جمعرات 27 جنوری 2022 - 10:27:52 شام

ابوظبی میں 26 ویں عالمی جیوجِتسو چیمپئن شپ کے مقابلے جاری

  • احتدام المنافسات في النسخة 26 من بطولة العالم للجوجيتسو في أبوظبي
  • احتدام المنافسات في النسخة 26 من بطولة العالم للجوجيتسو في أبوظبي
  • احتدام المنافسات في النسخة 26 من بطولة العالم للجوجيتسو في أبوظبي
  • احتدام المنافسات في النسخة 26 من بطولة العالم للجوجيتسو في أبوظبي

ابوظبی، 4 نومبر، 2021 (وام) ۔۔ ابوظبی میں 26 ویں عالمی جیوجِتسو چیمپئن شپ کے مقابلے دوسرےبھی دن زاید سپورٹس سٹی ابوظبی کے جیوجِتسو ایرینا میں جاری رہے۔ یہ مقابلے ابوظبی ایگزیکٹو کونسل کے رکن اور ابوظبی ایگزیکٹو آفس کے چیئرمین شیخ خالد بن محمد بن زاید آل نھیان کی سرپرستی میں منعقد ہوئے جن میں 2,000کھلاڑی شرکت کر رہے ہیں ۔ چیمپئن شپ کے دوسرے دن جیو جِتسو انٹرنیشنل فیڈریشن (JJIF) کے صدر پیناگیوٹِس تھیوڈوروپولوس، یو اے ای جیو جِتسو فیڈریشن (UAEJJF) کے نائب صدر محمد سالم الظاہر، جرمن جیو جِتسو کے صدر مائیکل کارن ،جیوجِتسو ایشین یونین کے نائب صدر سریش گوپی، اور قومی اور علاقائی فیڈریشنوں کے کئی عہدیداروں کے ساتھ ساتھ یو اے ای اور ایشین فیڈریشنز کے سیکرٹری جنرل فہد الشمسی اور جے جے آئی ایف کے ڈائریکٹر جنرل جوآخم تھمبرٹ نے شرکت کی۔ UAEJJF کے صدر عبدالمنعم الہاشمی نے جیو جِتسو انٹرنیشنل فیڈریشن کے صدر پیناگیوٹِس تھیوڈوروپولوس کے ساتھ ملاقات کی جس میں قومی اور علاقائی فیڈریشنز کے عہدیداروں نے شرکت کی۔ملاقات کے دوران، عبدالمنعم الہاشمی اور اجلاس کے شرکاء کی جانب سے JJIF کی صدارت کے لیے تھیوڈوروپولوس کے دوبارہ انتخاب کے لیے اپنی حمایت کا اعلان کیا۔ بین الاقوامی فیڈریشن جیو جِتسو کااجلاس آج صبح ابوظبی میں اپنے صدر کے انتخاب اور کھیل کے مستقبل سے متعلق کئی موضوعات پر بحث کے لیے منعقد ہوگا۔اس میں جے جے آئی ایف کی جنرل اسمبلی کو 2022 اور 2023 کے لیے کھیلوں اور ایونٹس کیلنڈرز تیار کرنے کے لیے علاقائی فیڈریشنزکے منصوبوں کے علاوہ 2018 سے 2021 تک ہونے والی چیمپئن شپ کے ایجنڈے کے بارے میں آگاہ کیا جائے گا۔ اجلاس سے قومی اور علاقائی فیڈریشنزکی درخواست پر اور بڑے ٹورنامنٹس کے انعقاد کے لیے دارالحکومت کی نمایاں صلاحیتوں کی روشنی میں 2022 میں ابوظبی کی 27ویں عالمی چیمپئن شپ کی میزبانی کی منظوری بھی متوقع ہے۔ اس موقع پر جرمن جیو جِتسو کے صدر مائیکل کارن نےکھیل کو مقامی اور بین الاقوامی سطح پر ترقی دینے میں UAEJJF کے کردار کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ متحدہ عرب امارات کھیل کو فروغ دینے کےساتھ ساتھ اس کی ترقی کے لیے جامع حکمت عملی تیار کرنے کے معاملے میں JJIF اور علاقائی فیڈریشنزکا سنگ بنیاد ہے۔انھوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں کسی بھی ملک کے لیے اس طرح کی عالمی چیمپئن شپ کی میزبانی کرنا آسان نہیں ہے۔ ہم چیمپئن شپ کی میزبانی میں ابوظبی کےکردار اور اس حوالے سے وفود کو فراہم کردہ تعاون کو سراہتے ہیں۔ جیوجِتسو ایشین یونین کے نائب صدر سریش گوپی نے کہا کہ ابوظبی کا دوبارہ دورہ کرنے پر ہمیں فخر ہے اور ہم UAEJJF اور JJIF میں ایونٹ کے منتظمین کے 6,000 سے زیادہ کھلاڑیوں کی شرکت کے ساتھ اس بڑے ایونٹ کے انعقاد کے لیے بہت شکر گزار ہیں۔ جوآخم تھمبرٹ نے کہاکہ 55 ماہر ریفری چیمپئن شپ چلائیں گےاور ہاک آئی کو مشکل کالوں کو حل کرنے کے لیے استعمال کیا جائے گا۔ انھوں نے کہا کہ مقابلے بہت مضبوط نوٹ پر شروع ہوئے ہیں ۔ آسٹریا، جرمنی، تھائی لینڈ اور مونٹی نیگرو کے درمیان ابتدائی راؤنڈ میں زبردست مقابلہ ہے۔ جہاں تک نِوازا کیٹیگری کا تعلق ہے ہمیں امید ہے کہ متحدہ عرب امارات کی ٹیم ایک مشکل حریف ہے کیونکہ یہ پچھلے ایڈیشن سے ٹائٹل کا حامل ہے اور اس نے ٹورنامنٹ کے لیے اچھی تیاری کی ہے۔ ترجمہ ریاض خان https://www.wam.ae/en/details/1395302989146

WAM/Urdu