جمعرات 27 جنوری 2022 - 10:30:00 شام

ابو ظبی ورلڈپروفیشنل چیمپئن کے آخری دن برازیل گیارہ گولڈ میڈلز کیساتھ سرفہرست


ابوظبی، 19 نومبر، 2021 (وام) ۔۔ ابو ظبی ورلڈ پروفیشنل چیمپئن شپ، ADWPJCCہفتے بھر جاری رہنے کے بعد جمعہ کواختتام پذیر ہوگئی اور آخری دن برازیل گیارہ گولڈ میڈلز کے سرفہرست رہا۔ پروفیشنل براؤن/بلیک بیلٹ مردوں اور خواتین کے ڈویژن کا فائنل ڈے jiu-jitsu کا بڑا دن تھا جس میں 12 میچز کھیلے گئے۔ اس دن ک مقابلوں میں 9 ممالک انگولا، ارجنٹائن، آسٹریلیا، برازیل، جارجیا، اٹلی، نیدرلینڈز، ناروے اور پولینڈ کے 24 کھلاڑی شامل تھے۔ چار براعظموں پر پھیلے ہوئے ممالک کا جغرافیائی پھیلاؤ اس بات کی علامت ہے کہ ابوظبی کے ولی عہد اور متحدہ عرب امارات کی مسلح افواج کے ڈپٹی سپریم کمانڈر عزت مآب شیخ محمد بن زاید آل نھیان کی سرپرستی میں منعقد ہونے والا ADWPJCC دنیا بھر کے کھلاڑیوں کیلئےکتنا اہم ہے۔ اعلیٰ درجے کے ایتھلیٹس کی میزبانی کرتے ہوئے ہائی کیلیبر شیڈول نے 12 ورلڈ پرو ٹائٹلز کے فاتحین کو ایوارڈز دیئے جن میں سات مرد بلیک بیلٹ ویٹ ڈویژنز اور پانچ خواتین براؤن/بلیک بیلٹ ویٹ ڈویژنز شامل ہیں۔ ٹاپ کلاس ایکشن کے ایک دن کے اختتام پر برازیل 11 طلائی اور دو چاندی کے تمغوں کے ساتھ ملکی درجہ بندی میں سرفہرست ہے۔ ارجنٹائن ایک طلائی اور ایک چاندی کے ساتھ دوسرے جبکہ پولینڈ دو چاندی کے تمغوں کے ساتھ درجہ بندی میں تیسرے نمبر پر رہا۔ وزیر تعلیم حسین بن ابراہیم الحمادی نے نئے جیتنے والےجیو جِتسو ہیروز کو سونے، چاندی اور کانسی کے تمغے اور چیمپئن شپ بیلٹس سے نوازا۔ متحدہ عرب امارات جیو جِتسو فیڈریشن کے چیئرمین، جیو-جِتسو ایشین یونین کے صدر اور Jiu-Jitsu انٹرنیشنل فیڈریشن کے سینئر نائب صدر عبدالمنعم الہاشمی نے کہاکہ عالمی کیلنڈر کے سب سے بڑے اور ممتاز jiu-jitsu ایونٹ کے کامیاب 13ویں ایڈیشن کے بعد سات ماہ کے وقفے میں دوسرے ADWPJJC کاانعقاد ایک بہت بڑی کامیابی ہے۔ انہون نے کہا کہ میں عزت مآب شیخ محمد بن زاید آل نھیان کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرنا چاہوں گاجن کی فراخدلانہ سرپرستی اور غیر متزلزل حمایت کے باعث ہم دنیا بھرکے کھلاڑیوں کو مقابلہ کرنے کے لیے ایک پلیٹ فارم فراہم کرنے کے قابل بنے۔ انہوں نے کہا کہ اس سال کے ایڈیشن میں ہمیں دنیا بھر سے بہت سے ستاروں کی واپسی سے خوشی ہوئی جنہوں نے ٹورنامنٹ کے پچھلے ایڈیشنز میں اپنی شاندار شرکت کے دوران اپنے آپ کو ایک بڑا سٹاربنایا۔ انہوں نے کہا کہ جس چیز نے ہمیں سب سے زیادہ خوشی دی وہ یہ ہے کہ نئے ستاروں کی ایک بڑی تعداد کا ابھرنا جنہوں نے ابوظہبی میں ایک مضبوط پہلی نمائش ریکارڈ کی۔ہم چیمپئن شپ کے 14ویں ایڈیشن کے لیے اگلے سال جیو جِتسو ابوظہبی میں دوبارہ عالمی ستاروں کی واپسی کے منتظر ہیں۔ ترجمہ: ریاض خان ۔ http://wam.ae/en/details/1395302994708

WAM/Urdu