منگل 18 جنوری 2022 - 4:51:01 شام

فری زونز کی عالمی تنظیم ورلڈ FZOکا اجلاس جنیوا میں ہوا


جنیوا، 13 جنوری،2022 (وام)۔۔ ورلڈ فری زونز آرگنائزیشن (ورلڈ FZO)کے سالانہ بورڈ آف ڈائریکٹرز کا اجلاس اور "ملٹی لیٹرل لیٹرل آرگنائزیشن ٹور" کا انعقاد جنیوا سوئٹزرلینڈ میں ہوا۔ ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن (WTO)، اقوام متحدہ کی تجارت اور ترقی کی کانفرنس (UNCTAD)، انٹرنیشنل روڈ ٹرانسپورٹ یونین (IRU)، انٹرنیشنل آرگنائزیشن آف ایمپلائرز (IOE) اور انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن (ILO) کے نمائندوں نے اجلاس میں شرکت کی۔ بورڈ نے بین الاقوامی انضمام اور تعاون کے شعبوں پر تبادلہ خیال کیا تاکہ عالمی فری زونز کو ان کی معاشی طاقت کو بڑھانے، عالمی تجارت اور سپلائی چین میں ان کے اہم کردار کو اجاگر کرنے، چیلنجوں پر قابو پانے اور ان کی تجارتی اور مزدور منڈیوں میں ترقی اور خوشحالی کے مواقع پیدا کرنے کے قابل بنایا جا سکے۔ مزید یہ کہ ٹاسک فورس ورلڈ ایف زیڈ او کو تمام نئے اور موجودہ فری زونز میں اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے اہداف (SDGs) کو مربوط کرنے کے قابل بنائے گی اور اس کا دائرہ کار ان کمپنیوں تک بڑھا دے گی جو سرحدوں کے پار جانے والی گاڑیوں کے بیڑے کا انتظام کر رہی ہیں۔ چیئرمین ڈاکٹر محمد الزرونی نے کہاکہ دنیا بھر میں فری زونز عالمی تجارت کو تحریک دینے اور اسے بحال کرنے اور اس کے پائیدار سرمایہ کاری کے بہاؤ کو یقینی بنانے میں کلیدی کردار ادا کرتے ہیں۔ یہ روزگار کے مواقع فراہم کرکے قومی معیشتوں پر براہ راست اثر ڈالتے ہیں جہاں فری زون عالمی سطح پر 80 ملین سے زیادہ ملازمتیں فراہم کرتے ہیں۔ انہوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ انضمام اور تعاون ان مواقع کو دوگنا کر دے گا جس سے تمام فریقوں پر مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اپنی تنظیم کی طرف سے منظور شدہ اور اشتراک کردہ بہترین طریقوں پر عمل درآمد کرتے ہوئے اراکین کی طرف سے اعلیٰ ترین بین الاقوامی معیارات پر عمل کرتے ہوئے غیر قانونی تجارتی طریقوں کے درمیان سیکورٹی کو بڑھانے کی کوشش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ COVID-19 کی وجہ سے سرحدوں کے آر پار سامان کی نقل و حمل میں خلل پڑا۔ ڈبلیو ٹی او کی ایک رپورٹ میں وبائی امراض سے 2020 میں اشیا اور خدمات کی تجارتی قدر میں 10 سے 20 فیصد تک کمی واقع ہوئی ہے۔ اس نے تجارت اور اقتصادی ترقی کو تیز کرنے والے کے طور پر عالمی سطح پر تقریباً 4,000 فری زونز کی مطابقت کو مزید بڑھا دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کے ساتھ ڈبلیو ٹی او ٹاسک فورس سپلائی کی صلاحیت کو دوبارہ بنانے، تجارتی پابندیوں کا انتظام کرنے اور سپلائی چین میں ڈیجیٹلائزیشن کو فروغ دینے کی کوشش کرے گی۔ اس کے علاوہ یہ لاجسٹک میں سرمایہ کاری کی اہمیت کو اجاگر کرے گی اور اقتصادی بحالی میں شراکت کو مضبوط بنانے کے لیے تجارتی مالیات کو وسعت دے گی۔ انہوں نے کہا کہ عالمی ویلیو چین کو بڑھانے کی بھی ضرورت ہے جو کہ زراعت اور فوڈ پروسیسنگ، فارماسیوٹیکل، انفارمیشن اینڈ کمیونیکیشن ٹیکنالوجی اور صحت جیسے اہم شعبوں کو پورا کرتی ہے۔ ورلڈ ایف زیڈ او کا مقصد اقوام متحدہ کے SDGs کے مطابق اپنے پائیداری کے اہداف کو آگے بڑھانا ہے۔ UNCTAD کے ساتھ ٹاسک فورس انڈیکس کا فائدہ اٹھائے گی تاکہ آزاد علاقوں کو ماحول دوست اور پائیدار طریقوں کو اپنانے کی ترغیب دی جاسکے۔ اس کے علاوہ یہ ملازمین کے لیے پیداواری صلاحیت میں اضافہ، کارکردگی، اخلاقیات، حوصلے، صحت اور بہبود کو بہتر بنانے کے لیے ایک محفوظ اور محفوظ کام کے ماحول کو یقینی بنائے گا۔ یہ ڈیجیٹل زون سرٹیفیکیشن پروگرام کے ذریعے ملازمین کو تکنیکی معلومات اور ڈیجیٹل مہارتوں کے ساتھ قابل بنائے گا تاکہ ڈیجیٹل کاروباری کارروائیوں کو فروغ دیا جا سکے۔ ترجمہ:ر یاض خان ۔ https://wam.ae/en/details/1395303010754

WAM/Urdu