پیر 28 ستمبر 2020 - 1:04:58 صبح

متحدہ عرب امارات میں مقیم ایتھلیٹس نے آن لائن گنیز ریکارڈ قائم کرلیا


ابوظبی، یکم جون2020 (وام)۔۔ ابوظبی میں مقیم چھ ایتھلیٹس کے ایک گروپ نے 24 گھنٹے میں سب سے زیادہ چیسٹ ٹوگراؤنڈ برپی (زمین پر سینہ لگا کر کھڑا ہونے) کا گنیز ورلڈ ریکارڈ قائم کیا ہے۔ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ٹیم کو مطلوبہ وقت میں کم سے کم 6,000 برپی کرنا تھیں تاہم ٹیم نے مختص وقت میں اس سے دگنا یعنی 12,502 برپیوں کا ریکارڈ قائم کردیا۔ ٹیم میں سیریل گنیز ورلڈ ریکارڈ بریکر، سپر فٹ ٹرینر اور تین بچوں کی ماں ایوا کلارک بھی شامل ہیں ۔ ٹیم کےدیگر ارکان میں انسانی حرکت کی سائنس کی محقق ایوان کیمپونوگارا، متحدہ عرب امارات میں قائم ایک یونیورسٹی میں فلاح و بہبود کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر ڈینیل گل، ایک طالب علم اور فٹنس کی دلدادہ ٹیریزا پیٹرویوکوفا، ایک کمپیوٹر انجینئرنگ برانڈن چن لوئے اور ایک ماہر نفسیات اینا ایردی شامل ہیں۔ ٹیم کے رکن ڈینیل گل نے کہا کہ ہمارے لئے وبائی مرض کا مطلب یہ نہیں ہے کہ وہ صوفے میں پڑے رہیں۔ انھوں نے کہا کہ ٹیم ارکان نے ایک دوسرے کو چیلنج کیا کہ جم سیشن بند ہونے کے باوجود وہ اپنی کوششوں کو دگنا کریں گے ۔ ایوا کلارک نے کہا کہ وہ ماضی میں 15 گینز ورلڈ ریکارڈ اپنے نام کرنے میں کامیاب ہوچکی ہیں۔ ان میں سے تین ریکارڈ ٹوٹ چکے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ دوسری خواتین کو بھی اس سلسلے میں آگے بڑھتے دیکھ کر انھیں خوشی ہوتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ انکی کوشش ہوتی ہے کہ خواتین کو ان کی صلاحیتوں کا بھرپور مظاہرہ کرنے کی ترغیب دی جائے۔ ایون کیپمونوگارا نے کہا کہ اگرچہ تربیت کا یہ وقت مختلف ہے تاہم ٹیم نے ان غیر معمولی حالات سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانے کی کوشش کی ۔ انھوں نے کہا کہ کوئی جسمانی چیلنج انھیں آگے بڑھنے سے نہیں روک سکتا اور وہ ہر پریشانی کا ڈٹ کر سامنا کرتی ہیں ۔ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کا کہنا ہے کہ وہ اب انفرادی اور برانڈ دونوں کے لئے آن لائن ریموٹ رجسٹریشن کا آغاز کر رہا ہے۔ یہ سہولت حالیہ وباء کے بعد شروع کی گئی ہے۔ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ مشرق وسطیٰ اور شمالی افریقہ آفس میں سینئر مارکیٹنگ منیجر شیڈی گاڈ کا کہنا ہے کہ ہم اس ٹیم کو لاک ڈاؤن کے دوران ان کے کارنامے پر مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ ٹیم نے ہماری نئی ریموٹ رجسٹریشن سروس کے ذریعے درخواست دی اور ہم نے انکا آن لائن مشاہدہ کیا اور انھیں آن لائن سرٹیفیکٹ پیش کی۔ انھوں نے کہا کہ ہمارا کام برانڈز اور افراد کو جہاں کہیں بھی ہیں انکی کامیابیوں کا جشن منانے کے لئے ان کی حوصلہ افزائی کرنا ہے۔ اس کوشش کا مقصد لوگوں کو گھر میں رہتے ہوئے فٹ رہنے اور لاک ڈاؤن کے باوجود بڑی کامیابیاں حاصل کرنے کی ترغیب دینا ہے۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://www.wam.ae/en/details/1395302845627

WAM/Urdu