجی تک رسائی کے بارے میں فکر مند ہونے کی ضرورت نہیں ، فور جی کی موجودہ ٹیکنالوجی وہ ہے جو پہلے ہی تقریبا فائیو جی کے قریب ہے جبکہ دنیا کے کئی مقامات حتی کہ یورپ میں بھی اس رفتار کی فور جی ٹیکنالوجی فراہم نہیں کی جارہی – ترجمہ ۔ تنویر ملک – http://wam.ae/en/details/1395302808787

WAM/Urdu