پیر 28 ستمبر 2020 - 1:15:53 صبح

زایداسپورٹس سٹی اسٹیڈیم: فن تعمیر کا ایک  شاہکار


ابو ظہبی ، 18 مئی ، 2020 (وام) ۔۔ فٹ بال کی تمام سرگرمیاں رک جانے کے باوجود ایشیا کے حوالے سے حالیہ دنوں میں متعدد مثبت خبریں سامنے آئیں ہیں جن میں خاص طور پر گزشتہ30 سالوں سے ابوظہبی کے زاید اسپورٹس سٹی سٹیڈیم کا ایشیاء کے سب سے بڑے اسٹیڈیم کے طور پر انتخاب شامل ہے ایشین فٹ بال کنفیڈریشن کی ویب سائٹ زاید اسپورٹس سٹی اسٹیڈیم کو ایشیا کے ایک عظیم گراؤنڈ اور منفرد اسٹیڈیم قرار دیا ہے جسے خوبصورت محرابوں کے منفرد ڈیزائن کے ساتھ تعمیر کیا گیا ہے ۔ اسٹیڈیم کا ڈیزائن 1974 میں تیارکیا گیا تھا اور جنوری 1980 میں اس کا افتتاح کیا گیا۔ زید اسپورٹس سٹی اسٹیڈیم ایک روایتی وسیع اسٹیڈیم ہے اور اس کے بیرونی حصے پر محرابیں بنائی گئی ہیں اسٹیڈیم کے اندر فٹ بال کی ایک پوری پچ اور اس کے چاروں طرف ایک وسیع ٹھوس کنکریٹ کا ایپرن ہے۔ افتتاح کے بعد سے اسٹیڈیم نے کئی ایک اہم کھیلوں کے مقابلوں کی میزبانی کی جن میں 1982 میں چھٹا عرب گلف کپ ، 1985 میں ایشین یوتھ ۔یو 19 چیمپین شپ ، اولمپکس کھیلوں کے کوالیفائر اور ایشین کپ کوالیفائر ، 1994 میں 12 واں عرب گلف کپ ،1996 میں اے ایف سی ایشین کپ کے فائنلز، 2003 میں ورلڈ یوتھ کپ،2007 میں 18 واں عرب گلف کپ، 2009 ، 2010 ، 2017 اور 2018 کے کلب ورلڈ کپ، 2019 میں ایشین نیشنز کپ کے فائنلز کے علاوہ ابو ظہبی 2019 خصوصی اولمپکس ورلڈ کی افتتاحی تقریب سمیت کئی ایک بڑی چیمپین شپ کی میزبانی شامل ہے۔ اس اسٹیڈیم کی پہلی بار 2009 میں ری ڈویلپمنٹ کی گئی اور اس کی تماشائیوں کی گنجائش کم کرکے 43 ہزار کردی گئی ۔ 2015 میں ترقیاتی سے اسے تعمیراتی شاہکار بنا دیا گیا۔ اس اسٹیڈیم میں فی الحال42ہزار355، وی آئی پیز کے لئے1ہزار436 نشستوں کے علاوہ میڈیا پروفیشنلز کے لئے ایک بڑا پلیٹ فارم ہے جہاں 277 صحافیوں کی گنجائش ہے۔ یہ اسٹیڈیم 12 ملین مربع فٹ کے رقبے پر مشتمل اسپورٹس سٹی کے اندر واقع ہے اس میں تیراکی ، ایتھلیٹکس ، ٹینس اور بولنگ کی سہولیات موجود ہیں۔اس کے تعمیراتی منصوبے کو تین مراحل میں تقسیم کیا گیا تھا ، پہلے میں مرکزی فٹ بال اسٹیڈیم ، ٹریک اور فیلڈ کی سہولیات شامل تھیں ، اس کے علاوہ چھ دیگر گراسی ٹریننگ پچ بھی شامل ہیں۔ پروجیکٹ کے دوسرے مرحلے میں 5ہزار شائقین کی گنجائش والا انڈور اسٹیڈیم تعمیر کیاگیا جو اولمپک کے اعلی ترین معیار کے مطابق انڈور سہولیات سے آراستہ ہے ، جبکہ تیسرے مرحلے میں سوئمنگ پول ، ثقافتی کمپلیکس ، سماجی کلب ، اور ایک بین الاقوامی ٹینس کورٹ کمپلیکس شامل تھے۔ دوسری خبروں میں بین الاقوامی کھلاڑی عمر عبدالرحمن کو جرمنی میں 20 کھلاڑیوں کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے جو چیمپئنز لیگ کے بہترین مڈ فیلڈرز میں سے ایک ہیں ، گول کیپر ، خالد عیسیٰ کو گزشتہ چار سال کے لئے چیمپئنز لیگ کے بہترین اسکواڈ کی فہرست میں نامزد کیا گیا ہے دفاعی کھلاڑیوں اسماعیل احمد اور احمد الياسي بھی بہترین ڈی فنڈرز میں شامل ہیں۔ ترجمہ۔تنویر ملک http://www.wam.ae/en/details/1395302843414

WAM/Urdu