ہفتہ 31 جولائی 2021 - 12:33:33 شام

عالمی وباء سے نمٹنے میں ورلڈ بنک کے 157 ارب ڈالرز ، اسکا تاریخی بڑا اقدام


واشنگٹن ، 20 جولائی ، 2021 (وام) ۔۔ ورلڈ بنک نے ترقی پذیر ممالک میں کووڈ 19 کی وجہ سے کروڑوں لوگوں کی زندگی اور معاش کے شدید متاثر ہونے کے جواب میں گزشتہ 15 ماہ میں ( یکم اپریل 2020 سے 30 جون 2021) تک 157 ارب ڈالرز سے زائد مختص کیئے جوکہ اس عالمی وباء سے نمٹنے کیلئے صحت ، معیشت اور سماجی شعبوں کیلئے تھے – بنک گروپ کی تاریخ میں ایسے کسی عرصہ کیلئے یہ سب سے بڑی بحرانی صورتحال تھی جس سے نمٹنے کی کوشش کی گئی اور جوکہ عالمی وباء سے پہلے والے حالات کے مقابلے میں پندرہ ماہ کے دوران مختص فنڈز کی یہ تعداد 60 فیصد زیادہ تھی ۔ اس میں مالی سال 2021 (یکم جون 2020 تا 30 جون 2021) کے عرصہ میں مختص فنڈز 110 ارب ڈالرز کے تھے ( ان میں موبلائزیشن ، شارٹ ٹرم فناسنگ ، ریسپیئنٹ ۔ ایگزیکیوٹڈ ٹرسٹ فنڈز کے 84 ارب ڈالرز علاوہ ہیں ) – موجودہ عالمی وباء کے آغاز کے ساتھ ہی بنک گروپ نے ان ممالک کو صحت کے ہنگامی حالات سے نمٹنے ، صحت نظام کو تقویت دینے ، غریب اور کمزور طبقات کے تحفظ ، کاروبار کی معاونت ، روزگار کی فراہمی اور سرسبز ، موثر باعمل اور مربوط بحالی کیلئے مدد و معاونت فراہم کی – گزشتہ سال کی عالمی وباء کی وجہ سے معاشی بدحالی کے بعد 2021 میں عالمی معیشت کے 6ء5 فیصد کی شرح سے ترقی پانے کی توقع ہے ، ابھی تک بحالی کا عمل غیر ہموار ہے اور دنیا کے کئی غریب ممالک بدستور بہت پیچھے ہیں ۔ دنیا کی جدید معیشتوں میں سے 90 فیصد کی جانب سے 2022 تک ، عالمی وباء سے پہلے والی فی کس آمدن کی سطح پر پہنچ جانے کی توقع ہے ۔ ترقی پذیر معیشتوں اور ابھرتی منڈیوں میں سے صرف ایک تہائی کی جانب سے ایسی ترقی واپس پالینے کی توقع ہے ۔ گزشتہ سال 2022 میں عالمی سطح پر شدید ترین غربت ، 20 سال کی بلند ترین سطح پر رہی ، اس سے تقریبا دس کروڑ افراد انتہائی غربت کی سطح پر پہنچنے پر مجبور گئے - ورلڈ بنک کے صدر ڈیوڈ میلپاس کا کہنا ہے کہ ان کے بنک نے اس عالمی وباء کے آغاز سے نئے مالیاتی وسائل کیلئے رکارڈ 157 ارب ڈالر مختص کیئے جوکہ ایسے غیر معمولی بحران سے نمٹنے کیلئے ایک غیر معمولی اقدام تھا ۔ ترقی پذیر ممالک کو اہم معاونت کی فراہمی کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا تاکہ ایک زیادہ وسیع البنیاد معاشی بحالی ممکن ہو ۔ بنک گروپ نے خود کو ترقی پذیر ممالک کیلئے ایک فوری ، تخلیقی اور موثر پلیٹ فارم کے ہونے کو ثابت کیا ، لیکن اب بھی بہت کچھ کرنا باقی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ترقی پذیر ممالک کیلئے ویکسین کی محدود دستیابی قابل تشویش ہے جوکہ زندگی اور طرز زندگی کو بچانے کیلئے بہت اہم ہے – ترجمہ ۔ تنویر ملک – http://wam.ae/en/details/1395302954299

WAM/Urdu