منگل 18 جنوری 2022 - 5:16:05 شام

ابوظبی نے سالانہ سیاحتی کاروبار کےلائسنس کیلئے1,000 درہم کی نئی حد متعارف کرادی


ابوظبی، 11 جنوری، 2022 (وام) ۔۔محکمہ ثقافت اور سیاحت ابوظبی (DCT ) نے امارت میں سیاحت کی صنعت کی ترقی میں مدد اور اس میں تیزی لانے کے لیے سیاحتی کاروبار کے لئے لائسنس کا ایک نیا اقدام شروع کیا ہے۔ جنوری سے مؤثر ایک نظرثانی شدہ فیس کا ڈھانچہ متعارف کرایا جا رہا ہے جس کی حد 1,000 درہم سالانہ ہے اور سیاحت کے کاروبار کے لائسنسوں پر لاگو ہے۔ یہ موجودہ لائسنس ہولڈرز کے لیے خوش آئند خبر ہوگی جو فی الحال کاروباری سرگرمیوں کی سطح کے لحاظ سے مختلف فیس کی رقم ادا کرتے ہیں اور گزشتہ 18 مہینوں کے دوران اس شعبے کو درپیش چیلنجوں کے پیش نظر یہ ایک اہم فروغ ہوگا۔ نیا کاروباری لائسنس ایک ترمیم شدہ مقررہ فیس کا ڈھانچہ پیش کرتا ہے جس میں ابو ظبی کے متعدد سرکاری اداروں بشمول ابوظبی محکمہ اقتصادی ترقی، محکمہ بلدیات اور ٹرانسپورٹ، ابو ظبی چیمبر کی رکنیت کی فیس اور سرٹیفکیٹ سمیت متعدد حکومتی اداروں کو ادا کی جانے والی فیسوں کے اخراجات شامل ہیں۔ یہ ابوظبی کی ریگولیشن فیس کا بھی احاطہ کرتا ہے جس میں کاروبار کی درخواست کی قسم کے لحاظ سے رقم کو ایڈجسٹ کیا جا سکتا ہے۔ مجموعی طور پر تبدیلیاں لائسنس فیس کی کل لاگت میں تقریباً 90 فیصد کمی لائیں گی۔ لائسنس فیس کی حد کا مقصد امارت میں موجودہ کاروباروں کو فائدہ پہنچانا اور نئے سرمایہ کاروں کی حوصلہ افزائی کرنا ہے تاکہ وہ اپنے متحرک تفریح، ثقافت اور سیاحت کے شعبوں کے ساتھ علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر ابو ظبی کی مسابقت کو ایک سرکردہ مقام کے طور پر آگے بڑھائیں۔ یہ اقدام متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت کو مزید ترقی دینے اور سیاحوں اور سیاحت کی سرمایہ کاری کے لیے ایک ترجیحی منزل کے طور پر اپنی پوزیشن کو مستحکم کرنے کے ابوظبی حکومت کے وسیع تر اسٹریٹجک منصوبوں کا حصہ ہے۔ ڈی سی ٹی ابوظبی میں لائسنسنگ اور ریگولیٹری کمپلائنس ڈائریکٹر حماد محمد سعید السدین نے کہاکہ لائسنسنگ فیس کا نیا ڈھانچہ سیاحت کے شعبے کے لیے ہماری غیر متزلزل حمایت کا ایک واضح مظاہرہ ہےاور اس سے ان لوگوں کو فائدہ پہنچے گا جو اپنے سیاحتی کاروبار کو کھولنے، جاری رکھنے یا بڑھانے کے خواہشمند ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تنظیم کی قسم یا سائز سے قطع نظر درخواست دہندگان پر اعتماد محسوس کر سکتے ہیں کہ ہم شراکت دار ہیں اور ان کی ترقی پر توجہ مرکوز کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ اقدام کاروباری ماحول کی مسابقت میں اضافہ کرے گا اور بڑھتی ہوئی سرمایہ کاری کو راغب کرے گا، عالمی سیاحت، ثقافتی اور تفریحی مقام کے طور پر ابوظبی کی پوزیشن کو مضبوط کرے گا۔ ترجمہ : ریاض خان ۔ https://wam.ae/en/details/1395303010011

WAM/Urdu