ابراھیمی فیملی ہاؤس ، رواداری و امن کو فروغ دے گا ، سپین کا اخبار ایلایسپانیول


ابوظہبی ، 30 دسمبر ، 2019 (وام) ۔۔ ابوظہبی میں مسجد ، چرچ اور یہودی عبادت گاہ پر مشتمل کمپلیکس " ابراھیمی فیملی ہاؤس " ایک ایسا بین المذاہب مقام ہوگا جو کہ رواداری اور امن کے فروغ کا باعث بنے گا ۔ یہ بات سپین کے آن لائن اخبار ایلایسپانیول نے لکھی – اخبار نے مذہبی آزادی کیلئے متحدہ عرب امارات کے اقدامات کو سراھتے ہوئے لکھا ہے کہ کیتھولک چرچ کے سربراہ پوپ فرانسس کی طرف سے رواں برس فروری میں پاپل ماس لیکر جانا قابل قدر پیشرفت تھی جوکہ عرب خطے میں پہلی بار ہوا – اخبار نے گزشتہ روز اپنے ایک فیچر میں لکھا ہے کہ سعدیات جزیرے میں زیر تعمیر یہ کمپلیکس جو کہ 2022 میں مکمل ہونا ہے کا منصوبہ ، پوپ فرانسس اور الازھر کے امام اعظم ڈاکٹر احمد الطیب کے تاریخی دورے کی مناسبت سے مرتب کیا گیا تھا ۔ اس دورے کے موقع پر تاریخی " انسانی بھائی چارے کا دستاویز " طے پایا تھا – یہ کمپلیکس ایک مرکزی باغ کے گرد تین بڑی عمارتوں پر مشتمل ہوگا جس میں ایک عجائب گھر اور تعلمی مرکز بھی قائم ہونگے ۔ ابراھیمی فیملی ہاؤس کو ڈیزائن کرنے والی برطانوی فرم ادجائے ایسوسی ایٹس کے مطابق منفرد طرز تعمیر والی یہ تینوں عمارتیں ظاہری یکساں ہونگیں جبکہ انکے ڈیزائن جیومیٹریکل طرز پر بنائے گئے ہیں لیکن انکی اندرونی تفصیلات ہر مذہب کی مناسبت سے ہونگیں ۔ اس ذریعے سے اپنی الگ ثقافتی اور تاریخی شناخت رکھنے والے تینوں مذاہب کی یکساں بنیاد کا اظہار کیا گیا ہے – ادجائے ایسوسی ایٹس نے اوسلو میں نوبل امن انعام کا مرکز اور واشنگٹن ڈی سی کا قومی میوزیم برائے افریقی امریکی تاریخ کو بھی ڈیزائن کیا تھا ۔ ترجمہ ۔ تنویر ملک – http://wam.ae/en/details/1395302813326

WAM/Urdu