ایگری سکیپ میں بائیس ملکوں  کی زرعی زمین اور اثاثوں کی نمائش  کی جائے گی


ابوظبی، 7 دسمبر ، 2019 (وام) ۔۔ متحدہ عرب امارات کے نائب وزیر اعظم، صدارتی امور کے وزیر اور ابو ظبی ایگریکلچر اینڈ فوڈ سیفٹی اتھارٹی کے چیئرمین شیخ منصور بن زاید آل نھیان کی سرپرستی میں تحفظ خوراک اور بیرون ملک زرعی سرمایہ کاری کیلئے وقف بین الاقوامی نمائش ایگری سکیپ کا تیسرا ایڈیشن پیر 9 دسمبر سے ابوظبی کے قومی نمائش مرکز میں شروع ہورہا ہے۔ ابو ظبی ایگریکلچر اور فوڈ سیفٹی اتھارٹی کے اشتراک سے منعقدہ اس ایونٹ میں جنوبی افریقہ اور ایکواڈور کے وزرائے خارجہ، زرعی سرمایہ کاروں سمیت اعلی سطح کے فیصلہ ساز شرکت کررہے ہیں۔ 22 ممالک میں دس ارب درہم مالیت کی زرعی اراضی اور زرعی اثاثوں کی نمائش کے لئے دو روزہ ایونٹ میں 37 ممالک کے 50 نمائش کنندگان اور 300 سرمایہ کار شرکت کریں گے۔ نمائش میں جنوبی افریقہ، سربیا سمیت مالدوا، بیلاروس، ایکواڈور، قازقستان، تاجکستان اور ازبکستان کے قومی پویلین لگائے گئے ہیں۔ ون آن ون ملاقاتوں، ورکشاپس اور نیٹ ورکنگ کے مواقع کے علاوہ ایگرسکیپ 2019 میں پہلی مرتبہ ابو ظبی انوسٹمنٹ آفس کے زیر اہتمام AgTech Area متعارف کرایا جارہا ہے جس میں 15 زرعی جدتوں کی نمائش کی جائے گی۔ ان جدتوں میں کھیتی باڑی اور زرعی پیداواری کے شعبے میں جدید حل کی وسیع رینج پیش کی جائے گی جن میں سمارٹ باغبانی پلیٹ فارم، لیزر ٹیکنالوجی سے چلنے والی انڈور کاشتکاری کے لئے لائٹنگ، ان ڈور اور عمودی کاشتکاری، پانی کے استعمال کی نگرانی، ڈرون اور سیٹلائٹ کے استعمال سے فصلوں کا تجزیہ، جانوروں کی نشونما اور انکے فضلے کا اندازہ لگانے کیلئے D3 کیمرہ ٹیکنالوجی وغیرہ شامل ہیں۔ ابو ظبی ایگریکلچر اور فوڈ سیفٹی اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل سعید البحری سالم الامیری نے کہا کہ اقوام عالم کی غذائی تحفظ کو بڑھانے اور فوڈ سپلائی چینوں کو مستحکم کرنے کے لئے زرعی خوراک میں سرمایہ کاری ایک لازمی ذریعہ ہے۔ ایگری سکیپ 2019 میں اہم بین الاقوامی زراعت کاروں اور فیصلہ سازوں کی بھرپور شرکت اسے سرمایہ کاری کے مواقع پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے ایک مثالی پلیٹ فارم بناتی ہے۔ 2017 میں افتتاحی ایڈیشن کے بعد سے ایگری سکیپ زرعی سرمایہ کاری کے کیلنڈرز پر ایک مضبوط حقیقت بن گئی ہے کیونکہ یہ زرعی سرمایہ کاری میں حالیہ عالمی رجحانات کا ایک جامع جائزہ پیش کرتی ہے۔ 2018 میں اس پروگرام میں 50 سے زائد ممالک میں زرعی زمین اور دیگر زرعی اثاثوں سے وابستہ 53 نمائش کنندگان کی شرکت کی۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://www.wam.ae/en/details/1395302808623

WAM/Urdu